تازہ ترین

Marquee xml rss feed

GB News

ملک میں سرمایہ کاری کی راہ میں حائل رکاوٹیں دور کی جائیں وزیراعظم

Share Button

اسلام آباد(آئی این پی )وزیراعظم عمران خان نے کراچی میں کاروباری ماحول کو مزید سازگار بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ کراچی معاشی حب ہے ،کاروباری ماحول بہتر بنانے کی ضرورت ہے ،وزیراعظم نے سرمایہ کاری اجلاس مستقل بنیادوں پر منعقد کرانے کا فیصلہ کیا جس میں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ اور صوبائی سیکرٹریز شریک ہوں گے،وفاق اور صوبوں میں سرمایہ کاری کیلئے دفاتر قائم کیے جائیں گے ، ملک میں سرمایہ کاری کی راہ میں حائل رکاوٹیں دور کی جائیں گی۔بدھ کو وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا ۔اجلاس میں وزیر خزانہ اسد عمر ، مشیر تجارت عبدالرازاق دائود،چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ ہارون شریف اوراقتصادی ماہرین نے شرکت کی ۔اجلاس میں وزیراعظم کو ملک میں کاروبار اور سرمایہ کاری کیلئے سہولیات پر بریفنگ دی گئی ۔بریفنگ میں بتایا گیا کہ چین کے ساتھ صنعتی شعبے میں تعاون کیلئے معاہدہ طے پا گیا ہے ، سعودی عرب سے بھی سرمایہ کاری کیلئے معاہدہ اسی ماہ ہوگا ،متحدہ عرب امارات کیساتھ سرمایہ کاری معاہدہ آئندہ ماہ کیا جائے گا ، سرمایہ کاروں کیلئے ٹیکسز کی تعداد کو 47سے کم کر کے 21کردیا گیا ہے۔صوبوں میں سوشل سیکیورٹی کی ادائیگی کا نیا طریقہ کار لانے کی منظوری دی گئی ہے ،سندھ ،پنجاب میں سوشل سیکیورٹی کی ادائیگی ای پے منٹ سسٹم سے ہوگی ،نئے نظام کے تحت ویلیوایڈڈ ٹیکس کاری فنڈ کم وقت میں حاصل ہوسکے گا ، ویلیوایڈڈٹیکس کے ریفنڈ کیلئے نیا نظام 31مارچ تک متعارف کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔پنجاب میں ایس ای سی پی سے صوبائی پورٹلز ،ای او بی آئی کو ضم کیا گیا ہے ۔اجلاس میں بتایا گیا کہ سندھ میں بھی جلد ایسا پورٹل لانچ کیا جا رہا ہے ،پورٹلز کے اجراء سے نئے کاروبار کے آغاز میں آسانی ہوگی ،برآمدات ، درآمدات کی کلیئرنس کی مدت کو کم کیا جا رہا ہے ۔اجلاس میں وزیراعظم نے کراچی میں کاروباری ماحول کو مزید سازگار بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ کراچی معاشی حب ہے ،کاروباری ماحول بہتر بنانے کی ضرورت ہے ۔وزیراعظم نے سرمایہ کاری اجلاس مستقل بنیادوں پر منعقد کرانے کا فیصلہ کیا جس میں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ اور صوبائی سیکرٹریز شریک ہوں گے ۔اجلاس میں وفاق اور صوبوں میں سرمایہ کاری کیلئے دفاتر قائم کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ۔ وزیراعظم نے کہا کہ ملک میں سرمایہ کاری کی راہ میں حائل رکاوٹیں دور کی جائیں ۔

اسلام آباد(آئی این پی ) وزیرِ اعظم عمران خان نے وزیرِ قانون کو تصدیق شدہ املاک کو بروئے کار لانے کے حوالے سے قانونی پہلوئوں کا جائزہ لینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاہے کہ بڑے شہروں میں قائم غیر قانونی کچی آبادیوں اور قبضہ شدہ سرکاری اراضی کو خالی کراتے ہوئے اس بات کو یقینی بنایا جائے گا کہ غریب لوگوں کو متبادل اور معیاری رہائشگاہیں فراہم کی جائیں، کمیٹی اب نشاندہی کی جانے والی پراپرٹیز کی مالیت کا تخمینہ لگائے سرکاری املاک کی نشاندہی کے عمل کو تیز کرے ، تعاون نہ کرنے والے محکموں اور افسران کی بھی نشاندہی کی جائے۔ بدھ کو وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت سرکاری زمینوں اور جائیدادوں کو مناسب طور پر بروئے کار لانے کے حوالے سے وزیرِ اعظم آفس میں اجلاس ہو اجس میں وزیرِ دفاع پرویز خٹک، وزیرِ اطلاعات چوہدری فواد حسین، وزیر قانون ڈاکٹر فروغ نسیم، سیکرٹری ہائوسنگ ڈاکٹر عمران زیب خان و دیگر افسران نے شرکت کی ۔اس دورا ن سرکاری املاک کی نشاندہی اور ان کے مستقبل کے استعمال کے حوالے سے قائم کی گئی کمیٹی کی اب تک کی پیش رفت سے وزیرِ اعظم کو آگاہ کیا گیا۔ بریفنگ میں بتایا گیا کہ اب تک وفاقی حکومت کی 1412پراپرٹیز کی نشاندہی کی جا چکی ہے۔جس میں سے 112املاک کی تصدیق کی جا چکی ہے جسکا رقبہ 44350کنال اور مالیت اربوں روپے ہے ، پنجاب میں اب تک 44350کنال پر مشتمل 43پراپرٹیز جبکہ خیبر پختونخواہ میں 91املاک کی نشاندہی کی جا چکی ہے۔ اجلاس میں تصدیق شدہ املاک کے مستقبل کے استعمال کے حوالے سے مختلف آپشن پر غورکیاگیا ۔

Facebook Comments
Share Button