تازہ ترین

GB News

چلاس واقعے فوری طور پر اعلیٰ سطحی جوڈیشل کمیشن بنا کر تحقیقات کی جائیں، امجدحسین ایڈووکیٹ

Share Button

گلگت( پ ر)پیپلزپارٹی اور جے یو آئی نے چلاس واقعہ کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے عدالتی تحقیقات کرانے کا مطالبہ کردیا ہے پیپلزپارٹی کے صدر امجدحسین ایڈووکیٹ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ چلاس واقعے میں شہید ہونے والے پولیس اہلکار اور سول افراد بے گناہ تھے اس سانحے پر نگران حکومت کا ٹس سے مس نہ ہونا مجرمانہ غفلت کے زمرے میں آتا ہے۔ اس دلخراش واقعے پر فوری طور پر اعلیٰ سطحی جوڈیشل کمیشن بنا کر تحقیقات کی جائیں اور ذمہ داروں کو نشان عبرت بنایا جائے۔ اتنا بڑا واقعہ رونما ہونا نہایت افسوسناک ہے جس نے کئی بے گناہ خاندانوں کے چراغ گل کر دئیے ہیں انھوں نے گورنر راجہ جلال کی جانب سے استور داسخریم کے عوام کی زمینوں پر دعویٰ کرنے کے اقدام کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اب راج گیری نظام نہیں ہے عوام کی زمینوں پر کوئی قبضہ نہیں کرسکتا،سینکڑوں سالوں سے آباد شدہ عوامی زمینوں پر دعویٰ کرنا غیر آئینی اور غیر قانونی اقدام ہے،انھوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی اقتدار میں آکر خالصہ سرکار جیسے کالے قانون کو ختم کرے گی۔دریں اثنا پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کی صوبائی سیکرٹری اطلاعات سعدیہ دانش کی زیر صدارت انفارمیشن سیکرٹریز اور میڈیا،سوشل میڈیا سیل کے کوآرڈینیٹرز کی آن لائن میٹنگ ہوئی جس میں گلگت بلتستان کے آمدہ انتخابات، استور داسخریم کی عوامی زمینوں پر گورنر کے دعوے، سوست بارڈر کی بندش اور سکردو اور دیگر اضلاع میں کرونا وائرس کی تشویشناک صورتحال پر ضلعی انتظامیہ کے غیر سنجیدہ رویئے اور محکمہ صحت کی طرف سے کرونا ٹیسٹنگ کی تعداد میں کمی اور کوتاہیوں پر گفت و شنید کی گئی۔سعدیہ دانش نے کہا کہ استور داسخریم کی عوامی زمینوں پر راجہ جلال کی جانب سے دعویٰ افسوناک امر ہے۔ پیپلز پارٹی داسخریم کے عوام کے ساتھ کھڑی ہے اور ان کے ساتھ زیادتی نہیں ہونے دینگے۔ انہوں نے مزید کہا کہ خنجراب باڈر کو 12 دن کے لئے کھولنا خوش آئند بات ہے لیکن تاجروں کے بہتر مستقبل کے لئے خنجراب باڈر کو مستقل بنیادوں پر کھولا جائے بارڈر پاس کے اجراء پر پابندی لگا کر گلگت بلتستان کے چھوٹے تاجروں کے معاشی قتل کیا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ سکردو صرف کاروباری مراکز بند کرنے کے درپے ہے جبکہ دوسری جانب شادی بیاہ اور دیگر سماجی تقریبات میں سینکڑوں افراد کے اجتماع پر کوئی پابندی نہیں ہے۔ضلعی انتظامیہ سکردو حالات کی نزاکت کو سمجھتے ہوئے سنجیدہ اقدامات کرے۔ اجلاس میں الیکشن کمیشن گلگت بلتستان کی جانب سے انتخابی شیڈول کا اعلان نہ کرنے پر تشویشن کااظہارکیا گیا، ویڈیو کانفرنس میں ا عمران ذاکر، نجف علی، طالب حسین, خادم حسین اورخواجہ مہدی نے شرکت کی،دوسری جانب سابق پارلیمانی سیکرٹری اور جمعیت علماء اسلام گلگت بلتستان کے سینئر نائب امیر حاجی رحمت خالق نے چلاس واقعہ پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سانحے سے ایک جانب سیکورٹی اداروں کو ناقابل تلافی نقصان ہوا ہے تو دوسری جانب آپریشن کے نام پر ناحق انسانی خون بہایا گیا ہے جو ناقابل برداشت اور انتہائی قابل مذمت ہے۔انہوں نے کہا کہ ایک بے گناہ طالب علم اور اس کے رشتہ دار کو فائرنگ کرکے موت کی نیند سلایا گیاجبکہ پانچ اہلکاربھی جاں بحق ہوئے جو ناقابل تلافی نقصان ہے۔حاجی رحمت خالق نے کہا کہ گلگت بلتستان کے حالات کو مدنظر رکھ کر ضلعی پولیس کو اعتماد میں لئے بغیر ایسی کاروائی سمجھ سے بالاتر ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ اگر حکومت اس سانحے کے حوالے سے سنجیدہ ہے تو 72 گھنٹوں کے اندر جوڈیشل انکوائری کروا کر حقائق منظر عام پر لائے بصورت دیگر اس سانحے کو سوچی سمجھی سازش سے تعبیر کیا جائے گا۔انہوں نے سانحے میں جاں بحق ہونے والے تمام مرحومین کے لواحقین سے تعزیت بھی کیا۔

Facebook Comments
Share Button