تازہ ترین

Marquee xml rss feed

گوادر میں پاکستان کا سب سے بڑا اور جدید ترین ائیرپورٹ تعمیر کرنے کی تیاریاں مکمل وزیراعظم عمران خان 29 مارچ کو ساحلی شہر میں منصوبے کا سنگ بنیاد رکھیں گے، منصوبہ سی پیک ... مزید-بلاول بھٹو 26مارچ کو کراچی سے ٹرین مارچ کا آغاز کریں گے، خورشید شاہ اٹھارہویں ترمیم کی حفاظت کے لیے قانون کےدائرے میں رہ کر جو بھی کر سکتے ہیں کریں گے، بلاول بھٹو زرداری-460ارب جرمانہ ملک ریاض نے نہیں، عوام نے ادا کرنا ہے، محمود صادق ملک ریاض کوعدالت سے ڈیل میں اب بھی 700 ارب منافع ہوگا، بحریہ ٹاؤن پر دباؤ بڑھنے سے کام ٹھپ ہوا تو لوگوں نے ... مزید-مفتی تقی عثمانی پر حملہ کرنیوالے ملزمان بہت جلد قانون کی گرفت میں ہوں گے،آئی جی سندھ-آئی ایس پی آر اور پاک فضائیہ کی جانب سے یومِ پاکستان 2019 کی مناسبت سے آفیشل نغمے جاری کردیے پاکستان زندہ آباد کے عنوان سے جاری کیے گئے نغمے میں وطن کے محفافظوں کو ... مزید-فیس بک کا بغیر اجازت نامناسب تصاویر اپ لوڈ یا شیئر کرنے والے صارفین کو بلاک کے نئے اقدامات کا اعلان کسی کی نامناسب تصاویر اس کی اجازت کے بغیر شیئر کرنا نقصان دہ ہے، ہم ... مزید-وزیراعلیٰ سندھ کا مفتی تقی عثمانی پر قاتلانہ حملے میں شہید اہلکار کے نابینا بچوں کے علاج کرانے اور مفت تعلیم کا اعلان-یوم پاکستان : گورنر اور وزیراعلیٰ سندھ نے مزار قائد پر حاضری دی،ملکی سلامتی کیلئے دعاکی-سعودی ولی عہد کی مہمان نواز کرنے والے ملازمین میں ایک کروڑ اعزازی تنخواہ دیئے جانے کا انکشاف-ملائیشیا پاکستان کی دفاعی صنعت سے بے حد متاثر، پاکستان کے اینٹی ٹینک میزائل خریدنے میں دلچسپی کا اظہار گزشتہ روز ملائیشیا کے وزیراعظم نے جے ایف 17 تھنڈر جنگی طیاروں کی ... مزید

GB News

متنازعہ حقوق کے حوالے سے عمل در آمد کیلئے عدالت سے رجوع کیا جائے گا ،جاوید حسین

Share Button

گلگت(ثاقب عمر سے ) پاکستان پیپلزپارٹی کے رکن اسمبلی جاوید حسین نے کہا ہے کہ متحدہ اپوزیشن میں مشاورت مکمل ہوچکی ہے بہت جلد سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے پر عمل در آمد کے لئے اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کیا جائے گا اور گلگت بلتستان میں جس قسم کی بھی قانون سازی ہو یا کوئی کام ہو وہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کی روشنی میں ہو اگر کسی نے بھی سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کے برعکس کام کیا تو وہ توہین عدالت کا مرتکب ہوگا اور اس کے خلاف فوری کاروائی ہونی چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کو ردی ٹوکری میں ڈالنے کی کوشش کر رہے ہیں جس کے خلاف ہم فوری طر پر توہین عدالت کے حوالے سے عدالت سے بھی رجوع کرینگے اور سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کے روشنی میں ہی اب گلگت بلتستان میں کام کیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومتوں نے گلگت بلتستان کے آئینی حقوق کے حوالے سے کوئی بھی کام نہیں کیا اور پاکستان کے حکمرانوں کی ناقص پالیسی کے بدولت آج یہ ایشو عالمی سطح پر اجاگر ہوکر مزید مسائل پیداہو رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وفاق کی جانب سے الحاق پاکستان کو قبول کرکے آئینی حقوق دئے جاتے تو اچھا تھا لیکن بار کونسل نے سپریم کورٹ آف پاکستان سے رجوع کیااب سپریم کورٹ کے فیصلے پر عمل در آمد کے علاوہ ہمارے پاس کوئی اور راستہ نہیں ہے اور ہم نے مشاورت کی ہے اعتزاز حسن ، لطیف کھوسہ سمیت کسی اور قابل وکیل کو متحدہ اپوزیشن اپنا وکیل بناکر اس فیصلے پر من وعن عمل در آمد کے لئے رجوع کرے گی ۔انہوں نے کہا کہ اس سے قبل گلگت بلتستان میں تمام وفاقی ادارے موجود تھے اور اس دوران گلگت بلتستان کے عوام کو قومی دھارے میں شامل نہیں کیا گیا الحاق پاکستان کے تحت گلگت بلتستان کے عوام کو حقوق نہیں دئے گئے اب جو فیصلہ سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے گلگت بلتستان کے حوالے سے سات رکنی بنچ نے دیا ہے اس پر عمل در آمد ضروری ہے  سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف کوئی بھی بر عکس کام گلگت بلتستان کی حکومت نے کیا تو اس کو ہر گز قبول نہیں کیا جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان متنازعہ خطہ سپریم کورٹ آف پاکستان نے ڈکلیئر کیا ہے تو گلگت بلتستان کی حکومت متنازعہ خطے کے جو قوانین ہوتے ہیں اس کے تحت ہی کام کرے اور اس کے تحت ہی قانون سازی کرے اور ہر شعبے میں متنازعہ حیثیت سے کام کیا جائے اور اس کے بر عکس کام کے خلاف متحدہ اپوزیشن کام کرنے نہیں دے گی عنقریب متنازعہ حقوق کے حوالے سے عمل در آمد کے لئے عدالت سے رجوع کیا جائے گا ۔

Facebook Comments
Share Button