تازہ ترین

Marquee xml rss feed

شیریں مزاری نے ایران میں سیاہ برقع کیوں پہنا؟ ایران میں خواتین کا سر کو ڈھانپ کر رکھنا سرکاری طور پر لازمی ہے، اس قانون کا اطلاق زوار، سیاح مسافر خواتین، غیر ملکی وفود ... مزید-وفاقی وزیر برائے تعلیم کا پاکستان نیوی کیڈٹ کالج اورماڑہ اور پی این ایس درمان جاہ کا دورہ-پاکستانی لڑکیوں سے کئی ممالک میں جس فروشی کروائے جانے کا انکشاف لڑکیوں کو نوکری کا لالچ دیکر مشرق وسطیٰ لے جا کر ان سے جسم فروشی کرائی جاتی ہے، اہل خانہ کی جانب سے دوبارہ ... مزید-جدید بسیں اب پاکستان میں ہی تیار کی جائیں گی، معاہدہ طے پا گیا چینی کمپنی پاکستان میں لگژری بسوں اور ٹرکوں کا پلانٹ تعمیر کرے گی، 5 ہزار نوکریوں کے مواقع پیدا ہوں گے-وفاقی وزارتِ مذہبی امور نے ملک میں ایک ساتھ رمضان کے آغاز کے لیے صوبوں سے قانونی حمایت مانگ لی ملک بھر میں ایک ہی دن رمضان کے آغاز کے لیے وزارتِ مذہبی امور نے صوبائی اسمبلیوں ... مزید-جہانگیر ترین یا شاہ محمود قریشی، کس کے گروپ کا حصہ ہیں؟ وزیراعلی پنجاب نے بتا دیا میں صرف وزیراعظم عمران خان کی ٹیم کا حصہ ہوں، کسی گروپنگ سے کوئی تعلق نہیں: عثمان بزدار-اسلام آباد میں طوفانی بارش نے تباہی مچا دی جڑواں شہروں راولپنڈی، اسلام آباد میں جمعرات کی شب ہونے والی طوفانی بارش کے باعث درخت جڑوں سے اکھڑ گئے، متعدد گاڑیوں، میٹرو ... مزید-گورنر پنجاب چوہدری سرور کی جانب سے اراکین اسمبلی،وزراء اور راہنماؤں کے لیے دیے جانے والے اعشائیے میں جہانگیرترین کو مدعونہ کیا گیا 185میں سے صرف 125اراکین اسمبلی شریک ہوئے،پرویز ... مزید-بھارت کی جوہری ہتھیاروں میں جدیدیت اور اضافے سے خطے کا استحکام کو خطرات لاحق ہیں،ڈاکٹر شیریں مزاری جنوبی ایشیاء میں ہتھیاروں کی دوڑ سے بچنے کیلئے پاکستان کی جانب سے ... مزید-وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے ضلع کرم میں میڈیکل کالج کے قیام اور ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال کی اپ گریڈیشن کا اعلان کردیا ضلع کرم میں صحت اور تعلیم کے اداروں کو ترجیحی بنیادوں ... مزید

GB News

جوڈیشل ایکٹویزم کا مقصد لوگوں کو زندہ رہنے کا حق دینا تھا، ثاقب نثار

Share Button

سابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ مجھے اپنی ٹیم میں چار لوگوں پر فخر ہے، جنہوں نے صحت کے شعبے میں اصلاحات کیلئے میری مدد کی،میں کسی کو وضاحت دینے کیلئے نہیں آیا میں نے سارے کام نیک نیتی سے کیے ہیں جوڈیشیل ایکٹیویزم کا مقصد لوگوں کو زندہ رہنے کا حق دینا تھا، قائد اعظم کی پاکستان کے ساتھ محبت تھی کہ اپنی بیماری کو چھپایا ورنہ پاکستان شاید نہ بنتا۔ منگل کو لاہور میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میرا بھائی ڈاکٹرساجد نثار، عامر زمان، ڈاکٹر ایاز اور امجد میری شروع کی ٹیم میں شامل تھے اور بعد میں بتدریج میرا قافلہ بڑھتا گیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پنجاب ینگ ڈاکٹر ایسوسی ایشن کا میں احسان نہیں دے سکتا، انہوں نے ہر موقع پر میری مدد کی۔ثاقب نثار نے کہا کہ ہم نے محکمہ صحت میں پاکستان کے ہر خطے میں کام کیا اور آخری وقت تک میں نے کوشش کی کہ اس میں بہتری لائی جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر مسیحا ہیں اور ان کی وجہ سے ایک اسٹیٹ ویلفیئر اسٹیٹ ہوتی ہے۔ان کا کہنا تھا میں کسی کو وضاحت دینے کیلئے نہیں آیا میں نے سارے کام نیک نیتی سے کیے ہیں جوڈیشیل ایکٹیویزم کا مقصد لوگوں کو زندہ رہنے کا حق دینا تھا۔سابق چیف جسٹس نے بتایا کہ کوئٹہ کے سب سے بڑے اسپتال میں عملہ اور مشینری نہیں تھی اور جب میں وہاں گیا تو ایک ہزار سے زائد لوگ ہڑتال کر کے بیٹھے تھے میں نے ایک بار کہا تو انہوں نے ہڑتال ختم کردی یہ تھی محبت۔انہوں نے کہا اس ملک سے محبت کریں، محبت جنوں کی کیفیت پیدا کرتی ہے آپ کسی کام کیلئے جب جنون پیدا کر لیتے ہیں تو سسٹم ٹھیک ہو جاتے ہیں۔ثاقب نثار نے تقریب سے خطاب کے دوران کہا کہ قائد اعظم کی پاکستان کے ساتھ محبت تھی کہ اپنی بیماری کو چھپایا ورنہ پاکستان شاید نہ بنتا۔

Facebook Comments
Share Button