تازہ ترین

Marquee xml rss feed

گوادر میں پاکستان کا سب سے بڑا اور جدید ترین ائیرپورٹ تعمیر کرنے کی تیاریاں مکمل وزیراعظم عمران خان 29 مارچ کو ساحلی شہر میں منصوبے کا سنگ بنیاد رکھیں گے، منصوبہ سی پیک ... مزید-بلاول بھٹو 26مارچ کو کراچی سے ٹرین مارچ کا آغاز کریں گے، خورشید شاہ اٹھارہویں ترمیم کی حفاظت کے لیے قانون کےدائرے میں رہ کر جو بھی کر سکتے ہیں کریں گے، بلاول بھٹو زرداری-460ارب جرمانہ ملک ریاض نے نہیں، عوام نے ادا کرنا ہے، محمود صادق ملک ریاض کوعدالت سے ڈیل میں اب بھی 700 ارب منافع ہوگا، بحریہ ٹاؤن پر دباؤ بڑھنے سے کام ٹھپ ہوا تو لوگوں نے ... مزید-مفتی تقی عثمانی پر حملہ کرنیوالے ملزمان بہت جلد قانون کی گرفت میں ہوں گے،آئی جی سندھ-آئی ایس پی آر اور پاک فضائیہ کی جانب سے یومِ پاکستان 2019 کی مناسبت سے آفیشل نغمے جاری کردیے پاکستان زندہ آباد کے عنوان سے جاری کیے گئے نغمے میں وطن کے محفافظوں کو ... مزید-فیس بک کا بغیر اجازت نامناسب تصاویر اپ لوڈ یا شیئر کرنے والے صارفین کو بلاک کے نئے اقدامات کا اعلان کسی کی نامناسب تصاویر اس کی اجازت کے بغیر شیئر کرنا نقصان دہ ہے، ہم ... مزید-وزیراعلیٰ سندھ کا مفتی تقی عثمانی پر قاتلانہ حملے میں شہید اہلکار کے نابینا بچوں کے علاج کرانے اور مفت تعلیم کا اعلان-یوم پاکستان : گورنر اور وزیراعلیٰ سندھ نے مزار قائد پر حاضری دی،ملکی سلامتی کیلئے دعاکی-سعودی ولی عہد کی مہمان نواز کرنے والے ملازمین میں ایک کروڑ اعزازی تنخواہ دیئے جانے کا انکشاف-ملائیشیا پاکستان کی دفاعی صنعت سے بے حد متاثر، پاکستان کے اینٹی ٹینک میزائل خریدنے میں دلچسپی کا اظہار گزشتہ روز ملائیشیا کے وزیراعظم نے جے ایف 17 تھنڈر جنگی طیاروں کی ... مزید

GB News

پولیومہم : لیڈی ہیلتھ ورکرز کا بائیکاٹ، بیشتر بچے پولیو ویکسین سے رہ گئے

Share Button

گلگت(کامرس رپورٹر)گلگت میں پولیومہم کا لیڈی ہیلتھ ورکرز کے بائیکاٹ کے بعد شدید بدنظمی کاشکار محکمہ صحت گلگت نے نیشنل پروگرام ایمپلائز ایسوسی ایشن کے عہدیداروں کے خلاف تادیبی کارروائی کیلئے سرجوڑلئے۔تفصیلات کے مطابق قومی پولیو مہم 10دسمبر سے تین دن جاری مہم میں لیڈی ہیلتھ ورکرز نے اپنے مطالبات کو تسلیم نہ کرنے کے بعد تین روزہ مہم کا بائیکاٹ کا اعلان پر عملدرآمد کے بعد بیشتر بچے پولیو ویکسین سے رہ گئے ۔چونکہ محکمہ صحت نے ویلنٹیر ز اورملازمین کے ذریعے کرنے کا اعلان کیا ہوا تھا لیکن مہم میں حصہ لینے والے افراد کے پاس مطلوبہ ڈیٹا نہ ہونے کے باعث ویکسین سے رہ گئے ہیں جبکہ بعض علاقوں میں خواتین نے لیڈی ہیلتھ ورکرز کے علاوہ اپنے بچوں کو ویکسین نہ کرانے کی اطلاعات بھی ہیں جبکہ بچیوںکے سکولوںمیں میل سٹاف کو یہ کہہ کر واپس بھیج دیا کہ بچیوں کے سکولوں میں خواتین عملہ تعینات کیا جائے۔جبکہ محکمہ صحت نے لیڈی ہیلتھ ورکز اورنیشنل پروگرام کے دیگر ملازمین کے خلاف ایکشن لینے اور ان کے خلاف کارروائی کی دھمکی بھی دی ہے۔ملازمین کی تنظیم کے عہدیدداروں کے خلاف سخت ایکشن لینے کا اعلان کررکھا ہے چونکہ محکمہ صحت نے نیشنل پروگرام کے ملازمین کے مطالبات تسلیم کرنے کے بجائے ان کے خلاف کارروائی عمل میں لانے کی صورت میں پولیومہم شدیدمشکلات کا شکارہوگا۔

Facebook Comments
Share Button