تازہ ترین

Marquee xml rss feed

یہ تاثر قائم کر دیا گیا ہے تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کرو یا پھر جیل جاؤ، بلاول بھٹو کا بابر اعوان کی بریت پر ردِ عمل حکومت کا صوبوں کے ساتھ رویہ ٹھیک نہیں ہے، یہ صوبائی ... مزید-اگر سیلز ٹیکس واپس ہی کرنا ہے تو پھر لیتے کیوں ہیں؟ عبدالرزاق داؤد ایک دم صفر سے 17فیصد ٹیکس لگانے سے مسائل پیدا ہوں گے،ہم ہمیشہ ریونیو کے پیچھے گئے صنعتی ترقی کے پیچھے ... مزید-نیب نے بابر اعوان کو معاف نہیں کیا، ہمایوں اختر خان بابر اعوان کی بریت کا فیصلہ احتساب عدالت کا ہے، رہنما پاکستان تحریکِ انصاف-حضرو میں ماں اپنی بیٹی کی عزت بچانے کی کوشش میں جان کی بازی ہار گئی حملہ آور نے بیٹی کی جان بچانے کی کوشش کرنے والی خاتون کو چاقو کے وار کرکے شدید زخمی کیا، بعد ازاں خاتون ... مزید-چند سالوں میں پیٹرول ناقابل یقین حد تک سستا جبکہ اس کا استعمال بھی نہ ہونے کے برابر ہو جائے گا دنیا کی بڑی بڑی کمپنیاں اب بجلی سے چلنے والی ہائبرڈ گاڑیاں تیار کر رہی ہیں، ... مزید-وزیراعلی سندھ سے برٹس ٹریڈ کمشنر فار پاکستان، مڈل ایسٹ کی وزیراعلی ہائوس میں ملاقات-گراں فروشی، ملاوٹ اور غیر معیاری اشیاکی فروخت کے خلاف کاروائی جاری رکھی جائے، وزیراعلی-لیبر تنظیموں کا اپوزیشن کی متوقع احتجاجی تحریک سے مکمل لاتعلقی کا اعلان ملک کو معاشی طور پر مضبوط بنانے کیلئے حکومت اور قومی اداروں کے ساتھ کھڑے ہیں ‘لیبرتنظیمیں اپوزیشن ... مزید-ناقص معاشی پالیسیوں کے ذمہ دار ہم سے 10 ماہ کا حساب مانگ رہے ہیں، جب تک معیشت بہتر نہیں ہو جاتی ہم ان سے ان کے 40 سالوں کا حساب مانگتے رہیں گے‘ ماضی میں ذاتی مفادات کے لئے ... مزید-نیب لاہور نے ہسپتالوں کے مضر صحت فضلہ سے گھریلو اشیاء کی تیاری کے حوالے سے میڈیا رپوٹس کا نوٹس لے لیا متعلقہ اداروں کے حکام بریفنگ کیلئے طلب ‘ ملوث عناصر کے خلاف ٹھوس ... مزید

GB News

انتہا پسندی کا جن

Share Button

نریندر مودی کی سرپرستی میں بی جے پی کا حکومتی دور بھارتی اقلیتوں اور بالخصوص مسلمانوں کیلئے ایک ڈرائونی حقیقت ہے کہ سوائے اعلیٰ ذات کے ہندوؤں کے، نچلی ذات کے ہندو بھی انتہا پسندی کا شکار ہوئے۔ اب جبکہ مودی دوبارہ وزیر اعظم کا حلف اٹھا چکے ہیں تو بھارت کی تمام اقلیتوں میں عدم تحفظ کا احساس بڑھنے لگا ہے۔ انتہا پسند ہندو بے لگام ہورہے ہیں۔ جس کو چاہے اذیتوں کا شکار بنا لیتے ہیں۔ جس کو چاہے مار دیتے ہیں ۔ کوئی پوچھنے والا نہیں۔ بھارت میں حالیہ انتخابات کے دوران اور بی جے پی کی دوبارہ جیت کے بعد ظلم و تشدد کا ایک نیا دور شروع ہوا۔اکثر واقعات میں بھارتی پولیس ملوث ہوتی ہے۔۔مئی 2015 سے لے کر گزشتہ برس دسمبر تک ایسے حملوں میں کم از کم 44 افراد کو قتل کیا جاچکا ہے۔کبھی مسلمانوں کے کاروبار کو بند کرایا جارہا ہے۔ کبھی بزرگ مسلمانوں کی جان بخشی خنزیر کھلا کر کی جارہی ہے تو کبھی انتہا پسند ہندوؤں کے جتھے مسلمانوں کو دن دیہاڑے ظلم و بربریت کا نشانہ بنا رہے ہیں لیکن حکومتی اہلکار اپنے فرائض بھول کرخاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔بھارت میں انتہا پسندی کی شدت سے اپنے پرائے سب ہی مودی حکومت کو ڈرا رہے ہیں مگر ان کی کان پر جوں تک نہیں رینگی۔ پھر جوں کیوں رینگے، مودی تو خود بہت بڑے دہشت گرد، انتہا پسند اور قاتل ہیں۔ دنیا کو گجرات میں مسلمانوں کی قتل و غارت ابھی بھولی نہیں۔ امریکی اخبارواشنگٹن پوسٹ کا کہنا ہے کہ بھارتی انتخابات میں مودی کی دوبارہ فتح خود بھارت کیلئے کوئی اچھا شگون نہیں۔ پانچ سال قبل معاشی اصلاحات کا نعرہ لگا کر مہم چلانے والے وزیر اعظم نے اس انتخاب میں فرقہ پرستی اور قومیت کا نعرہ بلند کیا۔ بھارتی جنتا پارٹی نے ملک کی 18 کروڑ مسلم آبادی کو تنگ کرنے کیلئے اقدامات کا عزم کر رکھا ہے۔ مساجد کو منہدم کر کے ان کو مند ربنانا، مسلمانوں پر دہشت گرد ی کا الزام عائد کرنا ۔ اخبارکا کہنا ہے کہ نریندر مودی کے بھارت میں مسلمان عدم تحفظ کا شکار ہو گئے ہیں۔

Facebook Comments
Share Button