تازہ ترین

Marquee xml rss feed

وزیراعظم اور عمران خان سے متعلق دیا گیا بیان 2 برس پرانا ہے: شاہد آفریدی کی وضاحت-کیا باقاعدہ منصوبہ بندی سے پھنسایا گیا؟ غریدہ فاروقی نے وضاحت کر دی-مسلم لیگ ن میں بغاوت عروج پر متحدہ مسلم لیگ بنانے کی تیاریاں آخری مراحل میں، 3 درجن اراکین اسمبلی کے تحریک انصاف سے بھی رابطے-وزیرداخلہ کی پریس کانفرنس ملتوی ہونےکا ڈراپ سین-ایک طرف وزیراعظم کے استعفے کی بات دوسری طرف نیب قانون ختم کیاجارہاہے ،محمد زبیر نیب نہیں ہوگاتوکرپشن کی روک تھام کیسے ہوگی ،وفاق اورصوبے کے درمیان کشمکش نہیں ہونی چاہئے ... مزید-وزیراعلیٰ شہباز شریف کو وزارت عظمیٰ کی پیشکش کی تھی، خواجہ آصف کو وزیراعظم بنانا پاکستان کے ساتھ مذاق ہوگا، وہ فوج میں بہت غیر مقبول ہیں، چوہدری نثار واحد وزیر ہیں جن ... مزید-عوام کو سازشوں کے ذریعے ورغلایا نہیں جاسکتا،عوام ہی بہترجج ہیں اورصحیح فیصلہ کرنے کااختیار رکھتے ہیں،وزیر اعلیٰ بلوچستان وزیراعظم محمدنوازشریف نے ہمیشہ اداروں کااحترام ... مزید-خدانے دوبارہ پاکستان میں حکومت کاموقع دیاتولال مسجداوراکبربگٹی جیسے آپریشن پھرکروں گا،مجھے ان پر کوئی ندامت نہیں ، پرویز مشرف جوبھی کیاہے سوفیصدملک وقوم کیلئے کیا،پانامہ ... مزید-ذوالقعدہ کا چاند نظر آگیا،یکم ذوالقعدہ منگ کل ہوگی، مفتی منیب الرحمن-دہشت گردی ملک بھر میں سر اٹھارہی ہے اور سیاسی رہنماء کرسی کی جنگ میں مصروف ہیں،سینیٹر شاہی سید ریاست بچانا کرسی بچانے سے زیادہ اہم ہے ،اب بھی وقت ہے ملک کی سلامتی اور ... مزید

GB News

سیکورٹی کاقیام ایک مسلسل عمل ہے

آئی جی گلگت بلتستان کیپٹن ظفر اقبال اعوان نے کہا ہے کہ گلگت میں سیکیورٹی کا نظام مربوط بنایا گیا ہے سیکیورٹی اداروں کی کوششوں سے خطہ امن کا گہوارہ بن چکا ہے’امن کو برقرار رکھنے کیلئے تمام سٹیک ہولڈرز کو کردار ادا کرنا ہو گا۔یہ درست ہے کہ امن کے قیام کیلئے کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں رکھا جانا چاہیے کیونکہ ہم حالت جنگ میں ہیں۔ہمیںسب سے پہلے اندرونی طور پر ہر اس سرگرمی کو روکنا ہو گا، جس کے ذریعے انسانی رویہ میں تشدد کا امکان ہو۔ چاہے یہ تشدد سیاسی نوعیت کا ہو مذہبی نوعیت کا یا پھر تعلیمی نوعیت کا، سیکیورٹی کا مطلب ہرگز یہ نہیں کہ آپ بندوق اٹھا کر کھڑے ہو جائیں۔ سیکیورٹی کی ابتدا تو انسانی سوچ سے کی جا سکتی ہے۔ ہر قسم کے ایسے لٹریچر پر کڑی پابندی لگا دینی چاہئے، جس میں نظریاتی تشدد کا پرچار کیا گیا ہو چاہے وہ لٹریچر سیاسی ہو یا مذہبی،عسکری تربیت ریاست کا کام اور سرکاری عسکری اداروں کی ذمہ داری ہے، اگر کوئی عسکری طبیعت کا حامل ہے تو اسے چاہیے کہ وہ اپنی صلاحیتوں کو ملک و قوم کیلئے وقف کر دے نجی عسکری تربیت کے مراکز کے خلاف سخت کارروائی کرکے ایسے ادارے قائم کرنے والوں کے خلاف زبردست قانونی چارہ جوئی کی جائے۔ ریاست کی اولین ذمہ داری ہے کہ وہ ایسے تمام افراد کو اپنی حراست میں لے لے جو پرامن اسلامی تشخص کو خونخوار اور مکروہ تعارف میں بدلنے کی کوشش کریں۔ ہر قسم کی غیر سرکاری عسکری تربیت پر پابندی لگا دی جائے مذہبی عسکریت پسندوں کے جلسے جلوسوں پر پابندی لگا دی جائے اور خلاف ورزی پر گرفتار کرلیا جائے یہی امن کے قیام کا واحد حل ہے۔

Share Button