GB News

آٹھ ماہ کی حکومت سے 70سال کا حساب نہیں مانگا جاسکتا، فردوس عاشق

Share Button

وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ کسی لیڈر کے دل میں پاکستان کیلئے اتنی تڑپ نہیں جو عمران خان کے دل میں ہے’ ملک میں تمام اداروں میں اصلاحات کا عمل مکمل کرنا ہے’ اداروںکو سیاست زدہ کرنے سے ان کا کام متاثر ہوتا ہے’ آٹھ ماہ کی حکومت سے ستر سال کا حساب نہیں مانگا جاسکتا’ سیاستدان کی نظر اگلے الیکشن پر جبکہ لیڈر آئندہ نسلوں کا سوچتا ہے’ میڈیا ورکرز کو صحت انصاف کارڈ اور پاکستان ہائوسنگ سکیم کا حصہ بنا رہے ہیں۔ جمعہ کو فردوس عاشق اعوان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم سے ملاقات میں انہوں نے اپنی ترجیحات سے آگاہ کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا وزارت سے متعلقہ محکموں میں اصلاحات کرنی ہیں۔ وزارت اطلاعات میرا ذاتی نہیں پاکستان کا ادارہ ہے اے پی پی کے ذریعے پاکستان کا مثبت تشخص اجاگر کرنا ہے۔ وزارت اطلاعات کا کام منفی پروپیگنڈے کے خلاف جنگ لڑنا ہے۔ اداروں کو سیاست زدہ کرنے سے ان کا کام متاثر ہوتا ہے اے پی پی کو ایسا فعال ادارہ بنانا ہے جو عالمی سطح پر پاکستان کی ترجمانی کرے۔ ادارے میں پہلی اصلاحات کے طور پر یونین اور انتظامیہ میں بہتر تعلقات ہیں ہم نے اس ملک میں ستر سال سیاستدان بن کر فیصلے کئے سیاستدان کی دلچسپی الیکشن جیتنے میں ہوتی ہے لیکن لیڈر اپنی سیاست بچانے کی نہیں ادارے بچانے کی پالیسیز بناتا ہے۔ عمران خان لیڈر بن کر اس قوم کا مقدمہ لڑرہے ہیں۔ اصلاحات کا ایجنڈا آنے والی نسل کی بقاء کا ایجنڈا ہے ڈالر کی قیمت پر سائنسدان بن کر تبصرے کرنے والوں نے معیشت کو لہولہان کیا۔ ماضی کے حکمرانوں نے ملکی معیشت کو تباہ کیا اور ملک کو قرضوں کی طرف دھکیلا۔ کسی لیڈر کے دل میں وہ تڑپ نہیں دیکھی جو عمران خان کے دل ممیں ہے۔ میڈیا ورکرز کو صحت انصاف کارڈ اور پاکستان ہائوسنگ سکیم کا حصہ بنا رہے ہیں۔ آٹھ ماہ کی حکومت سے ستر سال کا حساب نہیں مانگا جاسکتا۔ فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ ڈالر پر تبصرے کرنیوالے سائنس دان بنے ہوئے ہیں، باتیں وہ لوگ کر رہے ہیں جنہوں نے معیشت کو لہولہان کیا اور اربوں روپے کا قرض چھوڑ کر گئے ہم بھی سیا سی مفادات کے لئے معاملا ت قالین کے نیچے چھپا سکتے تھے ہمیں سیا سی نہیں قومی مفاد عزیز ہے ۔ انہوں نے کہا غریب، مزدور اور محنت کشوں کا جتنا احساس وزیراعظم کے دل میں ہے کسی سابقہ حکمران کے دل میں نہیں دیکھا، 8 ماہ کی حکومت سے 70 سال کاحساب نہیں مانگا جاسکتا، پاکستان کا مفاد ہماری اولین ترجیح ہے۔مسائل کو پس پشت ڈال کر آگے بڑھ سکتے تھے لیکن ایسا نہیں کیا عمر ان خان تما م چیلنجز سے نمٹنے کے لئے آئے ہیں ملک میں تما م اداروں میں اصلا حات کا عمل مکمل کر نا ہے ۔ فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ عمران خان کو سب سے زیادہ مزدور اور پسے ہوئے طبقے کی فکر ہے، ہم نے مشاورت سے آگے بڑھنا ہے، ماضی کے حکمرانوں نے ملکی معیشت کو قرضوں تلے دبا دیا ۔ قبل ازیں مشیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا شریف خاندان نے معاشی دہشتگردی کی، اب کس منہ سے عوام کے پاس جانے کی بات کرتے ہیں، شریف خاندان نے عوام اور معیشت کو لہو لہان کئے رکھا، 30 سال ملکی معیشت کا جنازہ نکالنے والے عوام کا مزید تیل نکالنا چاہتے ہیں۔

Facebook Comments
Share Button