تازہ ترین

GB News

ضلع نگرکے چارگائوں سکردوشہراورگمبہ سکردوکو کرونا وائرس کی تشویشناک صورتحال کی وجہ سے سیل کردیاجائے گا، شمس میر

Share Button

گلگت(خصوصی رپورٹ)صوبائی مشیر اطلاعات شمس میر نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کے ضلع نگرکے چارگائوں سکردوشہراورگمبہ سکردوکو کرونا وائرس کی تشویشناک صورتحال کی وجہ سے ریڈزون قراردیاگیا ہے ان علاقوں کوسیل کردیاجائے گا اورکسی بھی شخص کے ان علاقوں سے باہرجانے یااندرداخل ہونے پرمکمل پابندی عائدکردی گئی ہے۔انہوں نے کے پی این کوبتایا کہ گلگت بلتستان میں سب سے زیادہ کروناکے مریض ضلع نگراورضلع سکردوسے تشخیص ہوئے ہیں اوردونوں علاقوں میں لوکل سطح پر بھی کروناکامرض منتقل ہوا ہے اس لئے صوبائی حکومت نے حساس صورت حال کومدنظررکھتے ہوئے ضلع نگر کے چارعلاقوں نگرخاص،سماہر،مناپن اور پسن کوریڈزون قراردیاہے اس طرح ضلع سکردوکے سکردوشہراورگمبہ کوریڈزون قراردے دیاگیا ہے اور بہت جلد ان علاقوں کومکمل سیل کردیاجائے گا جس کے بعدان علاقوں کے تمام لوگوں کی سکریننگ کی جائے گی اورمشتبہ لوگوں کاباقاعدہ کروناٹیسٹ کیاجائے گا۔اس حوالے سے تمام اخراجات صوبائی حکومت برداشت کرے گی۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میںبتایا کہ بدھ کے روزاسلام آبادسے مزیدچودہ افرادکے ٹیسٹ کے نتائج موصول ہوگئے ہیں۔گیارہ افرادکی رپورٹ منفی آئی ہے جبکہ تین افراد کی رپورٹ مثبت آئی ہے اوران تین افرادمیں کروناکی تصدیق ہوئی ہے انہوں نے بتایا کہ رپورٹ منفی آنے کے باوجود ان گیارہ افرادکوچودہ دن قرنطینہ میں گزارناہوگا جبکہ رپورٹ مثبت آنے والے تین افرادجن کاتعلق سکردوسے ہے کوآئسولیشن سنٹر منتقل کیاجارہا ہے۔انہوںنے بتایا کہ مزید275افرادکے ٹیسٹ کی رپورٹ ابھی آناباقی ہے انہوں نے ایک سوال کے جواب میںبتایا کہ اس وقت تفتان میں گلگت بلتستان کاکوئی شخص موجود نہیں ہے تمام لوگ گلگت بلتستان منتقہ ہوچکے ہیں اورقرنطینہ سنٹروں میںموجودہیں البتہ ایران میں زائرین موجود ہیں ہم نے حکومت ایران سے درخواست کی ہے کہ صورتحال کنٹرول ہونے تک انہیں وہاں رکھاجائے تاہم اگر ان زائرین کوایران سے نکالاجاتا ہے تو ہم انہیں بھی گلگت بلتستان لائیںگے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں ابھی یہ اطلاع ملی ہے کہ گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والاایک شخص تفتان پہنچا ہے ہم ابھی تحقیق کررہے ہیں اگرتصدیق ہوئی تو انہیں بھی ہم گلگت بلتستان لائیں گے۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ صوبائی حکومت13کروڑروپے کی لاگت سے اشیائے خورونوش کے 25ہزاربیگ تیارکررہی ہے یہ امدادی سامان ریڈزون قراردیئے گئے علاقے کے لوگوں،کروناوائرس سے متاثرہونے والے لوگوں کے خاندانوں کے ساتھ ساتھ روزانہ اجرت پرکام کرنے والے مزدوروں اور غریب لوگوں میںتقسیم کیاجائے گا۔جن کاروزگارلاک ڈائون کی وجہ سے متاثرہوا ہے۔انہوں نے بتایا کہ روزانہ اجرت پرکام کرنے والے مزدوراورغریب لوگوں کی فہرستیں صوبائی انتظامیہ بنائے گی۔انہوں نے بتایا کہوزیراعلیٰ حافظ حفیظ الرحمن کی درخواست پرگورنر صوبہ سنکیانگ اورحکومت چین کی جانب سے کروناوائرس سے نمٹنے کے لئے سازوسامان اورادویات درہ خنجراب کے راستے27مارچ کوآرہی ہیں اور وزیراعلیٰ خود27مارچ کوسوست جائیں گے اورسامان وصول کرنے کے ساتھ ساتھ حکومت چین اورگورنرسنکیانگ کاشکریہ ادا کریں گے۔ اس سے قبل میڈیا کوجاری بیان میں شمس میر نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کے مزید 3کیسز سامنے آگئے ہیں اسطرح مریضوں کی کل تعداد 84 تک پہنچ گئی ان تشخیص شدہ 84 مریضوں سے 4 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں اور ہیلتھ پرٹوکول کے تحت دوبارہ مختلف ٹیسٹ کے مراحل سے گزارا جا رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی گلگت بلتستان حفیظ الرحمن کے کہنے پہ سنکیانگ کے گورنر نے 5 وینٹیلیٹرز، 2 ہزار N95 ماسک ،2 لاکھ فیس ماسک، 2 ہزار ٹیسٹنگ کٹس، و ھزار پروٹیکٹیو کٹس 27 مارچ کو خنجراب باڈر پرجی بی حکومت کے حوالے کرنے کااعلان کیا ہے۔انہوں نے لوگوں پرزوردیا کہ وہ لاک ڈائون پرسختی سے عمل کریں کیونکہ احتیاطی تدابیراپناکرہی کروناوائرس سے بچاجاسکتا ہے۔

Facebook Comments
Share Button