تازہ ترین

Marquee xml rss feed

سندھ میں فاروڈ بلا ک بنایا گیا توبدمزگی پیدا ہوگی، ڈاکٹرشاہد مسعود سندھ میں فاروڈ بلاک کوعوام قبول نہیں کریں گے ، کیونکہ وہی 20 کرپٹ لوگ ایک جگہ سے اٹھا کر دوسری جگہ رکھ ... مزید-گرمی کی شدت اور ہیٹ ویو کے پیش نظر ضلعی سطح پرہیٹ اسٹروکس/ ویو کیمپس لگائے جائیں۔آئی جی سندھ-عالمی یوم امن پرپاکستان میں قیام امن کے لیے اپنی جانوں کی قربانی دینے والے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں،خرم شیر زمان-شیخ رشید کا بلاول بھٹو کو سالگرہ کی مبارکباد دینے کا دلچسپ انداز " ہیپی برتھ ڈے مائی لو"۔ شیخ رشید نے صحافیوں کے بھی قہقہے لگوا دئیے-عالمی برادری امن کا آغازمسئلہ کشمیرکے حل سے کرے، بلاول بھٹو عالمی تنازعات کے حل کیلئے سفارتکاری اورمذاکرات پرانحصار بڑھانا ہوگا، دنیا انسانی ذات کے لیے قدرت کی گود ... مزید-میئر کراچی کیلئے نیب کا شکنجہ تیار ،وسیم اختر کو آئندہ ہفتے طلب کئے جانے کا امکان محکمہ بلدیات میں کرپشن اور سرکاری خزانے کی لوٹ مار میں ملوث کے ایم سی کے 75افسران کیخلاف ... مزید-سندھ حکومت کو گرانا آسان کام نہیں ہے، قمر زمان کائرہ آپ سندھ حکومت کو نہیں گرا سکتے، سندھ حکومت کو گرانا آپ کے بس کا روگ نہیں، کرپشن توبہانہ ہے سندھ حکومت نشانہ ہے۔سینئر ... مزید-کیپٹن (ر) صفدر کی عبوری ضمانت میں 12اکتوبرتک توسیع-سعودی عرب امت مسلمہ کا مرکز ہے،وزیر اعظم عمران خان کی سعودی قیادت سے ملاقاتوں کا محور مسئلہ کشمیر رہا، ہندوستان نے کشمیر کے حوالے سے جو حقائق چھپا رکھے ہیں وزیر اعظم ... مزید-ڈاکٹرز مریضوں کے ساتھ شفقت و ہمدردی کا سلوک،معالج کی حیثیت سے علاج کے ساتھ بیماریوں کی روک تھام اور صحت کی نگہداشت پر زیادہ توجہ مرکوز کریں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی ... مزید

GB News

حکومت مخالف تحریک کا اعلان

Share Button

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے دس جون سے حکومت کے خلاف عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا اعلان کیا ہے۔بلاول بھٹو نے کہا ایمنسٹی اسکیم بھی امیروں کے لیے متعارف کرائی گئی ہے، 73 کے آئین کے لیے شہید بھٹو نے قربانی دی، محترمہ نے تیس سال جدوجہد کی اور شہادت حاصل کی، اب ہر طرف سے آئین پر حملے ہورہے ہیں مگر پی پی خون کے آخری قطرے تک اس آئین کا تحفظ کرے گی۔ موجودہ سلیکٹڈ حکومت کے خلاف بھی کارکن اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے۔وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے بھی کہا ہے کہ عید کے دن مریم نواز کی نواز شریف سے ملاقات نہ کرانا درست عمل نہیں، عید کے دن ہر قیدی سے رشتے دار ملاقات کا حق رکھتا ہے، آمریت کے دور میں ایسا نہیں ہوا، جو عید کے دن مریم نواز کے ساتھ ہوا ہے۔ملک کی معاشی صورتحال کا سب کو معلوم ہے، حکومت کوئی بھی ٹارگٹ پورا نہیں کر سکی عید کے بعد بڑی گرفتاریاں ہوں نہ ہوں مگر عوام مہنگائی میں گرفتار ہو چکے ہیں۔پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے جس احتجاجی تحریک کاکہاتھا اس کا اعلان جلد مولانا فضل الرحمان کریں گے،عید کے بعد آل پارٹیز کانفرنس بلائی جائے گی۔دریں اثناء حکومت نے کہا ہے کہ حکومت کی سرمایہ کار دوست پالیسیوں سے مرعوب ہو کر مصر،ملائیشیا اور گلف ممالک سے پاکستان میں بڑے پیمانے پر براہِ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ہو گی۔ رواں ماہ کے آخر میں نو بزنس ٹائیکونز پاکستان پہنچیں گے۔وہ سرمایہ کاری کے بڑے منصوبوں کا ارادہ رکھتے ہیں۔ حکومت پاکستان ان کی سرمایہ کاری کی مکمل حفاظت کرے گی اور انہیں سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ادھر ومیر حارجہ شاہ محمود قریشی نے وضاحت کی ہے کہ عمران خان ملک کے وزیراعظم ہیں اور مجھے وزیراعظم بننے کی خواہش نہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف اور اتحادی جماعتیں وزیر اعظم عمران خان پر مکمل اعتماد کرتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ‘میں وزارت عظمیٰ کا امیدوار نہیں ہوں اور نہ ہی ایسی خواہش ہے۔وفاقی وزیر نے کہا کہ اپوزیشن کا احتجاج انتشار کا باعث بنے گا، جس سے ملک اور جمہوریت کو نقصان پہنچے گا۔گزشتہ حکومتوں کی وجہ سے ملک میں مہنگائی منتقل ہوئی، اگر اپوزیشن سمجھتی ہے کہ احتجاج سے مسئلہ حل ہوگا تو ضرور احتجاج کرے۔اگر احتجاج ہوگا تو بیرونی سرمایہ کیسے آئے گا، احتجاج تو خود اپوزیشن کی حمایت کے لیے مناسب نہیں ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ عالمی طاقتیں وزیرستان میں صورتحال کو خراب کررہی ہیں، اپوزیشن جماعتوں کو دیکھنا چاہیے کہ کون خطے میں عدم استحکام کا خواہاں ہے۔دفاعی بجٹ میں کٹوتی سے متعلق سوال پر جواب دیا کہ عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کی جانب سے کوئی شرائط عائد نہیں کی گئی تھیں۔دفاعی بجٹ قوم کی ضرورت ہے، پاک فوج نے ملکی اقتصادی صورتحال کے پیش نظر اپنے بجٹ میں رضاکارانہ طور پر کمی کی۔عید کے بعد اب لوگوں کو دو باتوں کا انتظار ہے ایک گرفتاریوں کا اور دوسرے حکومت مخالف تحریک کا تجزیہ کاروں نے اس پر اتفاق کیا تھا کہ عید کے بعد گرفتاریوں کا موسم شروع ہوجائے گا اور حکومت کے خلاف تحریک کے معاملات کو بھی حتمی شکل دی جائے گی اب عید کے ہنگامے ختم ہوگئے ہیں اور انتظار کا موسم شروع ہوچکا ہے آصف زرداری کی گرفتاری کا چرچا ہے آصف زرداری اور ان کے اہل خاندان کو بھی آنے والے دنوں کا علم ہے اس لئے پارٹی کے اعلیٰ سطح اجلاس ہوئے ہیں اور کارکنوں کو اسلام آباد پہنچنے کے اشارے کئے جارہے ہیں لگتا ہے گرفتاری بھی ہوگی اور معرکہ بھی ہوگا۔دوسری طرف مریم نواز کی ٹویٹر بازی میں ایک بار پھر میاں نواز شریف کی صحت کو تشویشناک بتانے کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے ان کے ڈاکٹر نے ایک دفعہ جیل میں ان کا معائنہ بھی کیا ہے صحت کے معاملات پہلے جیسے ہیں کوئی نئی اور بڑی تبدیلی نہیں ہوئی مگر ٹمپو یہی بنایا جارہا ہے کہ صحت تشویشناک ہوتی جارہی ہے۔ سارے ٹمپو کا مقصد یہی ہے کہ ایک بار پھر ضمانت حاصل کرلی جائے اور عدالت نہ صرف سزا معطل کرکے ضمانت دے بلکہ علاج کیلئے بیرون ملک جانے کی اجازت بھی دے دے شریف فیملی کی کوشش اور پلاننگ یہی ہے اب آگے کیا ہوتا ہے اس بارے میں کوئی وثوق سے کچھ نہیں کہہ سکتا حکومت کے خلاف تحریک چلنے کے اس لئے آثار بہت کم ہیں کہ پاک فوج نے حکومت کو کہا ہے کہ وہ دفاعی بجٹ میں اضافہ نہیں مانگے گی اور اپنے افسروں کی تنخواہوں میں بھی اضافہ نہیں کرے گی مقصد محض معاشی بہتری کے سلسلہ میں حکومتی کوششوں میں ہاتھ بٹانا اور اس سے تعاون کرنا ہے اس صورتحال میں کوئی عقل کا اندھا ہی یہ کہہ سکتا ہے کہ حکومت کے خلاف تحریک کامیابی سے ہمکنار ہوسکے گی۔مولانا فضل الرحمان سمیت سب کو معلوم ہونا چاہیے کہ پاک فوج نے اضافی بجٹ نہ لینے کے حوالے سے کیا پیغام دیا ہے اس پیغام کے بعد یہ ضروری ہے کہ سارے لیڈران تحریک کا خیال دل سے نکال دیں موجودہ حکومت اپنی آئینی مدت پوری کرے گی اور اس امر کے امکانات بھی موجود ہیں کہ مزید پانچ سال بھی تحریک انصاف ہی کی حکومت ہو ان پانچ برسوں کے بعد عمران خان کو حکومت کا تجربہ حاصل ہوجائے گا ان کی اپنی پارٹی کی تجربہ کار ٹیم بھی تیار ہوجائے گی جبکہ اس دوران مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کے بہت سے لیڈروں کے پس زنداں جانے سے ان دونوں جماعتوں میں ٹوٹ پھوٹ کا عمل تیز ہوگا اور دونوں سے نکلنے والے تحریک انصاف ہی کا رخ کریں گے۔ چیئرمین نیب کے خلاف اپوزیشن کی مہم دم توڑ چکی ہے بدنیتی پر جاری اس مہم نے آخر کار ناکام ہی ہونا تھا چیئرمین نیب کسی خوف و خطر سے بے نیاز ہوکر بدعنوانی امور منی لانڈرنگ کے خلاف سینہ سپر ہیں اور آنے والے دنوں میں بڑی بڑی کامیابیاں ان کے حصے میں آئیں گی۔ پاک فوج نے دفاعی بجٹ میں اضافہ نہ کرنے اور حکومت کی معاشی پالیسیوں کی حمایت کے حوالے سے جو پیغام دیا ہے اس کا یہ بھی مفہوم واضح ہے کہ پاک فوج اگر اپنی صفوں میں جرنیلوں تک کا احتساب کرکے انہیں سزائیں دے رہی ہے تو وہ چاہے گی کہ حکومت ،عدلیہ اور نیب بھی بلا اختیار احتساب کا عمل انجام دیں اور سرعت سے انجام دیں انصاف اور احتساب ہوتا ہوا نظر آنا چاہیے بلا امتیاز احتساب پاک فوج کا ماٹو ہے اور یہی ماٹو موجودہ حکومت کا بھی ہے سمجھدار سیاستدان یقینا پاک فوج کے پیغام کا مفہوم سمجھ چکے ہوں گے تاہم اب حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنی کارکردگی بڑھائے۔ ہائوسنگ اسکیم سمیت تمام اسکیموں کے صرف اعلانات پر اکتفا نہ کرے ان پر عمل درآمد بھی شروع کردے ہائوسنگ اسکیم کے اشتہارات تو الیکٹرانک میڈیا پر تسلسل کے ساتھ آرہے ہیں قوم کو یہ بھی بتایا جائے کہ کن کمپنیوں نے گھروں کی تعمیر کی خواہش ظاہر کی ہے اور کس کس کمپنی کو کس کس شہر میں تعمیر کے ٹھیکے دئیے جارہے ہیں جتنا جلد ان گھروں کی تعمیر شروع ہوگی اتنا جلد تعمیراتی صنعت متحرک ہوگی اور عوام کیلئے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے وزیر اعظم کو پنجاب پر بھی زیادہ سے زیادہ توجہ مرکوز کرنی ہوگی صوبائی حکومت اب خبروں اور میڈیا میں تو نظر آنے لگی ہے وزیر اعلیٰ کے حوالے سے لمبے چوڑے بیانات بھی چھپوائے جارہے ہیں اچھی بات ہے کہ حکومت میڈیا میں نظر آنے لگی ہے مگر اسے زمین پر نظر آنا اور لوگوں کے دلوں میں بھی موجود ہونا چاہیے بڑے صوبے میں پولیس سمیت بہت سے محکموں میں زبردست اصلاح کی گنجائش موجود ہے امن و امان کو بہتر بنانے کی اشد ضرورت ہے زرعی شعبہ کو اطمینان دلانے کی ضرورت ہے صوبے کے صنعتی شعبہ سے بھی وزیر اعلیٰ کے رابطے ہونے چاہیں جو ابھی تک قائم نہیں ہوسکے۔

Facebook Comments
Share Button