تازہ ترین

Marquee xml rss feed

پاکستان میں فحش ویب سائٹس دیکھنے کی رجحان میں کمی واقع پاکستان میں فحش مواد اپ لوڈ ہونے کے شواہد نہیں ملے، جبکہ انٹرنیٹ پر فحش مواد دیکھنے کے رجحان میں بھی واضح کمی ہوئی ... مزید-علیم خان پھر سے پنجاب کی کابینہ میں واپسی کیلئے تیار تحریک انصاف کے سینئر رہنما کو جلد پنجاب کی کابینہ میں شامل کر لیا جائے گا، ممکنہ طور پر سینئر وزیر کی وزارت ہی سونپی ... مزید-مجھے اپنی عزت کا بھی خیال ہے، میرا مزاج ایس نہیں ہے کہ زیادہ شور شرابا کر سکوں اب جو وزارت سونپی گئی ہے اس کیلئے مشاورت نہیں کی گئی، تاہم وزیراعظم کا فیصلہ قبول کرتا ہوں: ... مزید-نامور وکیل کی مشرف کے خلاف غداری کیس میں پیش ہونے سے معذرت-مریم صفدر کے ہوتے ہوئے شر یف فیملی کو کسی د شمن کی ضرور ت نہیں‘ شہباز شریف ساتھی کی گرفتاری پربو کھلاہٹ کا شکار ہو کر بیان بازی کرر ہے ہیں ، غلام محی الدین دیوان-وزیر اعظم قوم کو بتائیں کہ وہ کیا ایجنڈا لیکر امریکہ جارہے ہیں،سینیٹرسراج الحق ایجنڈا افغانستان سے امریکی افواج کی بحفاظت واپسی کا ہے یا قوم کی مظلوم بیٹی ڈاکٹر عافیہ ... مزید-عوام سے جینے کا حق چھیننے کے بعد اب کفن اور قبر پر ٹیکس لگا کر موت بھی مہنگی کر دی گئی ہے ، سینیٹر سراج الحق اس وقت میں ملک میں جھوٹوں کی حکومت ہے ،جماعت اسلامی اقتدار ... مزید-ریکوڈک کیس میں 6 ارب ڈالرز جرمانے کا معاملہ، اب پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، چین پاکستان کی مدد کیلئے میدان میں آگیا چین ریکوڈک منصوبے کا کنٹرول خود سنبھال کر چلی اور کینیڈا ... مزید-رینجرز کی شہر کے مختلف علاقوں میں کارروائیاں، 5 ملزمان گرفتار-دائودی بوہرہ جماعت کے سربراہ ڈاکٹر سیدنا مفدل سیف الدین کراچی پہنچ گئے

GB News

آرڈر دو ہزار اٹھارہ کالعدم ہوچکا، سمریاں 2019 کے تحت بھیجی جائیں، متحدہ اپوزیشن

Share Button

متحدہ اپوزیشن گلگت بلتستان اسمبلی کیپٹن(ر) محمد شفیع، جاوید حسین،نواز خان ناجی،عمران ندیم،کاچو امتیاز، حاجی رضوان اور بی بی سلیمہ نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے لارجر بینچ کے فیصلے کے بعد آرڈر 2018 کالعدم ہو چکا ہے۔ گلگت بلتستان میں اب تک سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد نہ ہونا عدالتی حکم کی توہین ہے. سپریم کورٹ آف پاکستان گلگت بلتستان میں اپنے فیصلے پر عملدرآمد کے لئے تمام ریاستی اداروں کو احکامات بھی جاری کرے سوچی سمجھی سازش کے تحت آرڈر 2018 کے تحت سمریاں بھیجی جا رہی ہیں جو کسی صورت قابل قبول نہیں ہے۔ گلگت بلتستان میں اب آرڈر 2019 نافذ ہو چکا ہے اگر سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد نہیں ہوا تو عوام کو سڑکوں پر لائینگے۔انہوں نے مذید کہا ہے کہ وزیر اعلی گلگت بلتستان اور ان کی کابینہ کی جانب سے سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے پر عملدرآمد نہ کرنا اور آرڈر 2018 کے تحت سمریاں بھیجنا عدالتی فیصلے کی توہین ہے۔سپریم کورٹ آف پاکستان کو چاہیئے کہ وہ اس سلسلے میں گلگت بلتستان میں موجود تمام ریاستی اداروں کو احکامات جاری کرے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے لارجر بینچ کے فیصلے پر عملدرآمد کو یقینی بنائے۔ سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد نہیں ہوا تو عوام کو سڑکوں پر لانے پر مجبور ہونگے۔ہمارے صبر کا امتحان نہ لیا جائے سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں فوراً گلگت بلتستان میں آرڈر 2019 کو نافذ کیا جائے اور تمام سمریاں اور فیصلے آرڈ 2019 کے تحت بھیجی جائیں ۔

Facebook Comments
Share Button