تازہ ترین

GB News

نواز شریف کے ساتھ وہی ہوگا جو الطاف حسین کے ساتھ ہوا،حکومت

Share Button

اسلام آباد،لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)حکو مت نے ن لیگ پر پابندی کا اشارہ دیتے ہوئے دوٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کو برداشت نہیں کیا جائے گا، نواز شریف کے ساتھ وہی ہوگا جو الطاف حسین کے ساتھ ہوا۔ الطاف حسین نمبر دو کا نام نواز شریف ہے،ن کی تقریر کو بھارت میں دکھایا گیا، بھارت میں بانی ایم کیو ایم کو وہ کوریج نہیں ملی جو نوازشریف کو ملی،ن لیگ بھارت کے ایجنڈے پر کام کررہی ہے،اسلام آبادمیں میڈیا سے بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات شبلی فراز نے کہا کہ اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ شبلی فراز نے کہا کہ عوام اپوزیشن کے ذاتی مفادات کی سیاست کو جانتے ہیں، اپوزیشن کا پہلا شو فلاپ ہوگیا، ان کے پاس کوئی پروگرام نہیں، انھوں نے عوام کے لیے کچھ نہیں کیا، ان کو غریبوں کے دکھ درد کا کیا پتہ ؟ مریم نواز بتائیں انہوں نے کسی غریب سے آخری ملاقات کب کی؟شبلی فراز نے کہا کہ گزشتہ روز اپوزیشن کے جلسے میں اداروں کے خلاف گھٹیا زبان استعمال کی گئی، ملکی تحفظ کے ضامن اداروں کے خلاف مہم جوئی کی اجازت نہیں دی جاسکتی، اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔وزیر اطلاعات نے کہا اپوزیشن سٹیڈیم نہیں بھرسکی اور کیا چیلنج قبول کرے گی، اپوزیشن کا پہلا شو فلاپ ہوا، ان کا کوئی مستقبل نہیں، عوام اپوزیشن کے ذاتی ایجنڈے کیلئے کبھی نہیں نکلے گی، نواز شریف کے ذاتی ایجنڈے کیلئے عوام کبھی ساتھ نہیں دیں گے، اپوزیشن کو کل کے ناکام جلسے سے سبق سیکھ لینا چاہیئے۔اس موقع پر فواد چوہدری نے کہا کہ عمران خان نے کہاتھا احتساب کا عمل شروع ہوگا یہ اکٹھے ہو جائیں گے، 11 پارٹیاں 15 سے 18 ہزار لوگ بھی اکٹھے نہیں کر پائیں، مولانا فضل الرحمان نے تو خالی کرسیوں سے خطاب کیا، ان کو اپنی اصلیت نظر آگئی، ان کو مزید جلسوں پر نظر ثانی کرنی چاہیے، امید ہے آپ اپنے باقی جلسے موخر کردیں گے۔وفاقی وزیر نے کہا کہ مسلم لیگ والوں سے کہتا ہوں کہ خطرناک کھیل نہ کھیلے، نواز شریف خطرناک بیانیے پر کام کررہے ہیں ، یہ بیانیہ ناکام ہوگا، نواز شریف کاعمل ایسا ہے جیسے ناراض محبوبہ، انہیں سمجھ نہیں آرہی کہ کیسے بدلہ لیں، میں نوازشریف کو باہر بھیجنے کے حق میں نہیں تھا کیونکہ جب ایسے لوگ باہر جاتے ہیں تو وہ غیر ملکی ایجنڈے کا حصہ بن جاتے ہیں، پاکستان کے اداروں پر تنقید بھارت کا ایجنڈا ہے، نوازشریف کو لندن سے واپس لایا جائے گا۔ادھر لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر شیخ رشید نے کہا کہ نواز شریف کا لندن سے سیاسی جنازہ آئے گا ن لیگ پر پابندی لگنی چاہئے۔ شیخ رشید نے مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اعلان جنگ ہوچکا ہے اور نواز شریف کے ساتھ وہی ہوگا جو الطاف حسین کے ساتھ ہوا۔ الطاف حسین نمبر دو کا نام نواز شریف ہے،ن کی تقریر کو بھارت میں دکھایا گیا، بھارت میں بانی ایم کیو ایم کو وہ کوریج نہیں ملی جو نوازشریف کو ملی، پاکستان میں جمہوریت فوج کی بدولت ہے، پاک فوج ملک میں امن واستحکام کی ضامن ہے، یہ اداروں میں تصادم چاہتے ہیں، اب نوازشریف کی سیاست دوبارہ پاکستان میں نہیں آئے گی، بلکہ ان کا سیاسی جنازہ ہی لندن سے آئے گا،شہباز شریف میری پارٹی کا بندہ ہے وہ بہتر کھیل رہا ہے مگر یہ لوگ اس کی جڑوں میں بیٹھ گئے ہیں،ان کا کہنا تھا کہ ‘نواز شریف صاحب بھگوڑے ہیں، انہیں معلوم ہی نہیں کہ وہ وہی کھیل کھیل رہے ہیں جو بین الاقوامی ایجنڈا ہے’۔شیخ رشید کا کہنا تھا کہ یہ وہی نواز شریف ہیں جو میمو گیٹ میں آصف زرداری کے خلاف کوٹ پہن کر سپریم کورٹ گئے تھے۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز کے جلسے کا موازنہ 1986 کے بے نظیر کے جلسے اور عمران خان کے مینار پاکستان کے جلسے سے کیا جائے تو یہ اس کے بال برابر بھی نہیں۔وزیر ریلوے کا کہنا تھا کہ ‘1986 کے بینظیر کے جلسے سے جب ضیا الحق کی حکومت نہیں گئی اور مینار پاکستان پر عمران خان کے جلسے سے نواز شریف کی حکومت نہیں گئی تو ان کے جلسوں سے ہماری حکومت کیسے ختم ہوسکتی ہے’۔انہوں نے کہا کہ ‘نوٹی فکیشن جاری ہونا چاہیے کہ نواز شریف کی پارٹی ملک دشمن پارٹی ہے اور اس پر پابندی لگائی جاتی ہے، یہ پڑوسی ملک سے پیسے لے کر ملک میں انتشار پیدا کرنا چاہتے ہیں’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘واضح ثبوت ہیں کہ یہ جلسہ اربوں روپے کا جسلہ ہے تاہم میں اس کے خلاف بات نہیں کرتا کیونکہ اس سے غریبوں کو ایک دو دن کے پیسے مل جاتے ہیں’۔شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ان کا صرف یہ ایجنڈا ہے کہ مریم نواز کو باہر بھیج دیا جائے اسی لئے یہ اکٹھے ہوئے ہیں۔انہوں نے مسلم لیگ (ن) کے قائد کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ‘نواز شریف صاحب استنبول کے ہوٹل میں 11 بجکر 20 منٹ پر ہونے والی ملاقات سے میں واقف ہوں اور میں نے خود خاموشی اختیار کر رکھی ہے’۔تاہم انہوں نے اس ملاقات کے بارے مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں۔انہوں نے مسلم لیگ(ن) کے ارکان اسمبلی سے متعلق اپنے گزشتہ دعوے کو دہرایا کہ ’31 دسمبر تک آپ کو کئی لوگ چھوڑ جائیں گے،وزیر ریلوے کا کہنا تھا کہ ‘اگر مسلم لیگ (ن)پاکستان دشمنوں کے ایجنڈے پر کام کرے گی تو اس پر پابندی لگنی چاہیے، نواز شریف نے اپنی سیاست کا گلا خود گھونٹا ہے’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘پاکستان میں کوئی آرمی چیف ایسا نہیں رہا جس سے نواز شریف کی تکرار نہیں ہوئی ہو، اب یہ کھل کر سامنے آگئے ہیں’۔انہوں نے کہا کہ اگر نواز شریف غربت اور مہنگائی کے خلاف یہ سب کر رہے ہیں تو پہلے یہاں آئیں’۔شیخ رشید کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے کل جو کردار ادا کیا اس سے عمران خان کی حکومت اور مضبوط ہوئی’۔اپنی گفتگو کے آخر میں انہوں نے دعوی کیا کہ ‘ایک سے دومہینے میں مہنگائی میں کمی آئے گی۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں نے ایک ماہ سے میڈیا کو مصروف رکھا، اور گزشتہ روز ہونے والے جلسے پر اربوں روپے خرچ کیے گئے، لیکن پھر بھی پی ڈی ایم کا جلسہ ناکام ترین جلسہ تھا، 18 شہروں سے صرف 20 سے 22 ہزار لوگوں کو جمع کیا جاسکا، جلسوں سے حکومتیں نہیں جاتیں، زندگی میں بے نظیر اور عمران خان کا جلسہ بہت بڑا تھا۔

Facebook Comments
Share Button