GB News

گلگت میں لینڈ مافیا اور قبضہ گروپ سرگرم

Share Button

گلگت(سٹی رپورٹر)گلگت میں لینڈ مافیا اور قبضہ گروپ سرگرم ہوگیا، مناور گاؤں اور ہرپون میں لینڈ مافیا اور قبضہ گروپ کے خلاف عوام نے سڑکوں پر آنے کا اعلان کردیا ہے۔ ہرپون کے عوام نے قبضہ گروپ کے خلاف گلگت غذر روڑ بند کرکے احتجاج کی دھمکی دی ہے جبکہ مناور گاؤں سے تعلق رکھنے والے چالیس خاندانوں نے بچوں سمیت چیف سیکرٹری ہاؤس کے باہر ٹینٹ ویلج بناکر ڈھیرے ڈالنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اہلیان ہرپون نے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ ایک اہم حکومتی عہدیدار کی مبینہ سرپرستی میں ہنزل بالا میں ہرپون کچٹوداس پر ناجائز قبضہ کرلیا گیاہے۔ جس پر اسٹنٹ کمشنر گلگت کو تحریری درخواست دیدی ہے۔ کیونکہ ناجائز قبضہ کی وجہ سے پرامن فضاء خراب ہوگی۔ اگر گلگت بلتستان حکومت اس ناجائز قبضہ کے خلاف فوری انکوائری کمیشن تشکیل دیکر غیر جانبدارانہ فیصلہ نہیں کرتی ہے تو اہلیان ہرپون اس قبضہ مافیا کیخلاف احتجاج کرکے گلگت غذر شاہراہِ کو مطالبات حل ہونے تک غیرمعینہ مدت تک ٹریفک کیلئے بند کردینگے۔ اہلیان ہرپون نے اپنی جاری پریس ریلیز میں الزام لگایا ہے کہ گلگت بلتستان میں حکمران جماعت کے چند زمہ دار افراد اان کی زمینوں پر قبضہ کرنے میں زاتی دلچسپی لیتے ہیں جوکہ صوبائی حکومت کیلئے پریشانی کا باعث بن سکتی ہے۔ دوسری جانب شہر کے مشرقی گاؤں مناور کے چالیس گھرانوں پر مشتمل ایک گروپ نے الزام لگایا ہے کہ مناور میں بااثر طبقہ اور بعض سرکاری افراد نے مشترکہ اراضی کی بندبانٹ کی دکان کھول دی ہے۔ جس کی وجہ چالیس گھرانوں پر مشتمل مناور کے پشتنی باشندے نے اپنے بچوں سمیت جلد شاہراہِ قراقرم پر احتجاج کرنے کا فیصلہ کیا اور کہا ہے حکومت لینڈ مافیا کو پھر بھی کنٹرول کرنے میں ناکام ہوتی ہے اور متاثرہ خاندانوں کو انکا حق نہیں دلاسکتی ہے تو چیف سیکرٹری ہاؤس کے باہر ایک ٹینٹ ویلج قائم کرکے وہاں رہائش اختیار کریں گے اور مطالبات کی منظوری تک وہیں پر ہی رہیں گے بعد میں کسی بھی صورتحال کی ذمہ داری حکومت پر عائد ہوگی۔ کیونکہ ہماری ملکیتی اراضی پر لینڈ مافیا اور بااثر افراد نے قبضہ کرلیا ہے۔ ایسی صورت میں ہماری رہائیش گاہ یا تو گاؤں سے گزرنے والی شاہراہِ قراقرم ہوسکتی ہے یا پھر چیف سیکرٹری ہاؤس کے سامنے ٹینٹ ویلج میں اپنے بچوں کیساتھ زندگی گزاریں گے۔

Facebook Comments
Share Button