تازہ ترین

GB News

شاہراہ بلتستان کے ڈیزائن میں تبدیلی کرکے 8ٹنلز کو غائب کرنے کے خلاف سکردو میں احتجاجی مظاہر

Share Button

سکردو (محمد اسحاق جلال) شاہراہ بلتستان کے ڈیزائن میں تبدیلی کرکے 8ٹنلز کو غائب کرنے کے خلاف سکردو میں احتجاجی مظاہرہ کیاگیا مظاہرے کا اہتمام سول سوسائٹی بلتستان نے کیا تھا یادگار چوک پر کئے گئے احتجاجی مظاہرے میں مختلف سیاسی مذہبی جماعتوں کے قائدین اور شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اٹھارکھے جن پر اپنے مطالبات کے حق میں نعرے درج تھے مظاہرین نے مطالبہ کیاکہ ٹنلز کی تعمیر کو فوری طور پر یقینی بنایا جائے۔شاہراہ بلتستان کی تعمیر پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے ٹنلز کے بغیر روڈ کا کوئی فائدہ نہیں ہے ۔مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے نجف علی نے کہا کہ بلتستان کو مکمل نظر انداز کیا جارہاہے ۔ہم انتباہ کرنا چاہتے ہیں کہ ٹنلز پر فوری کام شروع کیا جائے ۔پی ٹی آئی بلتستان کے جنرل سیکرٹری سینئر سیاستدان یوسف نمبردار نے کہا کہ شاہراہ بلتستان ہماری شہ رگ ہے اس کی تعمیر میں کوئی ہیراپھیری برداشت نہیں کریں گے ٹنلز غائب کرنے کے بارے میں ہم اپنی جماعت کے مرکزی قائدین کو آگاہ کریں گے معاملے پر کبھی سستی نہیں دکھائیں گے شاہراہ بلتستان سے ہماری ترقی خوشحالی جڑی ہوئی ہے اس پر خاموش نہیں رہ سکتے پیپلزپارٹی بلتستان کے سینئر رہنماء عبداللہ حیدری نے کہاکہ ہمارے ساتھ بڑا دھوکہ کیا گیا ہے ابھی احتجاج نہیں کریں گے تو ٹنلز کبھی نہیں بنیں گی مسلم لیگ ن یوتھ ونگ بلتستان کے صدر ریاض علی غازی نے کہا کہ شاہراہ بلتستان کی تعمیر ہمارے دور میں شروع ہوئی منصوبہ ہماری حکومت کا بلتستان کے عوام کو بڑا تخفہ تھا مگر اس عظیم قومی منصوبے کے خلاف نت نئی سازشیں ہورہی ہیں جو قابل مذمت ہیں آل پاکستان مسلم لیگ کے چیف آرگنائزر منظور یولتر نے کہا کہ ایم کیو ایم کے رہنماء محمد علی دلشاد ایم ڈبلیو ایم کے رہنما حاجی زرمست خان گلگت بلتستان بچاو تحریک کے بانی وچیئرمین شبیر مایار شکیل صابری اور دیگر نے کہاکہ بلتستان کے خلاف بڑی سازشیں ہورہی ہیں یہاں بننے والا ہر منصوبہ متنازعہ بن جاتا ہے بلتستان کے عوام کو اب جاگنا ہوگا ورنہ حقوق سلب ہوتے رہیں گے شتونگ نالہ اور دیگر کئی بڑے منصوبوں کے ڈیزائن تبدیل کئے جانے کے بعد اب سکردو روڈ(شاہراہ بلتستان ) کا ڈیزائن تبدیل کیا جارہاہے اور اربوں روپے بچانے کا منصوبہ تیار کیاگیا ہے اگر نقشے کے مطابق شاہراہ بلتستان نہ بنائی گئی تو اس کا حشر بھی سدپارہ تا دیوسائی روڈ جیسا ہی ہوگا۔

Facebook Comments
Share Button