تازہ ترین

GB News

اداروں میں تصادم چاہنے والے ہار گئے، عدالتی فیصلے سے دشمنوں، مافیا کو مایوسی ہوئی، عمران خان

Share Button

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اداروں کے درمیان تصادم سے عدم استحکام لانے والے ہار گئے ، سپریم کورٹ کے فیصلے سے ملک دشمن عناصر اور بیرون ملک میں کوئی دولت رکھنے والوں کو مایوسی ہوئی ہے، تحریک انصاف 23سال پہلے عدلیہ کی آزادی کی بات کرنے والی پہلی جماعت تھی اور عدلیہ آزادی کے لئے جیل بھی گئی۔جمعرات کو وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں 6ماہ کی توسیع پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ آج اداروں کے درمیان ٹکراﺅ کی خواہش رکھنے والوں کےلئے مایوسی کا دن ہے اور ملک دشمن عناصر اور مافیاکو مایوسی ہوئی ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ بیرون ملک بھیجی گئی لوٹی دولت کو محفوظ بنانے کی خواہش رکھنے والوں کو بھی مایوسی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف پہلی جماعت تھی جس نے 23سال پہلے آزاد عدلیہ اور قانون کی حکمرانی کی حمایت کی تھی اور2007میںتحریک انصاف عدلیہ کی آزادی میں سب سے آگے تھی عدلیہ آزادی کی تحریک کے دوران مجھے جیل ہوئی۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کا بے حد احترام کرتا ہوں، جسٹس آصف سعید کھوسہ پاکستان کے عظیم جج ہیں۔دریں اثناءافریقی ممالک کے سفراکی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ملک میں جمہوری کلچر آچکا ۔ ادارے اب ایک دوسرے کا احترام کرتے ہیں۔ اداروں میں ہم آہنگی سے بھار ت خوفزدہ ہے ۔ دھرنے سے ملک کو غیر مستحکم کرنے کی کوششوں میں کشمیر کا مسئلہ پس پشت چلا گیا۔ ملکی ادارے میرٹ پر نہ چلنے کی وجہ سے تباہ ہو ئے جبکہ کرنٹ اکاﺅنٹ خسارہ سب سے بڑا مسئلہ ہے ۔ عمران خان نے کہا ہے کہ کھیلوں کے دوران دنیا بھر میں پاکستانی سفیروں سے ملاقات ہوئی تھی۔ دنیا بھر میں پاکستانی سفیر بہترین مانے جاتے تھے جبکہ 60کی دہائی میں پاکستانیوں میں خود اعتمادی تھی۔ وقت کے ساتھ ساتھ میرٹ کی بالا دستی ختم ہونے سے ادارے کمزور ہوئے ۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ ادوار میں اہم عہدوں پر نااہل عہدوں پر نااہل لوگوں کو تعینات کیا گیا ۔ سیاسی بنیادوں پر تعیناتی کی وجہ سے ادارے تباہ ہوئے ۔ ہماری حکومت نے ملک میں میرٹ کو فروغ دیا ۔ چین نے بھی میرٹ کی پالیسی پر عملدرآمد کر کے ترقی کی جبکہ ہمارے ادارے میرٹ پر نہ چلنے کی وجہ سے تباہ ہوئے ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ جمہوریت میں ہمیشہ میرٹ کی بال دستی ہوتی ہے ۔ جتنا زیادہ میرٹ ہو گا اتنا ہی جمہوریت پروان چڑھے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا سب سے بڑا مسئلہ کرنٹ اکاﺅنٹ خسارہ ہے ۔ مالی خسارے کے باعث روپے کی قدر میں کمی آتی ہے جو مہنگائی کا سبب بنتی ہے ۔ بیرون ملک پاکستانی ہمارا اثاثہ ہیں ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ چین اور ترکی افریقہ میں کام کر رہے ہیں ۔ ہم نے افریقی ممالک کو نظر انداز کیا ہو ا تھا جبکہ اس کانفرنس کا پیغام ہے کہ اب افریقہ پر توجہ دینی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بہت نقصان اٹھایا ۔ امریکہ چاہتا تھا کہ پاکستان کے ذریعے جنگ جیت جائے ۔ اس مقصد کے لئے امریکہ نے پاکستان پر ڈومور کا دباﺅ جاری رکھا ۔ تنازع میں فریق بننے کی بجائے ثالث بننا چاہیے تھا ۔ نئی خارجہ پالیسی کے تحت ہم نے ایران کے ساتھ تعلقات بہتر کر لئے ہیں ۔ عمران خان نے کہا کہ گزشتہ دنوں میں دھرنے سے ملک کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کی گئی بھارتی میڈیا میں دھرنے کو کافی پذیرائی ملی جس کے باعث کشمیر مسئلہ پیچھے چلا گیا۔ دھرنے کو بھارت نے جشن کی طرح استعمال کیا ۔ جبکہ سپریم کورٹ میں آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کی خبروں کو بھی کافی استعمال کیا گیا لیکن خوشی ہے کہ ہم نے ملک کو غٰیرمستحکم ہونے سے بچایا ہے ۔

Facebook Comments
Share Button