تازہ ترین

GB News

گلگت بلتستان : شدید برفباری کے باعث بلاک ہونے والی سڑکیں5روزگزرنے کے باوجودبحال نہیں کی جاسکیں

Share Button

سکردو،استور،ہنزہ(نمائندگان)گلگت بلتستان میں شدید برفباری کے باعث بلاک ہونے والی سڑکیں5روزگزرنے کے باوجودبحال نہیں کی جاسکیں۔ سٹرکیں بلاک ہونے کے باعث متعدداضلاع کادوسرے شہروں سے زمینی رابطہ منقطع ہوکر رہ گیا ہے۔سکردو اور استور
روڈ لینڈسلائیڈنگ اوربرفانی تودے گرنے کے باعث کئی مقامات پربلاک ہیں جس کے باعث سینکڑوں مسافرپچھلے5دنوں سے موسم کے رحم وکرم پرہیں۔لینڈسلائیڈنگ اوربرفانی تودے گرنے کے باعث سٹرکیں کئی مقامات پربلاک ہیں۔سکردوروڈ بندہونے کی وجہ سے سینکڑوں گاڑیاں پھنسی ہوئی ہیں جن میں موجود مسافروں کوسخت مسائل ومشکلات کاسامنا ہے۔عمررسیدہ افرادخواتین اوربچوں کوسردی کے باعث مسائل درپیش ہیں اورکھانے پینے کی اشیاء مہنگی ہونے کی وجہ سے مسافروں کومالی مشکلات کابھی سامنا ہے۔پانچ روز سے سٹرک بندہونے سے بلتستان کے تمام4اضلاع میںتازہ پھل اور سبزیاں بھی نہیں پہنچ رہی ہیں۔ استور ویلی روڈ لینڈ سلائیڈنگ اور برفانی تودہ گرنے سے گزشتہ تین دن سے بلاک ہے دوسری جانب استور کے ضلعی ہیڈ کواٹر عیدگاہ اور گوریکوٹ کے درمیان بولن کے مقام پر برفانی تودہ گرنے سے رابط سڑک بند ہوچکی ہے اور بالائی علاقوں کی رابطہ سڑکیں گزشتہ ایک مہینے سے بند ہونے کے باعث بالائی علاقوں کی عوام شدید مشکلات کا سامنا ہے گزاشتہ چار دنوں سے جاری برفباری کے باعث استور بھر میں درجنوں مکانات تباہ ہوئے اور سینکڑوں مال مویشی ہلاک ہوئے ہیں بالائی علاقوں میں بجلی اور ٹیلی موصلاتی نظام کی بندش سے علاقے کے عوام دنیا سے کٹ کے رہے گئے ہیں علاقے میں کھانے پینے کی اشیاء اوردیگر ضروریات زندگی کی قلت کا سامنا ہے لوگ شدید برفباری کے باعث اپنے گھروں میں محصور ہوکے رہ گئے شدید برفباری اور سردی کے باعث لوگوں مختلف بیماریوں میں بھی اضافہ ہوچکا ہے۔ادھرہنزہ نگرکے بالائی اور میدانی علاقوں کی رابطہ سٹرکیں بھی بحال نہ ہو سکیں جس سے گلگت ہنزہ اور نگر کے درمیان چلنے والی ٹرانسپورٹروں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

Facebook Comments
Share Button