تازہ ترین

GB News

انتہاپسند بھارتی حکومت دنیاکیلئے خطرہ ہے،اشرف صدا

Share Button

سکردو(بیورورپورٹ)مسلم لیگ ن گلگت بلتستان کے صوبائی ترجمان و چئیرمین قائمہ کمیٹی گلگت بلتستان کونسل اشرف صدا نے پانچ اگست کے حوالے سے جاری کئے گئے اپنے اک خصوصی پیغام میں کہا ہے کہ پانچ اگست بھارت کی چھاتی میں زہریلی کیل ثابت ہوگا۔ہندوستان کی انتہا پسند حکومت دنیا کے امن کے لئے خطرناک ہے۔ کشمیر پر تیسری عالمی جنگ چھڑ سکتی ہے۔ دنیا مودی کو روکے یا تباہی کے لئے تیار ہو جائے۔ ہندوستان نے تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات خراب کر کے خطے میں خود کو تنہا کر دیا ہے۔کشمیریوں کی جدوجہد، عزم و حوصلے اور پاکستان و آزادی کے ساتھ لازوال محبت و قربانی کو گلگت بلتستان کے عوام کی جانب سے سلام پیش کرتے ہیں۔اشرف صدا نے کہا ہے کہ ہندوستان نے پانچ اگست 2019 کو آریکل 370 اور 35ـA کا خاتمہ کر کے بظاہر اپنی مکاری کے زریعے وقتی کامیابی پر خوشی منائی مگر وقت ثابت کرے گا کہ ہندوستان کا یہ قدم خود کشی اور ہندوستان کی تقسیم کا نقطہ آغاز ہوگا۔مودی کچھ طاقتوں کا آلہ کار و سہولت کار بن چکا ہے اور بغیر سوچے طلوع ہوا ہے اب انشااللہ مودی کو غروب ہونے کے لئے بھی جگہ نصیب نہیں ہوگی۔خطے میں نہایت تیزی سے بدلتے ہوئے حالات بتا رہے ہیں کہ عالمی سطح پر نئی صف بندی یقینی ہے اور یہ صدی ایشیا کی صدی بننے جارہی ہے تاہم تاریخ اس بات کی بھی شاہد رہے گی کہ مشرق سے ابھرتے ہوئے سورج کے وقت ہندوستان مغرب کا آلہ کار بن کر اک سہولت کار کا کردار ادا کر رہا تھا۔پاکستان کو صبح شام دھمکی دینے والا مودی اور ہندوستان کی انتہاپسند حکومت اپنے بچھائے ہوئے جال میں خود بری طرح پھنس چکے ہیں۔حریت پسند کشمیریوں نے اک سال مسلسل کرفیو و ظلم و استبعداد کا دلیری کے ساتھ سامنا کر کے یہ ثابت کیا ہے کہ خطہ کشمیر پر غاصبانہ قبضہ ممکن نہیں۔ ہندوستان کشمیر میں لاکھوں کی تعداد میں باہر سے لاکر ہندؤوں کو بسانے کے منصوبے پر عمل پیرا ہے اور اس بابت عالمی اقوام و اداروں کی مجرمانہ خاموشی حیران کن ہے۔اشرف صدا نے کہا ہے کہ پاکستان کی موجودہ حکومت سے کشمیر اور کشمیر کاز کے لئے کسی بھی قسم کی جرات مندانہ اقدام کی توقع رکھنا عبث ہے۔ تا ہم مودی سرکار کی پے درپے غلطیوں سے آزادی کشمیر کے لئے راستے کھل سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ بہتر سالوں میں پاکستان سمیت کسی ملک نے ہندوستان کو اتنا نقصان نہیں پہنچایا جتنا مودی اور اسکی انتہا پسند سوچ نے گزشتہ چند سالوں میں ہندوستان کا نقصان کیا۔ انہوں نے کہا کہ اسوقت نہ صرف پاکستان بلکہ پورا خطہ حالت جنگ میں ہے اور گلگت بلتستان سی پیک اور اپنی جغرافیائی حساسیت و اہمیت کی وجہ سے نہایت ہی اہمیت و حساسیت کا حامل خطہ ہے اور اس خطے کے عظیم باسیوں نے تاریخ پاکستان کے ہر اہم موڑ پر حیران کن جذبہ قربانی کی مثالیں رقم کی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے غیور عوام اس خطے میں اپنی مسلح افواج کی جنگی صلاحیتوں اور حکمت عملیوں پر مکمل اعتماد کرتے ہوئے کسی بھی صورتحال میں اپنی فوج کی پشت پر کھڑی ہے۔ مسلح افواج ہماری دفاع کی آخری لکیر ہے اور اس لکیر کی حفاظت ہمارے ایمان کا حصہ ہے۔آج بھی گلگت بلتستان کے غیور و محب وطن عوام اپنے ازلی دشمن سے گلگت بلتستان کے اک اک انچ کے دفاع کے لئے تیار ہیں۔ اشرف صدا نے موجودہ حالات کے تناظر میں گلگت بلتستان کی نگراں حکومت ،سرکاری محکمہ جات اور قانون نافذ کرنے والے اداروں پر زور دیا ہے کہ گلگت بلتستان میں امن وامان ،انصاف ،صحت، تعلیم، باہمی اخوت و مزہبی ہم آہنگی اور شہریوں کو خوراک و بجلی کی بلا تعطل فراہمی کو یقینی بنائیں اور اس بابت سابقہ صوبائی حکومت کی مثالی حکمت عملی سے استفادہ کیا جائے۔

Facebook Comments
Share Button