تازہ ترین

Marquee xml rss feed

GB News

عبوری صوبے کی مؤخر ی : گلگت بلتستان کے وکلاء نے عدالتوں کے بائیکاٹ کا اعلان کردیا

Share Button

گلگت (پ ر) عبوری صوبے کی منظوری کو وفاقی کابینہ کے اجلاس میں مزید مشاورت کیلئے مؤخر کرنے کے فیصلے کے خلاف گلگت بلتستان کے وکلاء نے عدالتوں کے بائیکاٹ کا اعلان کردیا ہے، گلگت بلتستان بار کونسل، ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن اور ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے مشترکہ اجلاس میں فیصلہ کیاگیا ہے کہ آج 11 دسمبر کو پورے گلگت بلتستان میں عدالتوں کا بائیکاٹ کیا جائے گا اور وکلاء عد التوں میں پیش نہیں ہونگے، وکلاء نے اعلان کیا ہے کہ آئینی ترمیم کے ذریعے عبوری آئینی صوبہ بنانے تک سپریم کورٹ آف پاکستان کی بنائی گئی کمیٹی برائے جائزہ اصلاحات آرڈر 2018ء کے 13 دسمبر کو ہونے والے اجلاس میں وکلاء کا مؤقف پیش کرنے کیلئے گلگت بلتستان کے تمام متعلقہ فریق صوبائی حکومت، پاکستان تحریک انصاف، پاکستان پیپلز پارٹی ودیگر سے صلاح ومشورے کرنے کے بعد وکلاء اپنا مؤقف باقاعدہ تحریری شکل میں اصلاحاتی کمیٹی اور سپریم کورف آپ پاکستان میں پیش کریں گے۔ اس ضمن میں وکلاء سرتاج عزیز کی سفارشات کی روشنی میں عبوری آئینی صوبہ کیلئے پارلیمنٹ میں گلگت بلتستان کی نمائندگی کیلئے حکومت پاکستان کو ایک فوری فائم فریم دینے، گلگت بلتستان کو 18ویں ترمیم کے بعد ملنے والی دیگر صوبوں کی طرز کی صوبائی خود مختاری اور اس کے سیاسی، انتظامی، معاشی حقوق کے ساتھ ساتھ آزاد عدلیہ کے نظام کو پاکستان کے دیگر صوبوں کے برابر یقینی بنانے کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے اور اس ضمن میں گلگت بلتستان کونسل کی افسر شاہی کو گلگت بلتستان کے صوبائی اور علاقائی حقوق واختیارات میں مداخلت کی کسی صورت اجازت نہیں دی جائے گی۔ادھر گلگت بار کے عہدیداروں نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کے 22لاکھ عوام کو آرڈر پر چلانا بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ وفاقی حکومت نے عبوری آئینی صوبہ کے معاملے کو موخر کر کے کمیشن تشکیل دے دیا ہے جو جی بی کے محب وطن عوام اور جذبہ حب الوطنی کو مجروح کرنے کے مترادف ہے جس کی وجہ سے گلگت بلتستان کے عوام احساس محرومی کا شکار ہیں۔ گلگت بلتستان کے عوام کے جذبات کے ساتھ کھیلنا کسی کے بھی مفاد میں نہیں ہے عبوری صوبہ اور بنیادی حق ہر انسان کا بنیادی حق ہے جس کے تحفظ کیلئے وکلا برادری بھرپور کردارادا کریگی بغیرکسی رنگ و نسل اورمذہب کے گلگت بلتستان کے حقو ق کیلئے تحریک چلائی جائے گی۔

Facebook Comments
Share Button