تازہ ترین

Marquee xml rss feed

وزیراعلی پنجاب نے تقرر و تبادلوں پر پابندی لگا دی-حکومت کا شرعی قوانین کے تحت احتجاجی مظاہروں کیخلاف مسودہ تیار حکومت نے احتجاجی مظاہرے ’’شریعت اور قانون کی نظرمیں“ کے عنوان سے مسودہ تیارکیا ہے، مسودے کو اگلے ایک ... مزید-دھماکے میں پاکستانی قونصل خانے کا تمام عملہ محفوظ رہا، ڈاکٹر فیصل دھماکا آئی ای ڈی نصب کرکے کیا گیا، قونصل خانے کی سکیورٹی بڑھانے کیلئےافغان حکام سے رابطے میں ہیں۔ ترجمان ... مزید-جلال آباد میں پاکستان سفارت خانے کے باہر دھماکا دھماکے میں ایک سکیورٹی اہلکار سمیت 3 افراد زخمی ہوگئے، دھماکا پاکستانی سفارتخانے کی چیک پوسٹ کے 200 میٹر فاصلے پر ہوا۔ ... مزید-گلوکارہ ماہم سہیل کے گانے سجن یار کی پری سکریننگ کی تقریب کا انعقاد-پاک ہیروز ہاکی کلب کی 55 ویں سالگرہ پر ٹورنامنٹ کا انعقاد-صفائی مہم کے دوران 47 ہزار ٹن کچرا نالوں سے نکالا گیا ہے‘ وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی-مودی کے دورہ فرانس پر”انڈیا دہشتگرد“ کے نعرے لگ گئے جب کوئی دورہ فرانس پرتھا، ترجمان پاک فوج کا دلچسپ ٹویٹ، سینکڑوں کشمیری، پاکستانی اورسکھ کیمونٹی کے لوگوں کا ایفل ... مزید-حالیہ پولیو کیسز رپورٹ ہونے کے بعد بلوچستان میں خصوصی پولیو مہم شروع کی جا رہی ہے، راشد رزاق-آئی جی پولیس نے راولپنڈی میں شہری سے فراڈ کے واقعہ کا نو ٹس لے لیا

GB News

گلگت بلتستان سینئر اور جونیئر پولیس اہلکاروں میں مختلف قسم کی مایوسیاں

Share Button

ہنزہ ( ،خصوصی رپورٹ، اجلال حسین )گلگت بلتستان سینئر اور جونیئر پولیس اہلکاروں میں مختلف قسم کی مایوسیاں ۔ پولیس کا کام عوام کی جان ومال کی حفاظت کرنا ہے لیکن تب ممکن ہے جب حکومتی ذمہ داران محکمہ پولیس کے چھوٹے اور بڑے عہدوں پر کام کرنے والے اہلکاروں میں پائی جانے والی محرمیوں اورمایوس کا ازلہ کریں،دیکھا جائے تو گلگت بلتستان پولیس پاکستان کے دیگر صوبوں کے نسبتاً اپنے فرائض منصبی کی ادائیگی بہادری خو ش اخلاق ااور یمانداری میں اپنے مثال اپ ہیں ۔لیکن گلگت بلتستان حکومت کی طرف سے بدستور محکمہ پولیس گلگت بلتستان کو نظر انداز کر نے کی وجہ سے سخت مایوسی کا شکار ہیں ذرائع کے مطابق عرصہ دارز سے گلگت بلتستان پولیس میں 6 ایس پیز اور 15سے زائد ڈی ایس پیز کی خالی آسامیاں موجود ہیں تاہم گلگت بلتستان کے سینئر افسران کو ترقی دینے کے بجائے قائم مقام پوسٹییں دیکر مختلف اسٹیشنوں پر تعینات کر تے ہیں جس کی وجہ سے سینئر اور جو نیئر آفیسروں میں مایوسی پھیل رہی ہیں جبکہ افسران ترقیوں کے لئے سالوںسے منتظر ہیں۔ جبکہ دوسری جانب درجنوں سینئرانسپکٹرزکو کورسزکرانے کے باوجود ترقیاں نہ ہونے کی وجہ سے 60سالہ مدت ملازمت کو پورا کرتے ہوئے سبکدوش ہو رہے ہیں۔جبکہ اطلاعات کے مطابق پولیس ہلکاروں کے لئے گلگت بلتستان حکومت کو وفاقی حکومت نے ملازمین کو پچاس فیصد کی مد میں فنڈ بھی دیا ہے جبکہ صوبائی حکومت تاحال ملازمین کو پچاس فیصد ادا کرنے میں ناکام ہوئی ہیں جبکہ بعض ایسے اضلاع بھی ہیں جہاں پر25 فیصد اریلرز بھی ادا نہیں کیا گیا جبکہ پولیس سپاہیوں کا کہنا ہے کہ گلگت بلتستان کے دیگر سرکاری ادار وں میں چھوٹے ملازمین یعنی گریڈ ون وغیرہ کی آپ گریڈیشن ہو کر سکیل6تک دیا گیا ہے جو کہ 8 گھنٹے ڈیوٹی دیتے ہیں جبکہ پولیس فورس میں 24گھنٹے ڈیوٹی کرنے کے باوجود اہلکار سکیل 5میں کام کرنے پر مجبور ہیں اگر اسی طرح مسلسل گلگت بلتستان پولیس جوانوں کو مایوس کیا گیا تو کیسے پولیس اہلکار اپنی فرائض منصبی احسن طریقے سے سر انجام دئینگے ۔ گلگت بلتستان پولیس کے سینئر اور جونیئراہلکاروں نے گورنر اور وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کے علاوہ دیگر اعلیٰ حکومتی سربراہان سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ گلگت بلتستان پولیس میں عرصہ دراز سے پائے جانے والی مختلف مسائل اور مایوسی کا ازلہ کریں تاکہ گلگت بلتستان پولیس جوان مزید خلوص نیت ، ایمانداری کے ساتھ عوام کی جان ومال کی تحفظ میں مزید بہتری لانے کے ساتھ اہلکاروں کی حوصلہ افزائی بھی ہو گی۔

Facebook Comments
Share Button