تازہ ترین

Marquee xml rss feed

GB News

نگر کے مسائل دو ماہ میں حل نہ ہوئے تو لانگ مارچ کریں گے، پیپلز پارٹی

Share Button

پیپلز پارٹی ضلع نگر کے رہنمائوں کے دھمکی دی ہے کہ دوماہ کے اندر ضلع نگر کے مسائل حل نہ ہوئے تو گلگت کی طرف لانگ مارچ کریں گے ۔ ممبرصوبائی اسمبلی جاوید حسین ،صدر پیپلزپارٹی ضلع نگر حاجت علی ،غلام حسین جمو،جنرل سیکریٹری ذاکر ،ویگر نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ گلگت بلتستان حکومت نے ضلع نگر کو ترقیاتی منصوبوں میں مکمل نظرانداز کیا ہے سی پیک کے تحت کوئی بھی میگا منصوبہ نگر کو نہیں دیا گیا ہے جبکہ آٹھ سالوں سے عوامی ڈیمانڈ کے باوجود ایفاد پراجیکٹ میں بھی نگر کو نظر انداز کرکے عوامی استحصال کیاجارہا ہے اور محکمہ تعلیم کے اندر ایک جعلی سروے کے زریعے تعلیمی میدان میں دیگر اضلاع سے پیچھے دھکیلنے کی سازش کی جارہی ہے ،ضلع نگرمیں فوری طور پر قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی کیمپس کا قیام عمل میں نہیں لاگیا تو حکومت کے خلاف سخت ردعمل دیں گے ، گلگت پریس کلب میں ایک پرہجوم پریس کانفر نس کرتے ہوئے پی پی پی ضلع نگر کے رہنماوں نے کہا کہ18ارب روپے کا ایفاد پراجیکٹ تما م اضلاع کیلئے ہے لیکن اس میں وزیراعلیٰ کی مرضی کے مطابق کام ہورہا ہے،پراجیکٹ میں وزیراعلیٰ کے من پسند افراد بھرتی کیے گئے ہیںجبکہ منصوبے بھی من پسند علاقوں میں تقسیم کیے جارہے ہیںنگر میں ہزاروں ایکڑ اراضی بنجر پڑی ہے اس کے بائوجود نگر میں ایفاد کا کوئی منصوبہ شروع نہیں کیاجارہا۔ محکمہ تعلیم ،صحت ،اور محکمہ برقیات کے کئی منصوبے مکمل ہونے کے باوجود پی سی فور منظور نہیں کئے جارہے ہیں جس کی وجہ سے علاقے میں بے روزگاری بڑھتی جارہی ہے دوسری جانب ضلع نگر کی چھوٹی پوسٹوں پر بھی غیر متعلقہ افراد کو پرچی کے زیعے بھرتی کرکے سرکاری مکانات بھی الاٹ کئے گئے ہیں پی پی رہنماوں نے کہا کہ واٹر منیجمنٹ کا ادارہ وجود میں آیا ہے تب سے لیکر اب تک ضلع نگر میں کوئی رول نظر نہیں آرہا ہے نگر کے تمام واٹر چینل ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں عوام مسائل اور مشکلات سے پریشانی کا شکار ہیں اور ادارے تماشا دیکھ رہے ہیں پی پی رہنماوں کا کہنا ہے کہ ڈیزاسٹر منیجمنٹ کا ایک آفیسر ہنزہ اور نگر دونوں اضلاع کو لیڈ کررہاہے جبکہ ضلع میں ڈیزاسٹر منیجمنٹ کا کوئی سیٹ ہی موجود نہیں ہے ڈیزاسٹر علاقوں نگر کے عوام سخت مشکلات سے دوچار ہیں سٹرکیں بند ہونے سے عوام محصور ہیں اور برف باری کے باعث شدید سردی سے انسانی المیہ کا خطرہ ہے ادویات کی قلت اور ہسپتالوں میں سہولیات نہ ہونے سے عوام رل رہے ہیں پی پی رہنماوں نے کہا کہ ضلع نگر نوازئدہ ضلع ہونے سے محکمہ زراعت ،لائیوسٹاک ،فیشریز ،محکمہ سیاحت سمیت کسی بھی اہم ادارے کا کوئی سیٹ موجود نہیں ہے وزیراعلیٰ ضلع نگر کے ساتھ ستویلا سلوک کررہے ہیںنگر صرف ایک ڈی سی اور ایس پی موجود ہیں باقی کوئی بھی محکمہ کا نہ تو دفتر ہے اور نہ ہی سٹاف ہیں عوام مسائل سے دوچار ہیں اور وزیراعلیٰ سمیت متعلقہ محکموں کے ذمہ داران تماشا دیکھ رہے ہیں ضلع نگر کے ان مسائل کو دو ماہ میں حل نہیں کیاگیا تو نگر کے عوام اور پیپلزپارٹی صوبائی ہیڈ کواٹر گلگت کی طرف لانگ مارچ کریگی جس کی تمام تر ذمہ داری حکومت پر عائد ہوگی ،پی پی رہنماوں نے کہا کہ سی پیک روڈ نگر سے گزرہا ہے اور آج وہاں پر حالت یہ ہے کہ نگر میں ایک ہیوی مشینری موجود نہیں ہے مقامی رضا کار اپنی مدد آپ کے تحت سی پیک روڈ پرنمک ڈال کر سٹرک صاف کررہے ہیں برف باری سے سی پیک روڈ پر حادثات رونما ہورے ہیں کسی کوکوئی پروا ہیں نہیں ہے ضلع نگر کے مسائل پرعوام سخت پریشان ہیں اور دوماہ میں مسائل حل نہیں ہوئے تو گلگت کی طرف لانگ مارچ اور احتجاج کریں گے ۔

Facebook Comments
Share Button