تازہ ترین

Marquee xml rss feed

من� کی بجائے ناکمیں دانت نکل آیا ی� انوکھا واقع� چین میں پیش آیا ج�اں آپریشن کرکے ناک سے دانت کو نکال دیاگیا-سپیشل ایجنٹ بلی جو ساتھیوں کو �رار کروانے میں ما�ر �ے 6سال� بلی راستے میں آنے والی �ر رکاوٹ کو آسانی سے پار کر جاتی-آپ کے �نگر پرنٹ اب منشیات سے متعلق بھی بتائیں گے منشیات کی روک تھام کے لیے سائنسدانوں نے نیا �ارمولا ایجاد کرلیا-پیٹرول کی قیمت میں اضا�ے کے خلا� احتجاج میں40 لوگ جاں بحق ایران میں احتجاج کی صورت حال دن ب� دن بگڑتی جا ر�ی �ے-ٹک ٹاک نے امریک� کو چاروں شانے چت کر ڈالا تحقیقاتی کمپنی نے ٹک ٹاک پر امریک� کے الزامات کو بے بنیاد قرار دے دیا-ب�ادر شخص نے مگرمچھ کو اندھا کر کے خود کو موت کے من� سے نکال لیا آخری لمحے تک مگرمچھ کامقابل� کر کے زندگی جیتنے والے شخص نے ب�ادری کی مثال قائم کر دی-موٹروے پر بس حادثے کا شکار �و گئی 3 خواتین جاں بحق ،10ا�راد زخمی

GB News

مقبوضہ کشمیر، بلدیاتی انتخابات کا بھارتی ڈھونگ بری طرح ناکام

Share Button

بھارت کا عالمی برادری کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کیلئے مقبوضہ کشمیر میں رچایا گیا بلدیاتی انتخابات کا ڈھونگ ناکام ہو گیا، مودی سرکار نے وادی میں بلاک ڈویلپمنٹ کونسل کے چیئرمین کے انتخابات کے نام پر ڈرامہ رچایا جسے کشمیری عوام نے مسترد کر دیا، نیشنل کانفرنس ، پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی اور پیپلز کانفرنس نے انتخابات کا بائیکاٹ کیا، بھارتی حکومت نے مقبوضہ کشمیر میں سب کچھ معمول کے مطابق دکھانے کیلئے یہ ڈھونگ رچایا تھا، ادھر بھارت کی اعلیٰ عدلیہ نے مودی سرکار سے جواب طلب کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت مقبوضہ کشمیر میں کتنے دن پابندیاں برقرار رکھنا چاہتے ہیں،اب تو 2ماہ سے زائد عرصہ ہو چلا ہے،آپ قومی مفاد میں پابندیاں عائد کرسکتے ہیں لیکن پھر بھی اس پر نظرثانی کی جانی چاہئے، اعلیٰ عدلیہ کے اس سوال کا جواب دیتے ہوئے سالیسیٹر جنرل ٹشر مہتا نےکہاکہ وادی میں پابندیوں کا وقتاََفوقتاََ جائزہ لیا جا رہا ہے ،مقبوضہ کشمیر میں آج 99فیصد علاقوں میں کوئی پابندی نہیں ماسوائے چند جگہوں کے جہاں پر امن و امان کا مسئلہ ہے،عدالت نے کیس کی شنوائی 5نومبر تک موخر کردی۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق مقبوضہ جموں وکشمیر میں آرٹیکل 370 کو ختم کرنے کے بعد اگست کے پہلے ہفتے میں نافذ کی جانے والی تمام پابندیوں کو ختم کرنے کے لئے بھارتی عدالت عظمیٰ نے جمعرات کو حکومت سے جوابات طلب کئے ۔رپورٹ کے مطابق جسٹس این وی رمنا کی سربراہی میں تین ججوں کے بنچ نے درخواستوں پر سماعت کے دوران حکومت سے پوچھاکہ آپ کتنے دن پابندی چاہتے ہیں؟ اب تو 2 مہینے ہوچکے ہیں۔اس کے جواب میں سالیسیٹر جنرل ٹشر مہتا نے عدالت کو بتایا کہ وادی میں پابندیوں کا وقتا فوقتا جائزہ لیا جاتا ہے۔ آج 99فیصد علاقوں میں کوئی پابندی نہیں سوائے ایک دو جگہ کے جہاں پر امن و امان کا مسئلہ ہے۔عدالت نے کیس5 نومبر کے لئے موخر کردیا۔پینل کے ایک اور جج جسٹس سبھاش ریڈی نے مزید کہاآپ قومی مفاد میں پابندیاں عائد کرسکتے ہیں لیکن پھر بھی اس پر نظرثانی کی جانی چاہئے۔ دوسری جانب مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کا مزدوروں سے زبردستی بیگار لئے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔جہاں مزدور ایک طرح سے جبری مشقت کی دلدل میں دھنسے ہوئے ہیں، اورانہیں بیشتر اوقات اجرت بھی نہیں دی جاتی۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق ایک صبح فیکٹری مالک کو کام کرنے کے لئے جاتے ہوئے بھارتی فوج نے ضلع پلوامہ کے لاسی پورہ میں واقع انڈسٹریل اسٹیٹ کے اندر روکا اور ایک ہتھوڑا تھما کر کریکنگ لگانے کا حکم دیا۔فیکٹری کے مالک نے اپنی شناخت خفیہ رکھنے کی شرط پر بتایاکہ ریاست کے سب سے بڑے صنعتی اسٹیٹ کے اندر ہندوستان پٹرولیم کے ایک یونٹ میں 44 راشٹریہ رائفلز کے ایک چھوٹے سے فوجی کیمپ کو اپ گریڈ کرنے کے لئے فوج نے میرے سمیت ہر راہگیر کو بیگار کے لئے کیمپ میں گھسیٹ لیا۔ کیمپ کے اندر میں نے 20 سے 30 افراد دیکھے جو ایسے ہی وہاں لائے گئے تھے ۔میں نے التجا کی کہ میں فیکٹری کا مالک ہوں ۔ اس لئے مزدوری کرنا میرے لئے مشکل ہے لیکن انہوں نے مجھ سے دوسرے لوگوں سے دوگنا کام لیا ۔ترکوانگن گاﺅں میں فیکٹری مالکان ، ملازمین اور رہائشیوں نے الزام لگایا کہ بہت سے لوگوں کو آرمی کیمپ میں بیگار کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ فوج آس پاس کے علاقے کے لوگوں کو گھسیٹ کر یونٹ میں لے جاکر گھنٹوں کام کرواتی ہے۔کچھ لوگوں نے بتایا کہ انہیں کچھ چاول اور تیل مزدوری کے طور پر دیا گیا تھا۔خبر رساں ادارے کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اور لاک ڈاﺅن کی وجہ سے کشمیری گھروں میں قید ہیں، نظام زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا ہے۔ بھارت سب کچھ نارمل ہونے کا پروپیگنڈا کر رہا ہے لیکن مقبوضہ وادی میں سکول کالج، کاروباری مراکز اور ٹرانسپورٹ بند ہے۔کشمیری عوام کو خوراک اور ادویات کی قلت کا سامنا ہے۔

Facebook Comments
Share Button