تازہ ترین

Marquee xml rss feed

پاکستان میں فحش ویب سائٹس دیکھنے کی رجحان میں کمی واقع پاکستان میں فحش مواد اپ لوڈ ہونے کے شواہد نہیں ملے، جبکہ انٹرنیٹ پر فحش مواد دیکھنے کے رجحان میں بھی واضح کمی ہوئی ... مزید-علیم خان پھر سے پنجاب کی کابینہ میں واپسی کیلئے تیار تحریک انصاف کے سینئر رہنما کو جلد پنجاب کی کابینہ میں شامل کر لیا جائے گا، ممکنہ طور پر سینئر وزیر کی وزارت ہی سونپی ... مزید-مجھے اپنی عزت کا بھی خیال ہے، میرا مزاج ایس نہیں ہے کہ زیادہ شور شرابا کر سکوں اب جو وزارت سونپی گئی ہے اس کیلئے مشاورت نہیں کی گئی، تاہم وزیراعظم کا فیصلہ قبول کرتا ہوں: ... مزید-نامور وکیل کی مشرف کے خلاف غداری کیس میں پیش ہونے سے معذرت-مریم صفدر کے ہوتے ہوئے شر یف فیملی کو کسی د شمن کی ضرور ت نہیں‘ شہباز شریف ساتھی کی گرفتاری پربو کھلاہٹ کا شکار ہو کر بیان بازی کرر ہے ہیں ، غلام محی الدین دیوان-وزیر اعظم قوم کو بتائیں کہ وہ کیا ایجنڈا لیکر امریکہ جارہے ہیں،سینیٹرسراج الحق ایجنڈا افغانستان سے امریکی افواج کی بحفاظت واپسی کا ہے یا قوم کی مظلوم بیٹی ڈاکٹر عافیہ ... مزید-عوام سے جینے کا حق چھیننے کے بعد اب کفن اور قبر پر ٹیکس لگا کر موت بھی مہنگی کر دی گئی ہے ، سینیٹر سراج الحق اس وقت میں ملک میں جھوٹوں کی حکومت ہے ،جماعت اسلامی اقتدار ... مزید-ریکوڈک کیس میں 6 ارب ڈالرز جرمانے کا معاملہ، اب پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، چین پاکستان کی مدد کیلئے میدان میں آگیا چین ریکوڈک منصوبے کا کنٹرول خود سنبھال کر چلی اور کینیڈا ... مزید-رینجرز کی شہر کے مختلف علاقوں میں کارروائیاں، 5 ملزمان گرفتار-دائودی بوہرہ جماعت کے سربراہ ڈاکٹر سیدنا مفدل سیف الدین کراچی پہنچ گئے

GB News

سپیکر نے سکردو میں بجلی اور پانی کے بحران کا نوٹس لے لیا

Share Button

سپیکر گلگت بلتستان اسمبلی حاجی فدا محمد ناشاد نے سکردو شہر میں بجلی اور پانی کے بحران کا نوٹس لیتے ہوئے گزشتہ روز شہریوں کے ہمراہ سدپارہ ڈیم کا دورہ کیا ہے اور ڈیم میں پانی کی سطح کم ہونے پر گہر ی تشویش کا اظہار کیا ہے۔سپیکر نے اس موقع پر وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمان سے بذریعہ فون رابطہ کر کے انہیںحالات سے آگاہ کر دیا ،جوکہ ان دنوں آئندہ مالی سال کے ترقیاتی بجٹ کے حوالے سے وفاقی حکومت سے بات چیت کرنے کے لیے اسلام آباد گئے ہوئے ہیں۔سپیکر نے وزیر اعلیٰ کو بتایا کہ سدپارہ جھیل میں پانی کی سطح مقپون دور کی تعمیرکردہ بند کی سطح سے بھی خطرناک حد تک نیچے گر چکی ہے۔جسکی وجہ سے سکردو شہر اور اردگرد کے علاقوں میں پینے کے پانی کا قحط پڑ چکا ہے جبکہ بجلی کے بحران نے شہریوں کو پہلے ہی پریشان کر رکھا ہے۔ان مسائل کا واحد حل شتونگ نالے کوسدپارہ ڈیم کی جانب موڑنے کا تجدیدی پی سی ون کو منظوری کرانا ہے۔جسکو 14فروری 2019 کو وفاقی وزارت منصوبہ بندی تک پہنچایا گیا ہے اور اس منصوبے کام بلا تاخیر شروع کرنے کی اشد ضرورت ہے۔انہوں نے چیف منسٹر پرزور دیا ہے کہ وہ وزارت منصوبہ بند ی کے حکام سے ترجیحی بنیادوں پر رابطہ کرکے یہ منصونہ منظور کرانے میں اپنا کردار ادا کریں۔سپیکر نے اس موقع پرلی گئی سدپارہ ڈیم کی تصاویر بھی چیف منسٹر کا بذریعہ واٹس ایب ارسال کیا ہے جس میںجھیل کا بنیادی بند واضح نظر آرہا ہے۔سپیکر نے ساتھ ہی سیکریٹری منصوبہ بندی گلگت بلتستان سید ابرار حسین کو بھی اس مسئلے پر توجہ دینے پر زور دیا ہے تاکہ سکردو شہر اور گردونواح کے مکینوں کو درپیش مشکلات کا اذالہ کیا جاسکے۔سپیکر نے مزید کہا کہ اگر ان مسائل پر توجہ بروقت نہیں دی گئی تو آنے والے دنوں میں اس حوالے سے امن و امان کی صورت حال خراب ہوسکتی ہے کیونکہ ہر سال مختلف اضلاع سے سینکڑوں خاندان سکردو شہر میں منتقل ہورہے ہیںجس سے اس طرح کے حل طلب مسائل کے حجم میں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے۔سپیکر نے کہا ہے اس مسئلے کے حل کے ہم سب کو سنجیدہ ہو کر ضرور ی اقدامات کر نے کی اشد ضرورت ہے۔

Facebook Comments
Share Button