GB News

شاہد آفریدی کا اپنی ذاتی زندگی سے متعلق انکشاف

Share Button

شاہد آفریدی کہتے ہیں کہ ایک مرتبہ نائٹ کلب گیا اور وہاں ایک لڑکی سے ملاقات ہوئی، کئی گھنٹوں تک بات چیت کرتے رہے، بعد ازاں وہ لڑکی دلہن بن کر میرے گھر پہنچ گئی اور ہاتھ پکڑ کر کہا کہ مسجد چلو اور نکاح کرو، بڑی مشکل سے اس لڑکی سے جان چھڑوائی۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان کے مایہ ناز آل راونڈر شاہد آفریدی نے اپنی ذاتی زندگی سے متعلق ایک انکشاف کیا ہے۔اپنی کتاب میں شاہد آفریدی بتاتے ہیں کہ ایک مرتبہ دورہ آسٹریلیا کے دوران انہوں نے ایک نائٹ کلب کا دورہ کیا تھا۔ نائٹ کلب کے دورے کے دوران ان کی ایک لڑکی سے ملاقات ہوئی تھی۔ بعد ازاں اس لڑکی سے ان کی کئی گھنٹوں تک بات چیت ہوتی رہی۔ پھر ایک دن وہ لڑکی اچانک میرے گھر پہنچ گئی۔

لڑکی دلہن بن کر میرے گھر پہنچی اور میرا ہاتھ پکڑ کر بولی کے چلے مسجد اور مجھ سے نکاح کر لو۔

شاہد آفریدی کہتے ہیں کہ انہوں نے اس لڑکی سے بہت مشکل سے جان چھڑوائی تھی۔ دوسری جانب شاہد خان آفریدی سوانح حیات شائع ہونے پر میڈیا پر چلنے والی خبروں کے بعد خود بھی میدان میں آ گئے ہیں۔شاہد آفریدی نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ”الحمد اللہ! گیم چینجر پہلے سے ہی مقبول ہو رہی ہے۔ لیکن میڈیا پر چلنے والی خبروں پر مل جائیں! اور میں نے وجاہت سعید خان کیساتھ مل کر جو لکھا ہے، اس کی حوصلہ افزائی کیلئے میری کتاب پڑھیں ( میں بھی اپنی پہلی کتاب کی پہلی کاپی کے انتظار میں ہوں)۔کتاب میں اگر میں نے کسی کے بارے میں سخت موقف اختیار کیا ہے تو جہاں ضروری تھا، وہاں انہیں کریڈٹ بھی دیا ہے“۔

یاد رہے کہ بوم بوم آفریدی نے کتاب میں سنسنی خیز انکشافات کرتے ہوئے سابق کوچ وقاریونس کو اوسط درجے کا کپتان اورخوفناک کوچ قراردیتے ہوئے کہا کہوقار یونس جب سے پاکستان ٹیم کے کوچ بنے تو ان کی وسیم اکرم سے کشمکش رہی، وقار یونس نے ہرکام میں مداخلت کی، اسی لئے دونوں کے درمیان اختلافات رہے۔شاہد آفریدی نے اپنی کتاب میں جاوید میانداد کوتنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ میانداد کو بڑا کھلاڑی سمجھا جاتا ہے مگروہ چھوٹے آدمی ہیں، جاوید میانداد کو میرے بیٹنگ سٹائل سے نفرت تھی، انہوں نے میرے خلاف ایک محاذ قائم کر لیا تھا جبکہ ایک پریزینٹیشن تقریب میں جاوید میانداد نے مجھ سے زبردستی اپنی تعریف کرائی۔سابق کپتان نے کہا کہ انگلینڈ میں سپاٹ فکسنگ سکینڈل کا مجھے بہت پہلے علم ہوگیا تھا، مظہر مجید نے فون مرمت کیلئے لندن میں ایک دکان پر دیا تھا، دکان کا مالک میرے دوست کا دوست نکلا، مظہر مجید کے فون سے پاکستانی کھلاڑیوں کو کئے گئے پیغامات ملے ، ٹیم مینجمنٹ کوثبوت دکھائے مگر کوئی ایکشن نہ ہوا، میں نے یہ پیغامات وقار یونس اور یاورسعید سے شیئر کئے تھے ،اس وقت مینجمنٹ خوفزدہ تھی یا اسے ملک کے وقار کا خیال نہ تھا۔شاہد آفریدی نے کہا کہ عبدالرزاق نے بھی سلمان بٹ ،محمد عامر اور آصف پر شک کا اظہار کیا تھا ، اس وقت شعیب ملک کپتانی کیلئے فٹ نہیں تھے ، ناتجربہ کاری شعیب ملک کی کمزوری تھی، شعیب ملک کو کپتان اور سلمان بٹ کو نائب کپتان بنانا غلط اقدام تھا، کان کا کچا شعیب ملک برے لوگوں سے برے مشورے لیتا تھا، سلمان بٹ کو مستقبل میں قومی ٹیم میں جگہ نہیں ملنی چاہیے۔بوم بوم آفریدی نے کشمیر کے حوالے سے لکھا ہے کہ کشمیر بھارت اورپاکستان کا نہیں بلکہ کشمیر کشمیریوں کا ہے اور اس سلسلے میں وزیراعظم عمران خان کو مزید کوششیں کرنی چاہئیں۔
Facebook Comments
Share Button