تازہ ترین

Marquee xml rss feed

GB News

شیخ رشید کچھ بھی کہے اسمبلی امور پر ڈکٹیشن نہیں لوں گا، اسد قیصر

Share Button

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے ممبر پبلک اکائونٹس کمیٹی کے معاملے پر وفاقی وزیرریلوے شیخ رشیداحمد کو جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ شیخ رشید کی اپنی سیاسی جماعت اور ان کی اپنی مرضی ہے، وہ کچھ بھی کہیں لیکن میں قومی اسمبلی کے معاملات چلانے کے لیے کسی سے ڈکٹیشن نہیں لوں گا،وہ کچھ بھی کہیں لیکن میں اپنی پارٹی کے اصولوں کے مطابق چلوں گا، ان تمام معاملات پر وزیراعظم عمران خان سے بات کروں گا ،شیخ رشید کو کیا مسئلہ ہے نہیں جانتا، میں نے جو بھی کام کرنا ہے وہ اسمبلی رولز کے مطابق کرنا ہے۔ وہ ہفتہ کی شام شاہ منصور ٹائون شپ میں نئے ایک ارب 44کروڑ روپے کی لاگت سے نئے سنٹرل جیل صوابی کی تعمیر کے سنگ بنیاد کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب اور بعد ازاں صوابی الیکٹرانک میڈیا ایسو سی ایشن کے عہدیداروں سے گفتگو کررہے تھے۔سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے وفاقی وزیر شیخ رشید کی جانب سے پی اے سی میں شمولیت کے حوالے سے ان کو روکنے کے بیان کے بارے میں دو ٹوک الفاظ میں واضح کر دیا ہے کہ مجھے رولز کے مطابق کام کرنا ہے اور اس حوالے سے کسی سے ڈکٹیشن نہیں لونگا۔ وزیر اعظم عمران خان سے تمام معاملات ڈسکس کرونگا۔انہوں نے کہا کہ اس وقت پاکستان میں پی ٹی آئی کی حکومت ہے اور موجودہ حالات خاص کر معاشی حالات انتہائی خراب ہیں اور یہ سب کچھ قوم کو معلوم ہے ۔ پی آئی اے، سٹیل مل ، ایل این جی یعنی نام کے جو بھی محکمے ہیں تمام ادارے معاشی حالات کی وجہ سے بحران کا شکار ہیں اور یہ سب کچھ ماضی کی بیڈ گورننس کی وجہ سے ہے جس وجہ سے یہ ادارے خزانے اور ملک پر بوجھ بنے ہوئے ہیں پی آئی اے کے بیڑے میں 32عدد جہاز ہے اور18ہزار پی آئی اے میںملازمین کام کر رہے ہیں ہر جہاز سواریوں سے بھرا آتا اور جاتا ہے لیکن اس کے باوجود اس وقت پی آئی اے 450ارب روپے خسارے میں جارہا ہے اسی طرح واپڈا جو ایک منافع بخش ادارہ ہے لیکن وہ بھی 46ارب روپے کے خسارے میں ہے انہوں نے کہا کہ ڈسٹرکٹ جیل صوابی کا منصوبہ دو سال میں مکمل ہو جائیگا جس میں قیدیوں کے لئے ایک جدید ہسپتال کے علاوہ دیگر سہولیات بھی موجود ہونگی۔

Facebook Comments
Share Button