GB News

متاثرین دیامر بھاشہ ڈیم کی آبادکاری: وفاقی حکومت نے ساڑھے 13ارب روپے کی منظوری دے دی

Share Button

چلاس (بیورورپورٹ) متاثرین دیامر بھاشہ ڈیم کی آبادکاری کیلئے تیار کردہ پیکیج کے پرپوزل کی دیامر بھاشہ اور مہمند ڈیم کی عملدرآمدکمیٹی نے باضابطہ منظوری دے دی ۔متاثرین دیامر بھاشہ ڈیم کی آبادکاری کیلئے ضلعی انتظامیہ کی جانب سے تیار کردہ پیکیج پر من و عن عملددرآمد کرتے ہوئے وفاقی حکومت نے ساڑھے 13ارب روپے کی منظوری دے دی ہے۔گزشتہ ہفتے اسلام آباد میں چیف سیکریٹری گلگت بلتستان خرم آغا اور کلکٹر دیامر ڈیم امیر اعظم حمزہ نے دیامر بھاشہ اور مہمند ڈیم عملدرآمد کمیٹی کے سامنے متاثرین دیامر ڈیم کی بروقت آباد کاری کیلئے تیار کردہ پیکیج کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی جس کے بعد دیامر بھاشہ اور مہمند ڈیم کی عملدرآمد کمیٹی نے متاثرین کی آباد کاری کیلئے ساڑھے 13ارب کی منظوری دیتے ہوئے ڈپٹی کمشنر دیامر امیر اعظم حمزہ کی کارکردگی کو اعلی سطح پر سراہا گیا،اور عملدرآمد کمیٹی کے ممبران نے مختصر عرصے میں دیامر ڈیم کی آبادکاری کا مرحلہ مکمل کرنے پر ڈی سی دیامر کی کوشیشوں کو سراہا اور تعریف کی ۔چلاس میں کے پی این سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر دیامر امیر اعظم حمزہ نے کہا کہ متاثرین کی آباد کاری بڑا چیلنج تھا اللہ کے فضل ،متاثرین کی تعاون اور عوام کی دعاوں سے یہ مرحلہ مکمل ہوچکا ہے ۔انہوں نے کہا کہ دیامر بھاشہ اور مہمند ڈیم کی عملدرآمد کمیٹی نے پیکیج کی باقاعدہ منظوری دے دی ہے ، پی سی ون کو روائز کرکے پیسے کلکٹر دیامر ڈیم کے اکاونٹ میں ٹرانسفر کیا جائیگا ،جیسے ہی پیسے ٹرانسفر ہونگے ڈیم متاثرین کی آبادکاری کیلئے پلاٹنگ اور پیسوں کی منتقلی شروع کردیں گے۔انہوں نے کہا کہ چار ہزار سے زائد ڈیم متاثرین کو فی خاندان سنتالیس لاکھ کا پیکیج ملے گا اور پلاٹ کیلئے اپلائی کرنے والوں کو پلاٹس اور نقدی کیلئے اپلائی کرنے والوں کو نقدی ملیں گے۔

Facebook Comments
Share Button