تازہ ترین

Marquee xml rss feed

من� کی بجائے ناکمیں دانت نکل آیا ی� انوکھا واقع� چین میں پیش آیا ج�اں آپریشن کرکے ناک سے دانت کو نکال دیاگیا-سپیشل ایجنٹ بلی جو ساتھیوں کو �رار کروانے میں ما�ر �ے 6سال� بلی راستے میں آنے والی �ر رکاوٹ کو آسانی سے پار کر جاتی-آپ کے �نگر پرنٹ اب منشیات سے متعلق بھی بتائیں گے منشیات کی روک تھام کے لیے سائنسدانوں نے نیا �ارمولا ایجاد کرلیا-پیٹرول کی قیمت میں اضا�ے کے خلا� احتجاج میں40 لوگ جاں بحق ایران میں احتجاج کی صورت حال دن ب� دن بگڑتی جا ر�ی �ے-ٹک ٹاک نے امریک� کو چاروں شانے چت کر ڈالا تحقیقاتی کمپنی نے ٹک ٹاک پر امریک� کے الزامات کو بے بنیاد قرار دے دیا-ب�ادر شخص نے مگرمچھ کو اندھا کر کے خود کو موت کے من� سے نکال لیا آخری لمحے تک مگرمچھ کامقابل� کر کے زندگی جیتنے والے شخص نے ب�ادری کی مثال قائم کر دی-موٹروے پر بس حادثے کا شکار �و گئی 3 خواتین جاں بحق ،10ا�راد زخمی

GB News

پاکستان نے ایف اے ٹی ایف کے 17نکات پر عملدرآمد کرلیا، حماد اظہر

Share Button

قو می اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کو آ گاہ کیاگیا ہے کہ پاکستان ایف اے ٹی ایف کے اب تک 17 پر نکات عمل درآمد کرلیا ہے ، پاکستان 7 جنوری کو حتمی رپورٹ پیش کرے گا، ایف اے ٹی ایف فروری 2020 میں پاکستان کے بارے میں فیصلہ کرے گا، پاکستان سے بیرون ملک پیسہ غیر قانونی طریقے سے منتقل نہیں گیا، 2018 سے قبل کوئی بھی شخص ڈالر خرید کر باہر بھیج سکتا تھا، بیرون ملک رقم کی منتقلی کو روکنے کے لئے قانون سازی کی ضرورت ہے،متحدہ عرب امارات اور ملائیشیا نے پاکستانیوں کے اثاثہ جات کے حوالے سے ڈیٹا فراہم کرنے سے انکار کردیا ہے، متحدہ عرب امارات کے حکام اقامہ ہولڈر کو اپنا شہری کہتے ہیں اور ڈیٹا نہیں فراہم کرتے، او ای سی ڈی نے تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے، اوای سی ڈی کنونشن تحت 1ملین ڈالر تک کے بیرون ملک اثاثہ جات رکھنے والے 325 کیس مو صول ہوئے، جس میں سے 191 لوگوں نے ایمنسٹی لے لی تھی، ان کیسز میں 4 ارب کا ٹیکس عائد کیا گیا جس میں سے صرف 1ارب وصول ہوا ، ایمنسٹی سکیموں کے بعد ڈیٹا کے مطابق45 ممالک سے 1ہزار سے زائد کیسز سامنے آئے جن میں سے 319کیسوں کو ایف بی آر کے کمشنرز کو کاروائی کے لئے بھیج دیا گیا ہے، ان خیالات کا اظہار وزیر اقتصادی امور حماد اظہر، چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی اور ایف بی آر نے کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کیا جبکہ چیئرمین کمیٹی اسد عمر نے کہا کہ 5.5 ارب ڈالر کی رقم کی منی لانڈرنگ ہوئی اور بیرون ملک منتقل ہوئی، صرف 1 ارب ریکور ہوا، اشرافیہ کی جانب سے اس طریقہ سے معیشت پر قبضہ کیا ہواہے، ایف بی آر کی کارکردگی ڈیٹا موصول ہونے کے بعد کاروائی کے حوالے سے کارکردگی تسلی بخش نہیں۔جمعرات کو قو می اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس کمیٹی چیئر مین اسد عمر کی صدارت میں ہوا، وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور حماد اظہر نے کہاکہ پاکستان دو بار ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ میں رہ چکا ہے، پاکستان میں فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کا سیکریٹریٹ بنا رہا ہے، پاکستان 27 ایکشن پراقدامات پر کر رہا ہے، ایف اے ٹی ایف مشکوک ٹرانزیکشن پر عمل درآمد مزید موثر مانگتا ہے، پاکستان کو فروری 2018 میں آئی سی آر جے کا پلان دیا گیا ہے،یہ 27 نکاتی ایکشن پلان ہے، جب ہم حکومت میں آئے 22 نکات پر عمل درآمد نہیں ہوا تھا ،حکومت نے اب تک 17 پر نکات عمل درآمد کرلیا ہے ،پاکستان 7 جنوری کو حتمی رپورٹ پیش کرے گا، ایف اے ٹی ایف فروری 2020 میں پاکستان کے بارے میں فیصلہ کرے گا، آئی سی آر جے کا ایکشن پلان اگلے سال مکمل کرنا چاہتے ہیں، ٹیکنیکل کنسلٹنٹ تعینات کردیے گئے ہیں ،آئی ایم ایف , اے ڈی بی اور ورلڈ بینک معاونت کررہے ہیں،موجودہ ایکشن پلان زیادہ سخت ہے،آئی سی آر جے کا ایکشن پلان زیادہ چیلنجنگ ہے،اس ایکشن پلان پر زیادہ کام ہونیوالا ہے ، اسد عمر نے کہاکہ ایف اے ٹی ایف میں پاکستان کی جانچ پڑتال میں سیاسی عنصر نظر آتا ہے،2010 میں پاکستان بلیک لسٹ میں تھا، پاکستان ابھی گرے لسٹ میں ہے، پھر بلیک لسٹ کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے،ہمسایہ ملک افعانستان بلیک لسٹ میں شامل نہیں ہے۔چیئرمین ایف بی آرشبر زیدی نے کمیٹی بریفنگ دیتے ہوئے بتایاکہ بیرون ملک پیسہ غیر قانونی طریقے سے نہیں گیا، 2018 سے قبل کوئی بھی شخص ڈالر خرید کر باہر بھیج سکتا تھا،پاکستان سے باہر پیسہ قانونی طریقے سے گیا،قومی شناختی کارڈ کی شرط برقرار ہے، تاہم اس پر فی الحال عمل درآمد نہیں ہوگا، ٹرن اوور پر ٹیکس کی کم سے کم شرح 1.5 فیصد سے کم کرکے 0.5 فیصد کی گئی ہے،پاکستان سے باہر جائیدادوں سے ایک ارب روپے کا ٹیکس ملا، کل چار ارب روپے کا ٹیکس منظر عام پہ آیا۔متحدہ عرب امارات سے ڈیٹا موصول ہونے میں مشکلات کا شکار ہیں، ہمارے لئے سنگین مسئلہ ہے، وہ ڈیٹا نہیں دے رہے، وہ اقامہ ہولڈر کو اپنا شہری کہتے ہیں اور ڈیٹا نہیں فراہم کرتے، او سی ڈی کو کہا ہے وہ ہمیں سپورٹ نہیں کر رہے۔ ملائشیا کی حکومت نے بھی ملائشیا کو اپنا دوسراگھر ڈیکلئیر کرنے والوں کا ڈیٹا فراہم کرنے سے انکار کیا ہے۔ چیئرمین کمیٹی اسد عمر نے کہا کہ 5.5 ارب ڈالر کی رقم کی منی لانڈرنگ ہوئی اور بیرون ملک منتقل ہوئی، صرف 3 ارب ریکور ہوئے۔ اشرافیہ کے سامنے ادارے بے بس ہیں۔ اشرافیہ کی جانب سے اس طریقہ سے معیشت پر قبضہ کیا ہواہے، اب ایف بی آر کے پاس ڈیٹا آگیاہے، ایف بی آر کے پاس اب کوئی بہانہ نہیں ہے۔ ایف بی آر کی کارکردگی ڈیٹا موصول ہونے کے بعد کارکردگی تسلی بخش نہیں ، علی پرویزملک نے کہاکہ دنوں سکیموں سے 4 ارب ٹیکس وصول ہوئے۔ عائشہ غوث پاشا نے کہا کے ٹیکس نظام میں خامیاں درست کرنے کی ضرورت ہے۔

Facebook Comments
Share Button