تازہ ترین

Marquee xml rss feed

GB News

مسئلہ فلسطین اور ہماری ذمہ داریاں

Share Button

گزشتہ چند ماہ کے دوران ذرائع ابلاغ کے ذریعہ جو اطلاعات پہنچ رہی ہیں اس سے محسوس ہوتا ہے کہ عالمِ عرب کے بعض حکمراں اسرائیل کے ساتھ بہتر تعلقات بنانا چاہتے ہیں۔لیکن بعض عرب ممالک آج بھی فلسطینی عوام کا بھرپور ساتھ دے رہے ہیں اور ان پر کی جانے والے ظلم و بربریت کے خلاف آواز اٹھاتے ہیں اورفلسطینی عوام کو کسی نہ کسی طرح امداد فراہم کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ ان ہی ممالک میں ایک قطر بھی ہے۔ قطر کے امیر الشیخ تمیم بن حمد آل ثانی نے کہا ہے کہ ان کا ملک قضیہ فلسطین کی بے لوث حمایت اور غیر مشروط مدد جاری رکھے گا۔ انہوں نے صہیونی ریاست سے مطالبہ کیا کہ وہ مقبوضہ عرب علاقوں سے اپنا تسلط فوری طور پر ختم کرے اور آزاد فلسطینی مملکت کے قیام کی راہ میں رکاوٹیں ختم کرے۔الشیخ تمیم نے فلسطینیوں سے یکجہتی کے عالمی دن کی مناسبت سے دوحہ میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب میں کہا کہ فلسطینی قوم کے منصفانہ، دائمی اور دیرینہ حقوق کی فراہمی ہی قضیہ فلسطین کے حل کی بنیاد ہو سکتی ہے۔مذاکرات کے ذریعے اسرائیل کو فلسطینی علاقوں سے اپنا تسلط ختم کرنے پر مجبور کیا جائے اور دو ریاستی حل کے حوالے سے عالمی قراردادوں پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔اسرائیل مسلسل امن مساعی کو سبوتاژ کر رہا ہے۔ فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی ریاست کے انتقامی حربے، انسانی حقوق کی سنگین پامالیاں اور فلسطین میں مسلسل یہودی توسیع پسندی نہ صرف فلسطین کے تنازع کے حل میں رکاوٹ ہے بلکہ مشرق وسطی میں امن مساعی کو آگے بڑھانے کی راہ میں بھی بڑی رکاوٹ ہے۔

Facebook Comments
Share Button