تازہ ترین

GB News

گلگت بلتستان انتخابات بائیو میٹرک ہونگے، اوورسیز ووٹنگ بھی ہوگی، شفقت محمود

Share Button

اسلام آباد (آئی این پی) وفاقی وزیر برائے نارکوٹکس کنٹرول اعظم سواتی اور وفاقی وزیر برائے وفاقی تعلیم و پیشہ ورانہ تربیت شفقت محمود نے کہا ہے کہ سینیٹ انتخابات خفیہ رائے شماری کی بجائے شو آف ہینڈ، عام انتخابات بائیو میٹرک اور اوورسیز پاکستانیز کو ووٹ کا حق دینے کے لئے آئین میں ترامیم تجویز کر رہے ہیں تاکہ ہارس ٹریڈنگ کا خاتمہ ہو،گلگت بلتستان انتخابات بائیو میٹرک ہونگے، گلگت بلتستان انتخابات میں اوورسیز ووٹنگ بھی ہوگی،ہم انتخابی اصلاحات اتفاق رائے سے لائیں گے، ان اصلاحات سے کسی ایک جماعت کو فائدہ نہیں ملے بلکہ سب کوہوگا۔بدھ کو انتخابی اصلاحات کے حوالے سے وفاقی وزراشفقت محمود اور سینیٹر اعظم خان سواتی نے مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کیا ۔اس دوران اعظم سواتی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان قائداعظم کے مشن پر کام کررہے ہیں، مجھے بطور وزیر پارلیمانی امور انتخابی اصلاحات کا ٹاسک ملا، میں نے تمام سٹیک ہولڈرز سے مشاورت کی، انتخابی اصلاحات کا ڈرافٹ وزیراعظم کو پیش کیا جس کو تقویت ملی، جب تک دونوں ایوانوں میں ہماری اکثریت نہیں ہوگی قانون سازی میں رکاوٹ ہے،عمران خان سینیٹ میں شفاف انتخابات چاہتے ہیں، سینیٹ انتخابات میں شو آف ہینڈ ہوگا، گزشتہ سینیٹ انتخابات میں تین نشستیں رکھنے والی جماعت نے 2 سنیٹرز منتخب کرائے، ہم آئین پاکستان 59(2) اور 226 میں ترمیم تجویز کررہے ہیں تاکہ ہارس ٹریڈنگ ہمیشہ کے لیے دفن ہوجائے، انتخابات بائیو میٹرک کے ذریعہ کرائیں گے تاکہ شفافیت پر کوئی شبہ نہ رہے، گلگت بلتستان انتخابات بائیو میٹرک ہونگے، گلگت بلتستان انتخابات میں اوورسیز ووٹنگ بھی ہوگی، الیکشن ایکٹ 2017 بڑا زبردست قانون ہے، جو کمی رہ گئی تھی وہ دور کردی گئی، اب پولنگ عملہ متعلقہ تحصیل اور یونین کونسل کا نہیں ہوگا، پریزائیڈنگ افسر کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی کریگا تو تین سال تک قید ہوسکے گی، آئندہ انتخابات میں شفاف طریقہ سے ہونگے، ہماری حکومت کے پاس دو تہائی اکثریت نہیں، دیکھتے ہیں اپوزیشن شفاف انتخابات کے لیے سپورٹ کرتی ہے یا نہیں، اعظم سواتی نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی رپورٹ کو جلد پارلیمنٹ میں زیر بحث لائیں گے، گلگت بلتستان انتخابات میں بائیو میٹرک ووٹنگ ہوگی،شفقت محمود نے کہا کہ ہم انتخابی اصلاحات اتفاق رائے سے لائیں گے، ان صلاحات سے کسی ایک جماعت کو فائدہ نہیں ملے بلکہ سب کوہوگا، الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے حوالہ سے ابھی بہت کام ہونا باقی ہے، انتخابات کا بائیومیٹرک ہونا بہت ضروری ہے، الیکشن پر وسیع پیمانے پر اتفاق رائے ہونا چاہیے، یہ ترامیم کابینہ سے منظوری کے بعد سینیٹ اور قومی اسمبلی کمیٹیوں میں جائے گا، اپوزیشن جماعتیں کمیٹیوں میں ترامیم پر اپنی رائے دینگے، وزیراعظم آئین کے مطابق اپنے کابینہ ممبران کی سلیکشن کرسکتے ہیں، ٹیکنو کریٹس اور سپیشلسٹ کو کابینہ میں شامل کرنا وزیراعظم کا اختیار ہے۔

Facebook Comments
Share Button