تازہ ترین

Marquee xml rss feed

شیریں مزاری نے ایران میں سیاہ برقع کیوں پہنا؟ ایران میں خواتین کا سر کو ڈھانپ کر رکھنا سرکاری طور پر لازمی ہے، اس قانون کا اطلاق زوار، سیاح مسافر خواتین، غیر ملکی وفود ... مزید-وفاقی وزیر برائے تعلیم کا پاکستان نیوی کیڈٹ کالج اورماڑہ اور پی این ایس درمان جاہ کا دورہ-پاکستانی لڑکیوں سے کئی ممالک میں جس فروشی کروائے جانے کا انکشاف لڑکیوں کو نوکری کا لالچ دیکر مشرق وسطیٰ لے جا کر ان سے جسم فروشی کرائی جاتی ہے، اہل خانہ کی جانب سے دوبارہ ... مزید-جدید بسیں اب پاکستان میں ہی تیار کی جائیں گی، معاہدہ طے پا گیا چینی کمپنی پاکستان میں لگژری بسوں اور ٹرکوں کا پلانٹ تعمیر کرے گی، 5 ہزار نوکریوں کے مواقع پیدا ہوں گے-وفاقی وزارتِ مذہبی امور نے ملک میں ایک ساتھ رمضان کے آغاز کے لیے صوبوں سے قانونی حمایت مانگ لی ملک بھر میں ایک ہی دن رمضان کے آغاز کے لیے وزارتِ مذہبی امور نے صوبائی اسمبلیوں ... مزید-جہانگیر ترین یا شاہ محمود قریشی، کس کے گروپ کا حصہ ہیں؟ وزیراعلی پنجاب نے بتا دیا میں صرف وزیراعظم عمران خان کی ٹیم کا حصہ ہوں، کسی گروپنگ سے کوئی تعلق نہیں: عثمان بزدار-اسلام آباد میں طوفانی بارش نے تباہی مچا دی جڑواں شہروں راولپنڈی، اسلام آباد میں جمعرات کی شب ہونے والی طوفانی بارش کے باعث درخت جڑوں سے اکھڑ گئے، متعدد گاڑیوں، میٹرو ... مزید-گورنر پنجاب چوہدری سرور کی جانب سے اراکین اسمبلی،وزراء اور راہنماؤں کے لیے دیے جانے والے اعشائیے میں جہانگیرترین کو مدعونہ کیا گیا 185میں سے صرف 125اراکین اسمبلی شریک ہوئے،پرویز ... مزید-بھارت کی جوہری ہتھیاروں میں جدیدیت اور اضافے سے خطے کا استحکام کو خطرات لاحق ہیں،ڈاکٹر شیریں مزاری جنوبی ایشیاء میں ہتھیاروں کی دوڑ سے بچنے کیلئے پاکستان کی جانب سے ... مزید-وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے ضلع کرم میں میڈیکل کالج کے قیام اور ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال کی اپ گریڈیشن کا اعلان کردیا ضلع کرم میں صحت اور تعلیم کے اداروں کو ترجیحی بنیادوں ... مزید

GB News

ہماری حکومت نیک نیتی کے ساتھ اصلاحات کا ایجنڈا لے کر آئی ہے،وزیر اعظم

Share Button

اسلام آباد(آئی این پی )وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ حکومت کا مشن ہے کہ بیورو کریسی کو سیاسی مداخلت سے بچایا جائے، سول سروس کو سیاسی مداخلت سے بچانے کے لیے سیاستدانوں کی ٹریننگ ضروری ہے، ہر تقرری صرف میرٹ کی بنیاد پر کی جائے، ہماری حکومت نیک نیتی کے ساتھ اصلاحات کا ایجنڈا لے کر آئی ہے، عوامی فلاح و بہود کی خاطر نظام میں بہتری کی خواہش ہے۔تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت سول سروس ریفارمز ٹاسک فورس کا اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ ہر تقرری صرف میرٹ کی بنیاد پر کی جائے۔اس موقع پر وزیر اعظم نے کہا کہ 60 اور 70 کی دہائی میں پاکستان کی سول سروس خطے کی بہترین تھی، خطے کے دیگر ممالک ہم سے سیکھنے آتے تھے۔ بدقسمتی سے سیاسی مداخلت سے سول سروس کا زوال شروع ہوا۔وزیر اعظم نے کہا کہ ہماری حکومت نیک نیتی کے ساتھ اصلاحات کا ایجنڈا لے کر آئی ہے، عوامی فلاح و بہود کی خاطر نظام میں بہتری کی خواہش ہے۔ احتساب اور میرٹ ہی نظام میں بہتری لانے کے اصول ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت کا مشن ہے بیورو کریسی کو سیاسی مداخلت سے بچایا جائے، پختونخواہ میں انتظامی ڈھانچے میں تبدیلیوں سے گورننس بہتر ہوئی۔ سول سرونٹس کو بے جا تنگ کرنے سے کام رک جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پوسٹ پر مدت ملازمت کو تحفظ فراہم کیا جائے گا تاکہ ڈیلیوری میں تسلسل قائم رہے، سرکار کے زیر انتظام کمپنیوں اور اداروں کے بورڈز میں اچھی شہرت اور اہل افراد کو شامل کیا جارہا ہے تاکہ عوام کو بہتر سہولیات اور سروسز مہیا کی جاسکیں۔وزیر اعظم نے کہا کہ وسائل کے ضیاع کو روکنا ہوگا، اسپیشلائزیشن کا دور ہے، ہر شعبے میں ماہر افراد ہی کام کرسکتے ہیں۔ لوکل گورنمنٹ کا ایسا ماڈل لا رہے ہیں جس میں مقامی نمائندے عوامی فلاح و بہود میں بھرپور کردار ادا کریں گے۔انہوں نے کہا کہ سول سروس کو سیاسی مداخلت سے بچانے کے لیے سیاستدانوں کی ٹریننگ ضروری ہے۔ اصلاحات کے بعد بیورو کریٹ بلا خوف و خطر اپنی ذمہ داریاں انجام دے سکیں گے۔ دوسری طرف نجی ٹی وی کے مطابق وزیراعظم سیکرٹریٹ کے ذرائع نے بتایا ہے کہ پاناما لیکس میں شامل 250 سے زائد افراد ٹیکس ایمنسٹی لے چکے ہیں اور پاناما لیکس کی بیشتر کمپنیاں چین منتقل ہوچکی ہیں۔ ذرائع وزیراعظم سیکرٹریٹ کا کہنا ہے کہ پاناما لیکس میں شامل 175 افراد کو تلاش نہیں کیا جا سکا جب کہ 78 افراد کی معلومات نا مکمل تھیں جن کی تلاش کے لیے ایجنسیوں کی مدد لینے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے۔ادھرحکومت نے این آراوکی خبروں کومسترد کردیا اور کہا کہ پیپلزپارٹی،(ن)لیگ سے کوئی ڈیل نہیں ہورہی۔جمعہ کو نجی ٹی وی چینل کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت اجلاس ہوا ۔اجلاس میں فوادچودھری،افتخاردرانی،شیریں مزاری،فردوس عاشق اعوان ، عثمان ڈار،شبلی فراز،مرادسعیداورحماداظہر،شہزاداکبراورعامر کیانی نے شرکت کی ۔ اجلاس میں ملک کی سیاسی صورتحال اورحکومتی امورپرتبادلہ خیال اور عبدالعلیم خان کی گرفتاری کے بعدکی صورتحال پر غور کیا گیا۔وزیراعظم عمران خان نے این آراوکی خبروں کومسترد کردیا اور کہا کہ پیپلزپارٹی،(ن)لیگ سے کوئی ڈیل نہیں ہورہی۔اجلاس میں اپوزیشن کی جانب سے تنقیدکاجائزہ لیا گیا۔ وزیراعظم نے حکومتی موقف عوام تک بھرپوراندازمیں پیش کرنیکی ہدایت کردی۔

Facebook Comments
Share Button