تازہ ترین

Marquee xml rss feed

من� کی بجائے ناکمیں دانت نکل آیا ی� انوکھا واقع� چین میں پیش آیا ج�اں آپریشن کرکے ناک سے دانت کو نکال دیاگیا-سپیشل ایجنٹ بلی جو ساتھیوں کو �رار کروانے میں ما�ر �ے 6سال� بلی راستے میں آنے والی �ر رکاوٹ کو آسانی سے پار کر جاتی-آپ کے �نگر پرنٹ اب منشیات سے متعلق بھی بتائیں گے منشیات کی روک تھام کے لیے سائنسدانوں نے نیا �ارمولا ایجاد کرلیا-پیٹرول کی قیمت میں اضا�ے کے خلا� احتجاج میں40 لوگ جاں بحق ایران میں احتجاج کی صورت حال دن ب� دن بگڑتی جا ر�ی �ے-ٹک ٹاک نے امریک� کو چاروں شانے چت کر ڈالا تحقیقاتی کمپنی نے ٹک ٹاک پر امریک� کے الزامات کو بے بنیاد قرار دے دیا-ب�ادر شخص نے مگرمچھ کو اندھا کر کے خود کو موت کے من� سے نکال لیا آخری لمحے تک مگرمچھ کامقابل� کر کے زندگی جیتنے والے شخص نے ب�ادری کی مثال قائم کر دی-موٹروے پر بس حادثے کا شکار �و گئی 3 خواتین جاں بحق ،10ا�راد زخمی

GB News

آئینی حقوق، معاملے کا حل نکلنا چاہئے، سپریم کورٹ

Share Button

سپریم کورٹ نے گلگت بلتستان کے آئینی حقوق کیس میں وفاقی حکومت کو معاملے کا حل نکالنے کے لئے مہلت دے دی ہے دوران سماعت قائم مقام چیف جسٹس گلزاراحمد نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ معاملہ حل ہونا چاہئے،عدالت نے فیصلہ دینا تھا جودے دیا اب معاملہ حکومت کے سپرد ہے،تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت سے متعلق وفاقی حکومت کی نظر ثانی اپیل پر سماعت ہوئی قائم مقام چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں سات رکنی لارجر بینچ نے سماعت کی، لاجر بینچ میں جسٹس مشیر عالم، جسٹس عمر عطا بندیال، جسٹس فیصل عرب،جسٹس اعجاز الحسن، جسٹس مظہر عالم خان میاں خیل اور جسٹس منیب اختر شامل تھے۔ایڈیشنل اٹارنی جنرل ساجدہ الیاس بھٹی نے عدالت کو بتایا کہ گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت سے متعلق معاملہ قومی سلامتی کمیٹی میں زیر بحث ہے اسلئے وفاقی حکومت کو غور و فکر کیلئے مزید وقت درکار ہے، جس پر قائم مقام چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دئے کہ ہم نے فیصلہ دینا تھا جو دے دیا اب معاملہ حکومت کے سپرد ہے، دوران سماعت قائم مقام چیف جسٹس نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کو معلوم ہے حالات اچھے نہیں ہیں اور آپ نے بھی دیکھ لیا کیا ہوا، کہیں ایسا نہ ہو کوئی اور حالات پیدا ہوں،حکومت کو سوچنا چاہیے کہ معاملے کو حل کیسے کرنا ہے، بات چیت ہونی چاہیے اور معاملہ کا حل نکلنا چاہیے کیونکہ اب صورتحال تبدیل ہوچکی ہے، دوران سماعت وائس چیئرمین گلگت بلتستان بار کونسل لطیف شاہ نے عدالت سے استدعا کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے بھی مقدمے میں فریق بننے کی درخواست دائر کر رکھی ہے، جس پر قائم مقام چیف جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ آپ کی درخواست کو بعد میں دیکھیں گے، عدالت نے اپنے حکم میں کہا کہ وفاقی حکومت کی طرف سے وقت مانگا گیا ہے. وفاقی حکومت کا موقف ہے کہ معاملہ پر سوچ بچار کا عمل جاری ہے، موجودہ حالات کے پیش نظر وقت کا تعین نہیں کررہے،بعدازاں عدالت نے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردی۔

Facebook Comments
Share Button