تازہ ترین

Marquee xml rss feed

ایک سال کے دوران پاکستان میں غربت میں اضا�� ن�یں بلک� کمی �وئی 40 لاکھ لوگوں کے غربت کی لکیر سے نیچے چلے جانے کی باتیں بے بنیاد �یں، عالمی بینک نے رپورٹ جاری کر دی-وزیراعظم کا کشمیریوں کے ساتھ اظ�ار یکج�تی م�م جاری رکھنے کا �یصل� مودی اب خو�زد� �ے ک� کر�یو اٹھے گا تو خون ریزی �و گی، مودی کشمیریوں کو محکوم بنانے کے لیے طاقت کا استعمال ... مزید-�ندو مذ�ب کے ت�وار�ولی،دیوالی پر عام تعطیلات،قبل ازوقت تنخوا� ادائیگی کیس ،درخواست قابل سماعت �ونے پر �یصل� مح�وظ-مریم او رنگزیب کی شا�د خاقان عباسی سے ملاقات کی درخواست منظور ، ملاقات کی اجازت دیدی گئی-جج ارشد ملک کے بیان حل�ی میں مجھ پر لگائے گئے الزامات من گھڑت اور بے بنیاد �یں، ناصر بٹ نے جواب �ائی کورٹ میں جمع کرادیا جج ارشد ملک نے میری ان سے ملاقات کی آڈیو وڈیو ... مزید-شا�د خاقان عباسی کو جیل میں س�ولیات �را�م کرنے سے متعلق درخواست پر �یصل� مح�وظ-مولانا �ضل الرحمن مذاکرات کے دروازے بند ن� کریں شیخ رشید پ�لے ج�اں کشمیر کی بات �ور�ی تھی اب مولانا کی بات �ور�ی �ے، ان سے ک�وں گا ی� وقت احتجاج کا ن�یں �ے میڈیاسے گ�تگو-۲ این ای52کی یونین کونسل نمبر 8تمیر اسلام آباد میں کی چئیرمین شپ، راج� عمران خضر ایڈووکیٹ کو ٹکٹ جاری-ا* موجود� سلیکٹڈ حکومت میں اداروں کو متنازع� بنادیا گیا،بلاول بھٹو 4سی پیک پرکام رک گیا �ے،حکومت کومزید وقت دینا ملک کی سالمیت سے کھیلنے کے متراد� �ے، وقت گیا سلیکٹڈ حکومت ... مزید-عدالتوں میں زیرسماعت سرکاری مقدمات کی مؤثر اور مکمل پیروی کریں تاک� ریاست کے م�اد کا بھرپور طریقے سے د�اع کیا جا سکے،ڈپٹی کمشنر حیدرآباد

GB News

حکومت کو گھر بھیجنے کے مشن پر اپوزیشن میں رابطے تیز

Share Button

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) حکومت کو گھر بھیجنے کے مشن پر اپوزیشن میں رابطے تیز ہو گئے ہیں، مولانا فضل الرحمن نے اپوزیشن لیڈر اور مسلم لیگ ن کے صدر میاں محمد شہباز شریف سے ٹیلیفونک رابطہ کیا جبکہ ن لیگ آزادی مارچ میں شرکت کے حوالے سے حتمی فیصلہ نہیں کرپائی ہے پارٹی میںاختلافات کی خلیج گہری ہوگئی ہے اور ہفتہ کو ہونے والے اجلاس میں سینئررہنمائوں نے شرکت نہیں کی،اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ نوازشریف کے خط کے مندرجات پر مولانا فضل الرحمن کو اعتماد میں لیا جائے گا اور اس سلسلے میں ن لیگ کا وفد احسن اقبال کی قیادت میں آج فضل الرحمن سے ملاقات کرے گا،حکومت کو گھر بھیجنے کے مشن پر اپوزیشن میں رابطے تیز ہو گئے ہیں، مولانا فضل الرحمن نے اپوزیشن لیڈر اور مسلم لیگ ن کے صدر میاں محمد شہباز شریف سے ٹیلیفونک رابطہ کیا ،نجی ٹی وی کے مطابق دونوں رہنماؤں کے درمیان ٹیلیفونک رابطے پر جے یو آئی (ف) کے امیر مولانا فضل الرحمن نے سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کی طرف سے حمایت پر تشکر کا اظہار کیا۔ دونوں رہنماؤں کے درمیان آزادی مارچ پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اس سے قبل مسلم لیگ ن کا اہم اجلاس ہوا اس موقع پر پارٹی میں واضح تقسیم نظر آئی، (ن) لیگ کے چیئر مین راجہ ظفر الحق، پرویز رشید،مرتضی جاوید عباسی اور محمد زبیر سمیت اہم ترین رہنماں کو مدعو نہ کیا گیاشیزا خواجہ اور جاوید لطیف بھی غیر حاضررہے۔ سینیٹر پرویز رشیدکاکہنا تھا مجھے پارٹی اجلاس میں بلایا نہیں گیا، کیسے چلا جاتا۔؟ پرویز رشید نے کہا کہ دعوت نہ دینے کے پیچھے کیا وجوہات ہیں میں نہیں جانتا۔سابق گورنر سندھ زبیر عمر نے کہا کہ پارٹی اجلاس میں بلانا یا نہ بلانا پارٹی کا اندرونی معاملہ ہے۔ اجلاس کے دوران مسلم لیگ ن کے صدر میاں محمد شہباز شریف کا کہنا تھا کہ میری طبیعت کے حوالے سے مولانا فضل الرحمن کو آگاہ کیا جائے اور ان سے پوچھا جائے کہ دھرنا ہے یا ایک دن کا مارچ ہے۔ سابق وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا تھا کہ بڑے بھائی میاں محمد نواز شریف کی ہدایت ہے کہ مارچ میں ضرور شرکت کرنی ہے۔ اجلاس کے دوران لیگی رہنماؤں نے استفسار کیا کہ دھرنے یا مارچ کے دوران قافلے ماڈل ٹاون سے اکھٹے ہوں یا اندرون لاہور سے۔جس پر شہباز شریف نے جواب دیا کہ مولانا کچھ بتائیں تو ہی ہم آگے کچھ کریں گے۔ اس دوران شہباز شریف نے گلے شکوے بھی کیے، مسلم لیگ ن کے صدر کا کہنا تھا کہ میری میڈیا میں کردار کشی کی جا رہی ہے، مجھ سے غلط باتیں منسوب کی جارہی ہیں۔شہباز شریف کا کہنا تھا کہ میرے قائد اور میرے بڑے بھائی میاں محمد نواز شریف مجھے جانتے ہیں، آخری وقت تک نواز شریف کے ساتھ کھڑا رہونگا۔ اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے پارٹی میں اختلافات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف پارٹی صدر ہیں اور رہیں گے، ن لیگ آزادی مارچ میں اہم کردار ادا کرے گی۔انہوں نے کہا کہ آزادی مارچ کے حوالے سے قائد نوازشریف نے ہدایت دی تھی، لیگی حکمت عملی کیلئے تفصیلی خط شہباز شریف کولکھا ہے ، مشاورتی اجلاس میں نوازشریف خط کے مندراجات پڑھ کر سنائے گئے۔انہوں نے کہا کہ ہمارے قائد نوازشریف نے آزادی مارچ کیلئے روڈ میپ لکھ کر بھیجا ہے مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماں کا وفدآج مولانا فضل الرحمن سے ملاقات کرے گا تاکہ آزادی مارچ کے حتمی لائحہ عمل طے کر سکیں، انہوں نے کہا کہ شہبازشریف پارٹی کے صدر تھے، ہیں اور رہیں گے، صدر، سیکرٹری جنرل اور سیکرٹری انفارمیشن پارٹی کے بیان دینے کے مجاز ہیں، ان کے علاوہ کوئی بھی بیان کسی کا ذاتی بیان ہوسکتا ہے میڈیا سے درخواست ہے ڈس انفارمیشن کو بغیر تصدیق کے نہ چلایا جائے۔انہوں نے کہا کہ، نوازشریف نے کہا ہے کہ ایسی مہم کا آغاز کیا جائے جس سے پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کا خاتمہ ہو۔ ہمارے قائد نے یہ بھی کہا ہے کہ جو خط میں نے لکھا ہے اسکے نکات مولانا صاحب کیساتھ شیئر کیے جائیں۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن نے اہم کردارادا کرنا ہے، ملکی معیشت و سلامتی کو خطرات ہیں مہنگائی، بے روزگاری، لاقانونیت، امن و امان بد حال ہو رہا ہے، ہمارے پانچ سالوں میں ابھرتے ہوئے پاکستان کی بنیاد رکھی گئی، سٹاک مارکیٹ ایشیا کی کمزور ترین مارکیٹ بن چکی ہے۔ پاکستان کی معیشت جو ایمرجنگ معیشت بنی تھی آج وہ خیراتی اکانومی بن چکی ہے، عمران خان بیرون ملک خیرات مانگنے جاتے ہیں۔ ملک کی معیشت تباہی کی طرف بڑھ رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان واحد اسلامی ایٹمی طاقت، کشمیر پر اجلاس منعقد نہیں کر پا رہا، کشمیر کے اندر عوام بھارتی فوج کی گولیوں کا نشانہ بن رہے ہیں، وزیراعظم ایران اورسعودی عرب جا رہے ہیں، وزیراعظم بہانے سے بیرون ملک دورے کر رہے ہیں۔

Facebook Comments
Share Button