تازہ ترین

Marquee xml rss feed

سندھ میں فاروڈ بلا ک بنایا گیا توبدمزگی پیدا ہوگی، ڈاکٹرشاہد مسعود سندھ میں فاروڈ بلاک کوعوام قبول نہیں کریں گے ، کیونکہ وہی 20 کرپٹ لوگ ایک جگہ سے اٹھا کر دوسری جگہ رکھ ... مزید-گرمی کی شدت اور ہیٹ ویو کے پیش نظر ضلعی سطح پرہیٹ اسٹروکس/ ویو کیمپس لگائے جائیں۔آئی جی سندھ-عالمی یوم امن پرپاکستان میں قیام امن کے لیے اپنی جانوں کی قربانی دینے والے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں،خرم شیر زمان-شیخ رشید کا بلاول بھٹو کو سالگرہ کی مبارکباد دینے کا دلچسپ انداز " ہیپی برتھ ڈے مائی لو"۔ شیخ رشید نے صحافیوں کے بھی قہقہے لگوا دئیے-عالمی برادری امن کا آغازمسئلہ کشمیرکے حل سے کرے، بلاول بھٹو عالمی تنازعات کے حل کیلئے سفارتکاری اورمذاکرات پرانحصار بڑھانا ہوگا، دنیا انسانی ذات کے لیے قدرت کی گود ... مزید-میئر کراچی کیلئے نیب کا شکنجہ تیار ،وسیم اختر کو آئندہ ہفتے طلب کئے جانے کا امکان محکمہ بلدیات میں کرپشن اور سرکاری خزانے کی لوٹ مار میں ملوث کے ایم سی کے 75افسران کیخلاف ... مزید-سندھ حکومت کو گرانا آسان کام نہیں ہے، قمر زمان کائرہ آپ سندھ حکومت کو نہیں گرا سکتے، سندھ حکومت کو گرانا آپ کے بس کا روگ نہیں، کرپشن توبہانہ ہے سندھ حکومت نشانہ ہے۔سینئر ... مزید-کیپٹن (ر) صفدر کی عبوری ضمانت میں 12اکتوبرتک توسیع-سعودی عرب امت مسلمہ کا مرکز ہے،وزیر اعظم عمران خان کی سعودی قیادت سے ملاقاتوں کا محور مسئلہ کشمیر رہا، ہندوستان نے کشمیر کے حوالے سے جو حقائق چھپا رکھے ہیں وزیر اعظم ... مزید-ڈاکٹرز مریضوں کے ساتھ شفقت و ہمدردی کا سلوک،معالج کی حیثیت سے علاج کے ساتھ بیماریوں کی روک تھام اور صحت کی نگہداشت پر زیادہ توجہ مرکوز کریں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی ... مزید

GB News

آئینی حقوق کے ایشو پر ہمیں مل بیٹھ کر کام کرنا ہوگا ،وزیر اعلیٰ

Share Button

گلگت(ثاقب عمر سے ) وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الر حمن نے کہا ہے کہ میرے نزدیک گلگت بلتستان میں آئینی حقوق کے حوالے سے مشہور نعرہ صوبے کا ہے مگر صوبہ بنانے میں ریاست کی کچھ مجبوریاں ہیں اس لئے وفاق میں گلگت بلتستان آرڈر 2019پر کام ہورہا ہے اور آرڈر 2019کو گلگت بلتستان اسمبلی اور کونسل کے مشترکہ اجلاس سے منظوری حاصل کر کے باقائدہ ایکٹ بنانے پر وفاق نے اتفاق کیا ہے اور ماحول سازگار بنانے کے لئے مجھے ذمہ داریاں دی ہیں ۔انہوں نے وزیر اعلیٰ ہائوس میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ گلگت بلتستان آرڈر 2019ایک لحاظ سے آرڈر 2018کی کاپی ہے البتہ آرڈر 2018میں ججوں کی تقرری کے لئے جوڈیشل کمیٹی بنانے کی شق نکالی گئی تھی اس مر تبہ ہماری بات تسلیم کی گئی ہے اور آرڈر2019میں ججز تقرری کے لئے جوڈیشل کمیٹی کی شق شامل کی گئی ہے انہوں نے بتایا کہ گلگت بلتستان کا صرف آدھا حصہ متنازعہ ہے ۔ آرڈر2019کو پارلیمنٹ سے منظوری حاصل کر کے ایکٹ آف پارلیمنٹ بنایا جاتا تو پھر لوگ اعتراض کرتے کہ جس پارلیمنٹ میں ہماری نمائندگی میں ہی نہیں اس پارلیمنٹ کو فیصلہ کرنے کا اختیار کس نے دیا ہے ؟ اس لئے اس اعتراض سے بچنے کے لئے گلگت بلتستان آرڈر 2019کو گلگت بلتستان اسمبلی اور گلگت بلتستان کونسل کے مشترکہ اجلاس سے منظوری حاصل کرکے ایکٹ کی شکل دی جائے گی ۔انہوں نے کہا کہ آئینی حقوق کے حوالے سے جتنے بھی اجلاس ہوئے اس میں گورنر گلگت بلتستان نے ایک لفظ نہیں کہا خاموشی توڑنے کا میں نے کہا بھی لیکن انہوںنے خاموشی نہیں توڑی شاید پہلی مرتبہ اس قسم کے اجلاس میں شرکت کی تھی اس لئے وہ حیران تھے ۔انہوں نے کہا کہ آئینی حقوق کے ایشو پر ہمیں مل بیٹھ کر کام کرنا ہوگا کچھ لوگ میری دشمنی میں بہت آگے چلے جاتے ہیں کچھ لوگ شاید یہ سمجھتے ہیں کہ یہ ایشو ختم ہوگیا تو وہ سیاست کس طرح کرینگے ۔ہم لوگ سیاسی کارکن ہیں کچھ علاقائی پارٹی کے لوگ ہمیں زر خرید غلام کے نام پر طعنے بھی دیتے ہیں لیکن ان کے پاس کوئی منشور نہیں ہے پاکستان مسلم لیگ کے پاس منشور ہے اور ہم نے وہ نعرہ نہیں لگانا ہے جس سے کچھ بھی حاصل نہیں ہو اس وقت زمینوں کا مسئلہ ہے تو کچھ لوگ زمینوں کا نعرہ لگا کر عوام کے جذبات کو ابھارتے ہیں اور مشہور نعرے لگاکر گلگت بلتستان کے عوام کو دھوکے میں رکھ رہے ہیں ہمیں شہرت حاصل کر نے والے نعروں سے نکلنا ہوگا اور ہمیں سنجیدگی کے ساتھ آئینی حقوق کے لئے کام کرنا ہوگا۔ہم نے وہ کام کرنا ہے جو ہم سے ہوگا ہم یوٹرن نہیں لے سکتے یوٹرن عمران خان جیسے لوگ لے سکتے ہیں ہماری اتنی ہمت نہیں ہے کہ ہم یوٹرن لیں ۔انہوں نے کہا کہ پہلے ہمارا سالانہ بجٹ 19ارب تھا جس کو کاٹ کر 15ارب کر دیا گیا ہے اور جن پراجیکٹس پر فنڈز مختص نہیں کئے گئے تھے ان کو پی ایس ڈی پی سے نکالا گیا تھا اور ائیر مکس گیس پلانٹ کی زمین کی وجہ سے لائسنس منسوخ ہوا اور سیورج کے نظام کی وجہ سے سڑکوں کا کام التوا کا شکار ہوا کیونکہ اکھاڑ پچھاڑ ہونی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کنوداس تا نلتر ایکسپریس وے جو کہ زیرو پوائینٹ ہے وہاں سے غذر چترال ایکسپریس وے نے بننا ہے اور اس کی منظوری کے لئے رات دن کام کیا ہے وفاقی حکومت نے آتے ہی میڈیکل کالج ، وومن یونیورسٹی کیمپس اور کارڈیک ہسپتال کا بجٹ کاٹا اس پر بھی کام ہو رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ بڑی مشکل ہے اب ائیر مکس پلانٹ کا کام شروع کیا گیا ہے اور بہت جلد اس پر کام مکمل ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ گلگت شہر میں منی میٹرو بس سروس اربن ٹرانسپورٹ کو متعارف کرایا جائے گا اور ٹریفک قوانین میں اصلاحات لائی جائینگی۔انہوں نے کہ عبدالحمید خان نے سوشل میڈیا میں ریاست مخالف باتیں کی تھیں اس نے کس کو قتل نہیں کیا تھا آج انڈیا کے جو بھی مخالف تھے ان کو انڈیا نے اپنا دوست بنایا ہے تو ہمیں بھی ان کی رائے کو سننا چاہئے اور ان کی رائے پر قد غن لگانے کے بجائے ان کی رائے صحیح ہو یا غلط سننا چاہئے کیونکہ تیس سال قبل یہ لوگ ہم سے ملنے کو ترستے تھے اب ہم ان سے ملنے کو ترستے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ عبدالحمید خان نے خود گرفتاری دی ہے ایک شخص کو راضی کر کے لایا گیا ہے اب اس کو بہت انداز میں ٹریٹ کرناہے ۔انہوں نے کہا کہ جو ہی آرڈر 2019کی بات سامنے آئی ایک دم سے وفاقی اداروں کے انخلاء کے لئے اسمبلی میں قراردادیں آئیں ہم اس وقت یہ ثابت کر سکتے ہیں کہ آزاد کشمیر سے بااختیار ہم لوگ ہیں اس وقت آزاد کشمیر میں ایم آر آئی مشین نہیں ہے اس کے علاوہ بہت سے مسائل کا سامنا ہے جو لوگ کشمیر طرز کا سیٹ اپ مانگ رہے ہیں وہ اپنا وقت ضائع کر رہے ہیں کیونکہ اس قسم کا سیٹ اپ ملنے والا نہیں ہے جو ہمیں ملنا ہے اس حوالے سے کام کرنا ہے او ر ہماری حکومت نے اپوزیشن کو آرڈر2018اور آرڈر 2019کا باقاعدہ مسودہ پیش کر کے ان کو سمجھایا اور انہوں نے تو سپریم کورٹ آف پاکستان کا فیصلہ بھی نہیں پڑھا ہے ان کے سامنے ہم نے سب کچھ رکھ دیا اور اس کے علاوہ تمام پارلیمانی پارٹیوں کو مدعو کیا جس میں ایک جماعت نے بائیکاٹ کا اعلان کیا ایکشن کمیٹی کو میں نے سر تاج عزیز کمیٹی کی سفارشات پر کام کرنے کو کہا تو انہوں نے صاف انکار کیا اور میں ایسے میں گندم کے ایک روپیہ اور ٹیکس کے دو روپیہ کے لئے اپنی جماعت کو لیکر کھڑا نہیں ہوسکتا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم آئینی حیثیت کے حوالے سے کام کر رہے ہیں تمام سٹیک ہولڈرز کے ساتھ مشاورت ہوئی ہے مزید جاری ہے اور اس میں صحافیوں کو بھی شامل کر رہے ہیں تاکہ وہ آئینی حیثیت سمیت گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی کے لئے اپنی بہترین رائے دیں اور اس پر کام کیا جاسکے ۔

Facebook Comments
Share Button