تازہ ترین

Marquee xml rss feed

معشیت میں بہتری آ رہی ہے ، وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کی نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو-گورنر پنجاب چوہدری محمدسرور نے آئی سی آئی میں مورینگاڈیری مصنوعات کے نئے پلانٹس کاافتتاح کر دیا-گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور سے وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کی ملاقات-کسی احتجاجی تحر یک سے کوئی خطر ہ نہیں، حکومت اپنی آئینی مدت پوری کر ے گی، ملکی اور معاشی مضبوطی کیلئے کر پشن کے کینسر کو ختم کر نا لازم ہو چکا ہے، کر نٹ اکائونٹس خسارے ... مزید-پاکستان ایک امن پسند ملک ہے‘مودی سرکار نے مقبوضہ کشمیر میں ظلم،بربریت اورسفاکیت کے ذریعے امن کو روند ڈالا ہے‘ بین الاقوامی برادری کو مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق ... مزید-وزیراعلیٰ سندھ کا ایک مہینہ طویل ’’کلین مائے کراچی‘‘ مہم شروع کرنے کا فیصلہ 600 سے زائد ڈمپرز ، شاولز ، ٹریکٹرز اور 400 ورکرز شہر بھر میں جاری مہم میں حصہ لیں گے-وزیر اعلیٰ سردار عثمان بزدار کی چونیاں آمد، مقتول بچوں کے اہل خانہ سے ملاقات، گلے لگا کر دلاسہ دیا سانحہ چونیاں کے ذمہ داروں کے بارے میں اطلاع دینے والے کیلئے حکومت ... مزید-تکنیکی تعلیم کی فراہمی سے ہیومن ریسورس کو بہتر بنایا جاسکتا ہے ،جام کمال خان پولی ٹیکنک کے شعبے میں بہتری سے ہم اپنی صنعت کو بہتر اور اعلی تعلیم یافتہ افرادی قوت فراہم ... مزید-سید مراد علی شاہ نے کراچی میں متعین چین کے سبکدوش ہونے والے قونصل جنرل وانگ یو Wang Yu سے وزیراعلیٰ ہاؤس میں ملاقات ین کی حکومت کا پاکستان کے کشمیر کے حوالے سے مؤقف کی حمایت ... مزید-میجر عدیل شاہد اور سپاہی فراز حسین مادر وطن کی عزت اور حفاظت پر قربان ہوگئے ‘شہباز شریف ہمارے شہید قوم کے سر کی چادر ہیں ان کا شوق شہادت اور جذبہ ایمانی ہی ہماری اصل قوت ... مزید

GB News

مقبوضہ کشمیر :کرفیو کے باعث قحط کی صورتحال،لوگ فاقہ کشی کا شکارہونے لگے

Share Button

سری نگر(آئی این پی) مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی جانب سے کرفیو او رلاک ڈائون دوسرے ماہ میں داخل ہوگیا ہے مسلسل کرفیو کے باعث مقبوضہ وادی میںاشیائے خوردونوش ختم ہوگئی ہیں قحط کی سی صورتحال کی وجہ سے لوگ فاقہ کشی کا شکارہونے لگے ہیںاس کے علاوہ جموں و کشمیر کے تاجروں کو مالی طور پر کم از کم 500 کروڑ روپے کا نقصان اٹھانا پڑا ہے۔ کاروبار کے ساتھ ساتھ کشمیر کی سیاحتی صنعت کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے جو کشمیریوں کی آمدنی کا اہم ترین ذریعہ ہے۔رواں سال جون جولائی میں سوا تین لاکھ سیاحوں نے مقبوضہ کشمیر کا دورہ کیا تھا اور اگست میں یہ تعداد صفر ہوگئی ہے جس کے نتیجے میں کشمیری دو وقت کی روٹی کو بھی ترس گئے ہیں دوسری جانب تنازع کے حل کے لئے سفارتی کوششیں بھی تیز ہوگئی ہیںاور سعودیہ اور عرب امارات اس سلسلے میں متحرک ہوگئے ہیں جس کے تحت سعودی عرب اور یواے ای کے وزرائے خارجہ آج اسلام آباد آئیں گے،تفصیلات کے مطابق مقبوضہ وادی کشمیر میں مسلسل کرفیو اور انسانی نقل وحرکت پر عائد ریاستی پابندیوں سمیت بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو ایک ماہ مکمل ہوگیا ۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق 21 ویں صدی میں مقبوضہ وادی چنار کو پتھر کے دور میں دھکیلنے والی ہندو انتہا پسند مودی حکومت نے مواصلاتی رابطوں کو ختم کررکھا ہے اور اشیائے خورد و نوش کی ترسیل روک کر ہمالیائی علاقے میں قحط جیسی صورتحال پیدا کردی ہے، مریضوں کو اسپتال جانے سے روکا جارہا ہے ہے اور علاج معالجہ کی حاصل سہولتوں پر پابندیاں لگائی گئی ہیں، جدید دنیا کی معلوم تاریخ حکومتی ظلم و ستم کی ایسی دوسری نظیر پیش کرنے سے قاصر ہے۔گزشتہ ایک ماہ کے دوران ساڑھے دس ہزار سے زائد افراد کو گرفتار کرنے والی مودی سرکارنے ساڑھے چار ہزار افراد پر پبلک سیفٹی ایکٹ جیسے کالے قانون کا اطلاق کرکے اپنا گھنائونا چہرہ پوری دنیا کے سامنے بے نقاب کردیا ہے۔کشمیر میڈیا سروس کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ ایک ماہ کے دوران قابض بھارتی حکومت کے احکامات پر اس کی درندہ صفت افواج نے گولیاں مار کر ایک خاتون سمیت 16 کشمیریوں کو شہید کیا ہے۔ فائرنگ، پیلٹ گنز اور آنسو گیس کی شیلنگ سے 367 معصوم و بے گناہ کشمیری شدید زخمی بھی ہوئے ہیں۔بھارت کی انتہا پسند مودی حکومت نے گزشتہ ماہ کی پانچ تاریخ کو مقبوضہ وادی چنار کو ملکی آئین کے تحت حاصل خصوصی درجہ ختم کرکے ہمالیائی علاقے میں بدترین کرفیو نافذ کیا تھا جو تاحال برقرار ہے۔ اس وقت عملا پوری دنیا سے مقبوضہ وادی کٹی ہوئی ہے، ٹی وی چینلز اوراخبارات پہ پابندی ہے، لینڈ لائنز سمیت موبائل فون سروسز اور انٹرنیٹ کی سہولتیں معطل ہیں۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق ادویات کی عدم دستیابی نے اسپتالوں میں قلت پیدا کردی ہے جب کہ پیرا میڈیکل اسٹاف کو بھی اپنے فرائض کی انجام دہی کے لیے پہنچنے میں سخت دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے،سری نگر کے مئیرجنید اعظم مٹو بھی صورتحال پر پھٹ پڑے ہیں انھوں نے کہا ہے کہ بہت بڑی حقیت ہے کہ موبائل فون سروس کام نہیں کر رہی ہے، انٹرنیٹ بند ہے، ڈائلسز کے مریض ہیں، لوگوں کو کیموتھراپی کی ضرورت ہے، وہاں پر حاملہ خواتین مشکلات کا شکار ہیں، یہ بالکل غیر حقیقی ہے کہ کوئی بھی کہے کہ صورت حال معمول کے مطابق ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا وادی یہی کچھ جاری رہا تو انسانی المیہ جنم لے سکتا ہے۔دوسری جانب تنازع کے حل کے لئے سفارتی کوششوں میں تیزی آگئی ہے ، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے وزرائے خارجہ آج پاکستان پہنچیں گے اور اعلیٰ قیادت سے ملاقاتیں کریں گے جس کے دوران مسئلہ کشمیر بھی زیر بحث آئے گا۔سعودی وزیر مملکت برائے خارجہ امور عادل الجبیرآج اسلام آباد پہنچیں گے جہاں وہ وزیراعظم عمران خان، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کریں گے۔متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ عبداللہ بن زاید بن سلطان النہیان بھی آج پاکستان کے دورے پر پہنچیں گے اور اعلیٰ قیادت سے ملاقاتیں کریں گے۔ذرائع کے مطابق دونوں وزرائے خارجہ پاکستان کے بعد بھارت جائیں گے جہاں ان کی بھارتی اعلیٰ قیادت سے ملاقاتیں ہوں گی ،ذرائع کے مطابق دونوں وزرائے خارجہ پاکستانی قیادت سے ہونے والی ملاقاتوں کے تناظر میں مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے بھارتی قیادت سے تبادلہ خیال کریں گے۔

Facebook Comments
Share Button