تازہ ترین

GB News

پیپلزپارٹی کی سابقہ پانچ سالہ حکومت کی لوٹ مار پر نیب کی مجرمانہ خاموشی نے گلگت بلتستان کی عوام کو مایوس کیا ، شمس میر

Share Button

گلگت (پ ر)مشیر اطلاعات گلگت بلتستان شمس میر نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی کی سابقہ پانچ سالہ حکومت کی لوٹ مار پر نیب کی مجرمانہ خاموشی نے گلگت بلتستان کی عوام کو مایوس کیا ہے۔ مشیر اطلاعات نے کہا کہ سابق ڈپٹی سپیکر پہلے یہ بتائیں کہ ان کی کمپنی بلیک لسٹ کیوں ہوئی ؟ شاہین اینڈ سنز نے اپنے دور حکومت میں قومی خزانے کو اربوں روپے کا ٹیکہ لگا دیا۔ کروڑوں کے منصوبے ریوائز کروا کر اربوں روپے بٹور لیئے گئے اور منصوبوں کے تکینیکی پلان تبدیل کرکے جہاں غیر قانونی ایسکلیشن لیئے گئے وہاں منصوبوں کی ایڈوانس ادائیگیاں حاصل کرکے منصوبوں کو ادھورا چھوڑا گیا۔ اسمبلی بلڈنگ، زوالفقار آباد پل اور دیگر کئی اہم منصوبوں میں بدترین کرپشن کی گئی اور منصوبوں کی عدم تکمیل سے مذکورہ منصوبوںکی مالیت بڑھتی گئی جس سے قومی خزانے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا۔ شمس میر نے کہا کہ منصوبوں میں خرد برد، کرپشن اور غیر قانونی ادائیگیوں اور وصولیوں کے ثبوت متعلقہ محکموں نے پاکستان انجینئرنگ کونسل اور نیب کو بھی فراہم کیے ۔ انہوں نے کہا سابقہ پیپلز پارٹی کی حکومت نے نوکریوں کی خرید و فروخت ، ٹھیکوں کی نیلامی،اور پوسٹنگ، ٹرانسفرمیں کمیشن کی وصولیوں میں صوبہ سندھ کا بھی ریکارڈ توڑ دیا تھا۔ مشیر اطلاعات نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے چار کے ٹولے کی کرپشن کی وجہ سے سرکاری افسران بدنام ہوئے اور گلگت بلتستان کا خزانہ خالی ہو گیا۔ شمس میر نے کہا کہ جمیل احمد اور 4کے ٹولے کا احتساب گلگت بلتستان کی عوام کا پاپولر مطالبہ تھااور ہے، ان کی نامی اور بے نامی جائیدادوں کا احتساب ناگزیر تھا اور آج بھی ہے اور ان کی کرپشن کی منی ٹریل پنڈورا بکس بھی کھلنا چاہیئے تھا لیکن نیب کے ادارے نے گلگت بلتستان میں سابق پیپلز پارٹی کی صوبائی حکومت کی کرپشن کا کوئی حساب نہ لیا۔شمس میر نے کہا کہ وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے شفاف گورننس ، محفوظ مالیاتی ڈسپلن اور تعمیر و ترقی سے گلگت بلتستان کی عوام کا اعتماد نظام پر بحال کیا ہے۔ آج عالمی ادارے گلگت بلتستان کی گڈ گورننس کی تعریف کر رہے ہیںاور نظام آج محفوظ ہاتھوںمیں ہے۔

Facebook Comments
Share Button