تازہ ترین

Marquee xml rss feed

شیریں مزاری نے ایران میں سیاہ برقع کیوں پہنا؟ ایران میں خواتین کا سر کو ڈھانپ کر رکھنا سرکاری طور پر لازمی ہے، اس قانون کا اطلاق زوار، سیاح مسافر خواتین، غیر ملکی وفود ... مزید-وفاقی وزیر برائے تعلیم کا پاکستان نیوی کیڈٹ کالج اورماڑہ اور پی این ایس درمان جاہ کا دورہ-پاکستانی لڑکیوں سے کئی ممالک میں جس فروشی کروائے جانے کا انکشاف لڑکیوں کو نوکری کا لالچ دیکر مشرق وسطیٰ لے جا کر ان سے جسم فروشی کرائی جاتی ہے، اہل خانہ کی جانب سے دوبارہ ... مزید-جدید بسیں اب پاکستان میں ہی تیار کی جائیں گی، معاہدہ طے پا گیا چینی کمپنی پاکستان میں لگژری بسوں اور ٹرکوں کا پلانٹ تعمیر کرے گی، 5 ہزار نوکریوں کے مواقع پیدا ہوں گے-وفاقی وزارتِ مذہبی امور نے ملک میں ایک ساتھ رمضان کے آغاز کے لیے صوبوں سے قانونی حمایت مانگ لی ملک بھر میں ایک ہی دن رمضان کے آغاز کے لیے وزارتِ مذہبی امور نے صوبائی اسمبلیوں ... مزید-جہانگیر ترین یا شاہ محمود قریشی، کس کے گروپ کا حصہ ہیں؟ وزیراعلی پنجاب نے بتا دیا میں صرف وزیراعظم عمران خان کی ٹیم کا حصہ ہوں، کسی گروپنگ سے کوئی تعلق نہیں: عثمان بزدار-اسلام آباد میں طوفانی بارش نے تباہی مچا دی جڑواں شہروں راولپنڈی، اسلام آباد میں جمعرات کی شب ہونے والی طوفانی بارش کے باعث درخت جڑوں سے اکھڑ گئے، متعدد گاڑیوں، میٹرو ... مزید-گورنر پنجاب چوہدری سرور کی جانب سے اراکین اسمبلی،وزراء اور راہنماؤں کے لیے دیے جانے والے اعشائیے میں جہانگیرترین کو مدعونہ کیا گیا 185میں سے صرف 125اراکین اسمبلی شریک ہوئے،پرویز ... مزید-بھارت کی جوہری ہتھیاروں میں جدیدیت اور اضافے سے خطے کا استحکام کو خطرات لاحق ہیں،ڈاکٹر شیریں مزاری جنوبی ایشیاء میں ہتھیاروں کی دوڑ سے بچنے کیلئے پاکستان کی جانب سے ... مزید-وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے ضلع کرم میں میڈیکل کالج کے قیام اور ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال کی اپ گریڈیشن کا اعلان کردیا ضلع کرم میں صحت اور تعلیم کے اداروں کو ترجیحی بنیادوں ... مزید

GB News

گلگت بلتستان سینئر اور جونیئر پولیس اہلکاروں میں مختلف قسم کی مایوسیاں

Share Button

ہنزہ ( ،خصوصی رپورٹ، اجلال حسین )گلگت بلتستان سینئر اور جونیئر پولیس اہلکاروں میں مختلف قسم کی مایوسیاں ۔ پولیس کا کام عوام کی جان ومال کی حفاظت کرنا ہے لیکن تب ممکن ہے جب حکومتی ذمہ داران محکمہ پولیس کے چھوٹے اور بڑے عہدوں پر کام کرنے والے اہلکاروں میں پائی جانے والی محرمیوں اورمایوس کا ازلہ کریں،دیکھا جائے تو گلگت بلتستان پولیس پاکستان کے دیگر صوبوں کے نسبتاً اپنے فرائض منصبی کی ادائیگی بہادری خو ش اخلاق ااور یمانداری میں اپنے مثال اپ ہیں ۔لیکن گلگت بلتستان حکومت کی طرف سے بدستور محکمہ پولیس گلگت بلتستان کو نظر انداز کر نے کی وجہ سے سخت مایوسی کا شکار ہیں ذرائع کے مطابق عرصہ دارز سے گلگت بلتستان پولیس میں 6 ایس پیز اور 15سے زائد ڈی ایس پیز کی خالی آسامیاں موجود ہیں تاہم گلگت بلتستان کے سینئر افسران کو ترقی دینے کے بجائے قائم مقام پوسٹییں دیکر مختلف اسٹیشنوں پر تعینات کر تے ہیں جس کی وجہ سے سینئر اور جو نیئر آفیسروں میں مایوسی پھیل رہی ہیں جبکہ افسران ترقیوں کے لئے سالوںسے منتظر ہیں۔ جبکہ دوسری جانب درجنوں سینئرانسپکٹرزکو کورسزکرانے کے باوجود ترقیاں نہ ہونے کی وجہ سے 60سالہ مدت ملازمت کو پورا کرتے ہوئے سبکدوش ہو رہے ہیں۔جبکہ اطلاعات کے مطابق پولیس ہلکاروں کے لئے گلگت بلتستان حکومت کو وفاقی حکومت نے ملازمین کو پچاس فیصد کی مد میں فنڈ بھی دیا ہے جبکہ صوبائی حکومت تاحال ملازمین کو پچاس فیصد ادا کرنے میں ناکام ہوئی ہیں جبکہ بعض ایسے اضلاع بھی ہیں جہاں پر25 فیصد اریلرز بھی ادا نہیں کیا گیا جبکہ پولیس سپاہیوں کا کہنا ہے کہ گلگت بلتستان کے دیگر سرکاری ادار وں میں چھوٹے ملازمین یعنی گریڈ ون وغیرہ کی آپ گریڈیشن ہو کر سکیل6تک دیا گیا ہے جو کہ 8 گھنٹے ڈیوٹی دیتے ہیں جبکہ پولیس فورس میں 24گھنٹے ڈیوٹی کرنے کے باوجود اہلکار سکیل 5میں کام کرنے پر مجبور ہیں اگر اسی طرح مسلسل گلگت بلتستان پولیس جوانوں کو مایوس کیا گیا تو کیسے پولیس اہلکار اپنی فرائض منصبی احسن طریقے سے سر انجام دئینگے ۔ گلگت بلتستان پولیس کے سینئر اور جونیئراہلکاروں نے گورنر اور وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کے علاوہ دیگر اعلیٰ حکومتی سربراہان سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ گلگت بلتستان پولیس میں عرصہ دراز سے پائے جانے والی مختلف مسائل اور مایوسی کا ازلہ کریں تاکہ گلگت بلتستان پولیس جوان مزید خلوص نیت ، ایمانداری کے ساتھ عوام کی جان ومال کی تحفظ میں مزید بہتری لانے کے ساتھ اہلکاروں کی حوصلہ افزائی بھی ہو گی۔

Facebook Comments
Share Button