تازہ ترین

Marquee xml rss feed

GB News

ایمرجنسی سے نمٹنے کیلئے تمام ضروری اقدامات کو دو ہفتوں کے اندر مکمل کیا جائے گا،ایف سی این اے جلاس میں فیصلہ

Share Button

گلگت ( پ ر) ہنزہ میں ششپر گلیشیئر سے پیدا ہونے والی ہنگامی صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے ہیڈکوارٹر ایف سی این اے میں ایک اعلی سطح کی میٹنگ بلائی گئی جس میں گلگت بلتستان ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی ،ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریشن، ڈی سی ہنزہ، ہوم ڈیپارٹمنٹ، پاک ورکس ڈیپارٹمنٹ، محکمہ صحت، محکمہ خوراک اور دیگر محکموں کے اعلیٰ آفسران اور کے آئی یو کے ماہرین نے شرکت کی اور اس حوالے سے اب تک کیے گئے اقدامات کا جائزہ لیا ۔میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا کہ اس ایمرجنسی سے نمٹنے کے لئے تمام ضروری اقدامات کو دو ہفتوں کے اندر مکمل کیا جائے گا۔ اس میٹنگ میں پاک فوج کے انجینئر بھی شامل تھے ۔ششپر گلیشیئر کی تازہ ترین صورتحال جاننے کے لئے کل ہیلی کاپٹر سے جائزہ لیا جائے گا۔ بعد ازاں کمانڈر ایف سی این اے سے چیف سیکرٹری گلگت بلتستان اور دیگر سیکرٹریز و سینئر افسران کی ہیڈ کوارٹر ایف سی این اے میں ملاقات ہوئی۔ اس موقع پر افیسران سے بات چیت کرتے ہوئے کمانڈر ایف سی این اے نے کہا کہ سول ایڈمنسٹریشن اور پاک فوج مل کرگلگت بلتستان کے عوام کی بھلائی کو یقینی بنائیں گے۔ تمام افسران کو سراہتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آپ جس ایمانداری سے اپنے فرائض سرانجام دے رہے ہیں وہ قابل ستائش ہیں اور مستقبل میں بھی اسی تندہی سے کام کرتے رہیں تاکہ ہماری تمام کاوشوں کے اثرات گلگت بلتستان کے پسماندہ ترین طبقات تک پہنچ جائیں۔ اس موقعے پر ششپر گلیشیئر کی تازہ ترین صورتحال پہ بھی لائحہ عمل پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ چیف سیکرٹری گلگت بلتستان کیپٹن ریٹائرڈ خرم آغا نے بتایا کہ جی بی ڈی ایم اے نے ممکنہ صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیاریاں مکمل کر لی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس صورتحال پر نظر رکھنے اور کسی بھی ناگہانی صورتحال سے نمٹنے کے لیئے ہوم سیکرٹری گلگت بلتستان کی سربراہی میں ایک اعلیٰ سطحی کمیٹی بھی قائم کی گئی ہے اور اس کمیٹی کو زمہ داری سونپی گئی کہ حفظ ماتقدم کے تحت کئے گئے اقدامات کا ازسر نو جائزہ لیںاور بوقت ضرورت متاثرہ آبادی کو محفوظ مقام پر منتقلی کیلئے سہولیات کا بھی جائزہ لیا جا چکا ہے۔ چیف سیکرٹری نے بتایا کہ محکمہ خوراک کو ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ بالائی علاقوں میں 4سے 5ماہ کا خوراک محفوظ کرے اور محکمہ صحت دوائیوں کا اسٹاک اور میڈیکل عملے کی موجودگی کو یقینی بنائے گا۔سپارکو اور محکمہ موسمیات سیٹلائٹ کے ذریعے جبکہ DDMAہنزہ زمینی سطح پر مسلسل نگرانی کر رہے ہیںاور رپورٹ متعلقہ حکام تک پہنچا رہے ہیں۔ تمام متعلقہ حکام کو ہدایات جاری کی ہیں کہ ہر صورت میںعوام کی جان ومال کا تحفظ یقینی بنایا جائے۔

Facebook Comments
Share Button