تازہ ترین

Marquee xml rss feed

پی ٹی اے نے پرانے موبائلوں کی خرید و فروخت پر ٹیکس لگا دیا پاکستان ٹیلی کمیونیشن اتھارٹی نے تاجروں کو پابند کیا ہے کہ پرانے موبائل بیچنے سے پہلے انہیں اس پر ٹیکس ادا کرنا ... مزید-آئی جی سندھ نے شہری کے پولیس کیساتھ نامناسب رویے کا نوٹس لے لیا-نواز شریف کی ضمانت پر اظہار تشکر کی قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کروا دی گئی-عدالتی حکم پر من و عن عمل درآمد کیا جائے گا، ڈاکٹر شہباز گل مریم نواز کی درخواست پر کارڈیالوجی سینٹر جیل کے اندر بنایا گیا تھا ۔ کارڈیالوجی سینٹر میں 21 ڈاکٹرزاور 21 ٹیکنیشن ... مزید-نواز شریف کو ان کی ضمانت پر رہائی کے عدالتی حکم کی اطلاع جیل میں دی گئی-شکر ہے عدالت نے نواز شریف کو باہر جانے کی اجازت نہیں دی، وزیر اعظم لندن میں سیل لگی ہوئی تھی اور نواز شریف وہاں شاپنگ کرنے کے لیے مچل رہے تھے، عمران خان-تاریخی شاہی قلعہ میں واقعہ شیش محل کی سیاحت کے لئے سیاحوں پر 100 روپے مالیت کا ٹکٹ لاگو کر دیا گیا-لاہورہائی کورٹ نے اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دے دیا-اللہ تعالیٰ کا شکر ہے نواز شریف کو رہائی ملی ،عدالتی فیصلے کو سراہتے ہیں،شہباز شریف-وفاقی جامعہ اردو کراچی میں طلباء گروپوں کے مابین تصادم، کھڑکیاں ،دروازے توڑ دیے گئے انتظامیہ جھگڑا رکوانے میں ناکام ، پولیس اور رینجرز طلب کر لی گئی

GB News

مسئلہ ٹیکس کا نہیں آئینی حقوق کا ہے

Share Button

قانون ساز اسمبلی کے سپیکر حاجی فدا محمد ناشاد نے کہاہے کہ آئینی صوبہ ملے گا تو یقینی طورپر گلگت بلتستان کے عوام پر ٹیکس بھی لگے گا اور ہمیں اپنا بجٹ خود تیار کرنا پڑے گا آئینی صوبے کادرجہ ملنے سے شناخت ضرور ملے گی مگر عوام پر بوجھ بھی پڑے گا اس لئے عوام کو سوچنا پڑے گا جب پچھلے دنوں آئینی صوبے کی بات چلی تو ایک طبقے نے کہاکہ آئینی صوبہ کی بنیاد پرٹیکس لگانے کی کوشش کی گئی تو سخت رد عمل آئے گا جب آئینی صوبے کے معاملے پر ہم ہی ایک پیچ پر نہیں ہوں گے توصوبے کا مسئلہ کیسے حل ہوگا ؟ وزیر اعلیٰ بھی چاہتے ہیں کہ عبوری آئینی صوبہ دیا جائے سرتاج عزیز کمیٹی کی سفارشات سے ہٹ کر کوئی چیز قبول نہیں عبوری آئینی صوبے کے قیام میں حکومت سنجیدہ ہے تو آئین میں ترمیم کیلئے اسمبلی میں بل لائے تو پتہ چل جائیگا کہ کون سی جماعت مخالفت کونسی حمایت کرتی ہے۔یہ حقیقت محتاج بیان نہیں ہے کہ مسئلہ ٹیکسوں کا نہیں آئینی حقوق کا ہے لوگ جانتے ہیں کہ انہیں ٹیکس دینا ہو گا کیونکہ پھر حکومت کو بھی اپنے معاملات کے لیے ٹیکس لگانا پڑیں گے ممکن ہے کہ سبسڈی کا بھی خاتمہ ہو جائے تاہم عوام برسوں سے اپنی شناخت چاہتے ہیں اور صورتحال کا مکمل ادراک رکھتے ہیں ۔ٹیکس نہ دینے کے ضمن میں جن طبقات کی ردعمل سامنے آیا ہے انہیں بھی ٹیکس دینا ہو گا۔اس لیے بات ٹیکسوں کی نہیں عوام یہ ٹیکس دیں گے وہ صرف اور صرف اپنے آئینی حقوق چاہتے ہیں۔یہ درست ہے کہ صوبے کیلئے تمام سٹیک ہولڈرز کو ایک پیج پر آنا پڑے گا ان کے باہمی اختلافات حقوق کی راہ میں مزاحم ہو سکتے ہیں اس لیے انہیں چاہیے کہ وہ اپنے اختلافات کو حقوق کی راہ میں آڑے نہ آنے دیں۔ہم پہلے ہی کہہ چکے ہیں صوبے کے حوالے سے اسمبلی میں بل لایا جائے تو سیاسی جماعتوں کی حمایت و مخالفت کے سلسلے میں دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔یہ بھی پتہ چل جائے گا کہ کونسی جماعت محض زبانی دعوے کرتی رہی ہے۔

Facebook Comments
Share Button