تازہ ترین

GB News

تحریک انصاف کی صوبائی قیادت آرڈر دو ہزار بیس پر اپنی پوزیشن واضح کرے، جاوید حسین

Share Button

پاکستان پیپلز پارٹی کے رکن اسمبلی جاوید حسین نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کی حیثیت کے حوالے سے پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی قیادت اپنا موقف واضح کرے اور وضاحت دے کہ وہ لوگ آرڈر لارہے ہیں یا عبوری آئینی صوبہ بنا رہے ہیں اب تک جو خاموشی پی ٹی آئی کی صوبائی قیادت کی سامنے آرہی ہے وہ لمحہ فکریہ ہے پی ٹی آئی کے قائدین نے حقوق نہ ملنے پر وفاقی وزیروں کا گلگت بلتستان میں داخلہ بند کرنے کی دھمکیاں دی تھیں ہمارے کلیک اکلوتے پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی راجہ جہانزیب نے آرڈر کے خلاف بیساکھی لیکر اسمبلی فلور پر احتجاج کیا تھا اب ان کو سانپ کیوں سونگھ گیا ہے؟ کے پی این سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت نے آرڈر لانے کی کوشش کی تو اس کا شدید رد عمل کا سامنا کرنا پڑے گا کیونکہ انہوں نے عوام کو حقوق کے نام پر دھوکے میں رکھا اور اب آرڈر 2020 کے حوالے سے مکمل خاموش ہیں ہم نے پہلے بھی آرڈر کو تسلیم نہیں کیا تھا اور آئندہ بھی تسلیم نہیں کرینگے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی آرڈر کے حوالے سے فوری طور پر اپنا موقف پیش کرے وفاق میں ان کی حکومت آنے کے بعد خاموشی سے اب یہ مسئلہ حل نہیں ہوگا آرڈر نافذ کرنے کی صورت میں پی پی پی سخت رد عمل دے گی اور گلگت بلتستان کے عوام بھی آرڈر کو مسترد کرینگے۔ انہوں نے کہا کہ سرتاج عزیز کی سربراہی میں بننے والی کمیٹی کی سفارشات میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبہ بنانے سے مسئلہ کشمیر کو کوئی نقصان نہیں پہنچتا ہے تو اب کس بات کا انتظار ہے اور پی ٹی آئی کی حکومت اس بات کی وضاحت کرے کہ وہ آرڈر دینے جا رہی ہے یا ایکٹ آف پارلیمنٹ کے تحت سیٹ اپ دے رہی ہے ؟ انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی 2020 کے انتخابات میں کلین سویپ کرے گی کیونکہ پی پی پی ہی عوامی ملکیت کا تحفظ کرتی ہے اور اب تک عوام کے مسائل کو لیکر کام کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب مودی نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کی تھی اسی وقت مودی کو جواب دینے کے لئے حکومت پاکستان گلگت بلتستان کو اپنے سینے سے لگاتے تاکہ اس سے مودی کو جواب ملتا۔ انہوں نے کہا کہ اب ہم کسی بھی قسم کے آرڈر کو تسلیم نہیں کرتے ہیں اور اس بار آرڈر کے خلاف آخری حد تک احتجاج کیا جائے گا اور آرڈر تسلیم نہیں کیا جائے گا۔

Facebook Comments
Share Button