تازہ ترین

Marquee xml rss feed

سعودی شا�ی خاندان کے ش�زادے کی خاموشی سے پاکستان آمد ش�زاد� منصور بن محمد بن سعد اپنے و�د کے �مرا� خصوصی طیارے میں سعودی عرب سے ڈی غازی خان ایئر پورٹ پر پ�نچے-صوبے کو دستیاب وسائل سے بھرپور طریقے سے مست�ید �ونے کیلئے منظم میکنزم اور پالیسی پر عمل پیرا �ونے کی ضرورت �ے ،جام کمال خان صوبائی حکومت صوبے کو درپیش معاشی چیلنجز سے ... مزید-ش�بازشری� کی زیر صدارت (ن)لیگ کی مرکزی قیادت کا لندن میں اجلاس ، ملکی سیاسی صورتحال اور پارلیمانی امور پر تبادل� خیال اجلا س میں اسحاق ڈار کی بھی شرکت ، آرمی چی� کی مدت ... مزید-حکومت ملک کو درپیش اقتصادی مسائل کے حل کیلئے ٹھوس کوششیں کرر�ی �ے، مشیر خزان� ڈاکٹر ح�یظ شیخ آئی بی اے سے �ارغ التحصیل طلباء ان خصوصی صلاحیتوں اور اوصا� کی قدر کریں ... مزید-سندھی، پنجابی، پشتون، بلوچ اور م�اجر شناخت �میں روز حشر میں ن�یں بچائیگی،مصط�ی کمال �م مسلمان �یں تو قبر میں رسول ﷺ کے امتی کی حیثیت سے اتارے جائیں گے، مجھے ت�ریق کر ... مزید-و�اقی حکومت کے قرضوں میں ایک سال میں 6�زار 358ارب روپے کا اضا�� ، ملکی قرضی4 �زار 377 ارب روپے بڑھ گئے-روس کا پاکستانی معیشت کی ب�تری میں کردار ادا کرنے کا �یصل�-لندن میں ش�باز شری� کی زیر صدارت لیگی ر�نمائوں کااجلاس آرمی چی� کی مدت اور الیکشن کمیشن آ� پاکستان کے اراکین تعنیات سمیت دیگر پارلیمانی امور پر مشاوت ، اسحاق ڈار بھی ... مزید-سندھی، پنجابی، پشتون، بلوچ اور م�اجر شناخت �میں روز حشر میں ن�یں بچائے گی، مصط�ی کمال مجھے ت�ریق کر ک� ووٹ حاصل ن�یں کرنا۔ ب�تر �ے اپنے دلوں سے تعصب اور لسانیت کو ختم ... مزید-ش�ر قائد کے �نڈ کراچی کو ن�یں مل ر�ے، اکیلا سندھ حکومت سے لڑ ر�ا �وں، عمران خان سے 3 ملاقاتوں کا بھی کوئی نتیج� ن�یں نکلا، میئر کراچی

GB News

مخالفین جانتے ہیں حکومت کامیاب ہوئی تو ان کا پیسہ پکڑا جائے گا، وزیراعظم

Share Button

لاہو(آئی این پی) وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ مخالفین جانتے ہیں حکومت کامیاب ہوئی تو ان کا پیسہ پکڑا جائے گا،30سال سے حلوہ کھانیو الی ملکی مافیاز کو اپنی فکر پڑ گئی ہے کہ ہم کامیاب ہو گئے تو اپوزیشن کی دکانیں بنداور سیاست ختم ہو جائے گی،وزیراعلی پنجاب شریف آدمی ہیں،سب ان کے پیچھے پڑے ہوئے ہیں، ہم نے تین ماہ محنت کی، بہترین ٹیم پنجاب میں لیکر آئے ہیں، صوبے میں بہت بڑی تبدیلی آئے گی، پرانے اور نئے پنجاب میں آپ کو فرق نظر آئے گا، ورلڈ بینک کے صدر نے پاکستانی معیشت کی تعریف کی ہے، مجھے اپنی ٹیم پر فخر ہے، فضل الرحمن دھرنے کے نام پر اسلام آباد فتح کرنے آئے تھے، کسی کو پتہ نہیں تھا کہ دھرنے میں کیوں آئے ہیں، مافیاز میں تیس سال سے لوگ حلوے کھا رہے ہیں،جب کیس عدالت میں گیا تو لوگ کہنے لگے اب یہ لوگ فارغ ہو گئے،پنجاب میں اصلاحات سب سے زیادہ ہوئی ہیں، کسی ایونٹ کے دوران سب کو چیلنج کر سکتے ہیں اور بتا سکتے ہیں کہ ہم نے کیا کیا۔ہفتہ کو یہاںایوان وزیر اعلیٰ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ماحولیاتی آلودگی سے شہریوں کی زندگی پر اثر پڑ رہا ہے، بچوں کی صحت پر برا اثر پڑا ہے، پشاور اور لاہور میں سموگ سے بہت مسائل ہیں، اس معاملے پرتمام ماضی میں توجہ نہیں دی گئی، بھارت میں دھان کی فصل جلانے کی وجہ سے بھی لاہور میں سموگ بڑھتی ہے۔ لاہور میں 10 سال میں 70 فیصد درخت کم ہوئے۔انہوں نے کہا کہ بیرون ممالک سے صاف تیل برآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے، تین سال میں ٹیکنالوجی بھی لائیں گے، 4یورو پٹرول درآمد کرینگے، 2020 میں آخر تک پٹرول 5 یورو پر منتقل کرینگے،تین سال میں کوالٹی بہتر نہ کی تو آئل ریفائنریز بند کر دینگے،گاڑیوں کا دھواں بھی فضا کو آلودہ کرتا ہے، بسیں ہائبرڈ پر لیکرجائیں گے، بجلی پر بھی بس چلیں گی۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ لاہور میں 60 ہزار کنال جگہ پر جنگلات لگائیں گے، جگہ کا تعین کر لیا گیا ہے، ماحولیاتی آلودگی پر قابو پانے میں مدد ملے گی، اس کے اثرات لانگ ٹرم ہونگے، ورلڈ بینک کے صدر نے پاکستانی معیشت کی تعریف کی ہے، مجھے اپنی ٹیم پر فخر ہے، ملکی مافیاز کو اپنی فکر پڑ گئی ہے کہ ہم کامیاب ہو گئے تو اپوزیشن کی سیاست ختم ہو جائے گی، ہزاروں اربوں کا قرضہ چھوڑ کر یہ لوگ گئے۔ مشکل وقت سے ملک باہر نکل آیا ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ فضل الرحمن دھرنے کے نام پر اسلام آباد اورڈیزل کے پرمٹ فتح کرنے آئے تھے، کسی کو پتہ نہیں تھا کہ دھرنے میں کیوں آئے ہیں۔ پانی آتا ہے جیسے لوگ دھرنے میں آئے تھے۔،صوبے میں تقرر و تبادلے کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ اس کے لیے ہم نے تین ماہ محنت کی، بہترین ٹیم پنجاب میں لیکر آئے ہیں، صوبے میں بہت بڑی تبدیلی آئے گی، پرانے اور نئے پنجاب میں آپ کو فرق نظر آئے گا،سابق وزیراعظم نواز شریف کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں عمران خان کا کہنا تھا کہ پنجاب میں بڑے بڑے ڈاکٹرز تھے جن کا بورڈ بیٹھا تھا، اس بورڈز نے رپورٹ دی جو ہم نے تفصیل سے پڑی اس میں لکھا تھا کہ مریض کسی بھی وقت انتقال کر سکتا ہے۔ اس کو دیکھتے ہوئے ہم نے انسانی ہمدردی پر نواز شریف کو بیرون ملک جانے دیا گیا،اب سب کچھ سامنے آ جائے گا، عدالت نے بھی دو ہفتے کے اندر رپورٹ مانگی ہوئی ہیں، کچھ چھپنے والا نہیں، سب کچھ کلیئر ہو جائے گا۔اس سے قبل وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کیساتھ ملاقات کے دوران وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ملک ایک نازک دور سے گزر رہا ہے، نئے پاکستان میں پرانے مائنڈ سیٹ کو تبدیل کرنا ہے، عوامی خدمت کو فوکس کیا جائے گا، پنجاب میں امن وامان اور گورننس کے نظام میں بہتری لانے کی ضرورت ہے۔ وزیراعظم عمران خان سے چیف سیکرٹری اورآئی جی پنجاب نے بھی ملاقات کی۔وزیراعظم نے کہا کہ عوام کے بنیادی مسائل حل کرنے پر ترجیح دی جائے، سفارشی اور کرپٹ کلچر کاخاتمہ کیا جائے گا، سائلین کو عزت دی جائے اور ان کے مطالبات فوری حل کریں، ملاقات کے دوران آئی جی پنجاب نے وزیراعظم عمران خان کو پولیس رویے میں بہتری کیلئے وژن اور صوبے میں امن و امان کی بہتری کیلئے اقدامات سے بھی آگاہ کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ عوام کی جان و مال کے تحفظ کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں، وزیراعظم عمران خان نے تھانہ کلچر کی تبدیلی کیلئے سفارشات کو حتمی شکل دینے کی ہدایت کی، وزیراعظم عمران خان نے آئی جی اور چیف سیکرٹری کو دبائو سے بالاتر ہو کر کام کرنے کی بھی ہدایت کی۔ بعدازاں ان کی زیر صدارت پنجاب کی بیوروکریسی و پولیس افسران کا ہوا جس میں وزیر اعظم عمران خان نے نئی تعیناتیوں پر افسران کو مبارکباد دی۔وزیر اعظم نے پنجاب میں تھانہ کلچر کی تبدیلی کے لئے سفارشات کو حتمی شکل دینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ عوام کی جان ومال کے تحفظ کے لیے تمام وسائل کو بروئے کار لایا جائے، 1960 کی دہائی میں پاکستان کی گورننس، بیوروکریسی اور پالیسیوں کی مثالیں دی جاتی تھیں، ہم نے افسران کو ہر قسم کے سیاسی دبا سے آزاد کیا ہے، اسی لیے بیوروکریسی اور دیگر عہدوں پر تعیناتیاں میرٹ پر کی ہیں، افسر کا کام کمزور کو طاقتور کے خلاف تحفظ فراہم کرنا ہے، افسران کو کسی سیاسی شخصیت کا کوئی بھی ناجائز کام ہرگز نہیں کرنا۔عمران خان نے کہا کہ ہمیں نئے پاکستان میں پرانی سوچ کو تبدیل کرنا ہے، نئے پاکستان میں اب پرانا نظام نہیں چل سکتا، پنجاب میں امن وامان اور گورننس کے نظام میں بہتری لانے کی ضرورت ہے، افسران بچوں کے خلاف جرائم کی روک تھام پر خصوص توجہ دیں، ہم افسران کی مدت ملازمت کو تحفظ فراہم کریں گے، غریب آدمی کی زندگی میں بہتری لانے کے لیے کوشش کریں گے۔وزیراعظم نے مزید کہا کہ پاکستان نازک دور سے گزر رہا ہے جس کے لیے معاشی استحکام ضروری ہے، معیشت کے استحکام پر معاشی ٹیم کو مبارکباد دیتا ہوں، معاشی ترقی کے لیے قابل بیوروکریسی کا بہت اہم کردار ہے۔

Facebook Comments
Share Button