تازہ ترین

GB News

پاکستان، چین نے سی پیک پر امریکی الزامات مسترد کردیئے

Share Button

چین کے پاکستان میں سفیریاﺅ جنگ نے امریکہ کی جنوبی ایشیا ءکے لئے قائم مقام نائب وزیر خارجہ ایلس ویلز کی سی پیک پر کرپشن اور ڈیٹ ٹریب سمیت دیگر الزامات کی سختی سے تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ سی پیک پاکستان اور چین کی حکومتوں کے تعاون سے چلنے والا منصوبہ ہے، سی پیک پر ڈیٹ ٹریپ کا الزام غلط ہے ،سی پیک میڈیا فورم سے خطاب کرتے ہوئے انھو ںنے کہا کہ چین پاکستان کی امداد سے بڑھ کر تجارت کی ترقی میں مدد کا خواہاں ہے،سی پیک کے حوالے سے چیئرمین نیب، حکومت اور اداروں سے بات چیت کی ہے،اب تک کرپشن کا ایک ثبوت بھی نہیں ملا، سی پیک کرپشن سے پاک منصوبہ ہے،امریکی نائب وزیرخارجہ سی پیک پر تبصرہ کرنے سے پہلے احتیاط سے کام لیں اور جھوٹے الزامات نہ لگائیں، اگر ان کے پاس سی پیک میں کرپشن کے ثبوت ہیں تو وہ ثبوت فراہم کریں،سی پیک ان کا مسئلہ اور درد سر نہیں ہونا چاہیے اور محض میڈیا رپورٹس پر الزامات نہ لگائیں، امریکہ اگر پاکستان میں سرمایہ کاری کرے گا تو یہ دیکھ کر خوشی ہو گی،جب امریکہ سرمایہ کاری کے حوالے سے کوئی قابل قبول ماڈل فراہم نہیں کر سکتا تو اس کو سی پیک کے معاملے سے بھی دور رہنا چاہیے،پاکستان مستقبل میں سی پیک منصوبوں سے مزید بڑے فوائد حاصل کرے گا ، سینیٹر مشاہد حسین سید نے کہا کہ بعض قوتیں سی پیک کے حوالے سے پاکستان اور چین کے درمیان دوستی میں دراڑ ڈالنا چاہتی ہیں اور سی پیک کو کامیاب نہیں دیکھنا چاہتیں، سی پیک پر آج تک ایک دھیلے کی کرپشن ثابت نہیں ہوئی ،پاکستان کے کل قرضے میں سے 91فیصد قرضے کا تعلق مغربی ممالک اور مالیاتی اداروں سے ہے،چین نے ہر مشکل وقت میں پاکستان کا ساتھ دیا ہے اور بغیر کسی سیاسی شرط اور دباﺅ کے پاکستان کی مدد کی ہے،،امریکی نائب وزیرخارجہ ایلس ویلزنے ایک بار پھر سی پیک کو ڈیٹ ٹریپ کہاہے اور اس کے خلاف پروپیگنڈا کیا ہے اور جھوٹے الزامات لگائے ہیں، انہوں نے اس پر کرپشن کے بھی الزامات لگائے ہیں، سی پیک پر آج تک ایک دھیلے کی کرپشن ثابت نہیں ہوئی ۔سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ سی پیک امن اور پائیدار ترقی کا منصوبہ ہے، اس سے پاکستان سمیت ہمارے ہمسائیہ ممالک پر بھی دیرینہ اثرات مرتب ہوں گے، گوادر سی پیک کا ایک ایک اہم حصہ (ہیرا) ہے، مستقبل میں گوادر دنیا کا جدید ترین پورٹ بنے گا اور گوادر میں جدید سمارٹ سٹی بنایا جائے گا، سی پیک کے تحت پاکستان اور چین کے تعلقات مضبوط معاشی پارٹنر شپ میں تبدیل ہو رہے ہیں۔

Facebook Comments
Share Button