تازہ ترین

GB News

کشمیر دنیا کا سب سے بڑا قید خانہ بن چکا، خورشید شاہ

Share Button

پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سید خورشید احمد شاہ نے کہا ہے کہ پاکستان آج جن حالات کا شکار ہے اس کے ذمہ دار سیاستدان، حکمران اور ادارے ہیں اور شرم محسوس کرتے ہوئے انہیں اپنی اس ذمہ داری کو قبول کرنا چاہیے یہ حکومت کبھی کسی کو بندکرنے کی تو کبھی کسی کو جیل بھیجنے کی خبریں میڈیا کو دے کر ہراسمنٹ پھیلانا اور حکومت کرنا چاہتی ہے مگر وہ سن لے کہ ہراسمنٹ سے اس کی حکومت زیادہ دیر نہیں چل سکتی ہمیں ماضی کو بھلا کر پاکستان کو قائد اعظم کا پاکستان بنانے اور اپنے بچوں کے بہتر مستقبل کے لیے اسے محفوظ بنانا ہوگا ہم ان کو ورثے میں ٹوٹا پھوٹا پاکستان نہیں دینا چاہتے ان خیالات کا اظہار انہوں نے سکھر سول اسپتال کے دورے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ہرجمعہ کو آدھا گھنٹہ سنگلز بند کرنے سے کشمیر کا مسئلہ حل نہیں ہوگا ہماری حکومت نے خارجہ پالیسی کو تباہ و برباد کردیا ہے ایران اور ترکی ہمارے ساتھ کھڑے ہیں مگر ہمارے تعلقات ان ممالک سے ہیں جو مودی فاشسٹ کو بلاکر اسے گولڈ میڈل پہنا رہے ہیں اور ہمارے وزیر اس پر کہتے ہیں کہ ان ممالک کے ہندوستان سے اپنے مفادات وابستہ ہیں ایسے بیانات دینے پر ان کو شرم آنی چاہیے کشمیر کے مسئلے پر حکومت کو قوم اور سیاستدانوں کو اعتماد میں لینا چاہیے تاکہ دنیا تک کشمیر کے لیے ایک موثر آواز جانی چاہئے ان کا کہنا تھا کہ کشمیر دنیا کا سب سے بڑا قید خانہ بن چکاہے جہاں پر 35 روز سے مسلسل انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ہورہی ہیں مگر اس پر اقوام متحدہ کا ادارہ نوٹس لینے کے بجائے بین بجانے میں مصروف ہے جس پر ان کو شرم آنی چاہیے خورشید شاہ نے مولانا فضل الرحمان کی جانب سے دھرنے میں شرکت کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں کہا کہ پیپلز پارٹی بھی اپوزیشن کے اتحاد کا حصہ ہے۔

Facebook Comments
Share Button