تازہ ترین

Marquee xml rss feed

GB News

عوام ٹیکس دینے سے نہیں گھبراتے، پہلے آئینی حقوق دیں، جعفر شاہ

Share Button

پاکستان تحریک انصاف گلگت بلتستان کے سینئر رہنما جسٹس (ر) سید جعفر شاہ نے کہا ہے کہ مکمل آئینی صوبہ دیا گیا ملک کے دیگر صوبوں کے برابر حقوق دیئے گئے تو ٹیکس دینے میں بخل سے کام نہیں لیں گے۔ حقوق دیئے گئے تو گلگت بلتستان کے عوام اپنے فرائض بھی خوب انجام دیں گے ہم ٹیکس سے ہرگز نہیں گھبرائیں گے ، ہمارا شروع سے یہی مطالبہ رہا ہے کہ حقوق دو ٹیکس لو ، مزید کسی قسم کے آرڈر کا خطہ متحمل نہیں ہو سکتا۔ گلگت بلتستان کے عوام آرڈرز اور پیکجز سے تنگ آ گئے ہیں مزید تجربے نہ کیے جائیں۔ کے پی این سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہمارے ساتھ مختلف حکومتوں نے بڑے مذاق کئے اب مزید کسی قسم کے مذاق کو برداشت نہیں کریں گے ، تجربات کا دور ختم ہو گیا اب ہمیں آئینی حقوق دینا ہوں گے آئینی صوبہ دینے میں کوئی آئینی اور قانونی رکاوٹ نہیں ہے ، 72سال سے ہمارے علاقے کو جان بوجھ کر پسماندہ رکھا گیا ہے بتایا جائے کہ آئینی صوبہ دینے میں کیا رکاوٹ ہے۔ آئین میں صوبے دینے کی پوری گنجائش موجود ہے کمیٹیوں کی سفارشات وقت ٹالنے کے سوا کچھ نہیں ہیں کمیٹیاں بنانا وقت کا ضیاع ہے حکمران گلگت بلتستان کو پاکستان کا حصہ سمجھتے ہیں تو اس کو فوری طور پر آئینی صوبہ دیں ، اگر متنازعہ سمجھتے ہیں تو اس کی متنازعہ حیثیت کو تسلیم کریں، ہمارا شروع سے مطالبہ رہا ہے کہ گلگت بلتستان کو مکمل آئینی صوبہ دیا جائے صوبے سے کم کوئی سیٹ اپ قابل قبول نہیں ہو گا سرتاج عزیز کمیٹی کی سفارشات نہیں پڑھیں نہیں پتہ کہ سفارشات میں کیا ہے؟ ہم سمجھتے ہیں کہ آئینی معاملے پر کمیٹی پر کمیٹی بنانا ہی غلط ہے ، جب گلگت بلتستان پاکستان کا حصہ ہے تو اس کو بلاتاخیر آئینی حقوق دیئے جانے چاہئیں، آئینی صوبے کا درجہ دینے میں جتنی تاخیر ہو گی نقصان وطن عزیز کو پہنچے گا، انہوں نے کہا کہ جس وقت ہماری عمران خان سے ملاقات ہوئی تھی وہ گلگت بلتستان کے آئینی معاملے پر بہت سنجیدہ تھے یہ بات قیاس ہے کہ وفاقی کابینہ میں آئینی صوبے کی سمری وزیراعظم اور شیخ رشید کی مخالفت پر مسترد ہو گئی آئینی معاملے پر سیاسی پوائنٹ سکورنگ نہیں سنجیدہ کوششیں ہونی چاہئیں۔

Facebook Comments
Share Button