تازہ ترین

Marquee xml rss feed

وزیراعظم اور عمران خان سے متعلق دیا گیا بیان 2 برس پرانا ہے: شاہد آفریدی کی وضاحت-کیا باقاعدہ منصوبہ بندی سے پھنسایا گیا؟ غریدہ فاروقی نے وضاحت کر دی-مسلم لیگ ن میں بغاوت عروج پر متحدہ مسلم لیگ بنانے کی تیاریاں آخری مراحل میں، 3 درجن اراکین اسمبلی کے تحریک انصاف سے بھی رابطے-وزیرداخلہ کی پریس کانفرنس ملتوی ہونےکا ڈراپ سین-ایک طرف وزیراعظم کے استعفے کی بات دوسری طرف نیب قانون ختم کیاجارہاہے ،محمد زبیر نیب نہیں ہوگاتوکرپشن کی روک تھام کیسے ہوگی ،وفاق اورصوبے کے درمیان کشمکش نہیں ہونی چاہئے ... مزید-وزیراعلیٰ شہباز شریف کو وزارت عظمیٰ کی پیشکش کی تھی، خواجہ آصف کو وزیراعظم بنانا پاکستان کے ساتھ مذاق ہوگا، وہ فوج میں بہت غیر مقبول ہیں، چوہدری نثار واحد وزیر ہیں جن ... مزید-عوام کو سازشوں کے ذریعے ورغلایا نہیں جاسکتا،عوام ہی بہترجج ہیں اورصحیح فیصلہ کرنے کااختیار رکھتے ہیں،وزیر اعلیٰ بلوچستان وزیراعظم محمدنوازشریف نے ہمیشہ اداروں کااحترام ... مزید-خدانے دوبارہ پاکستان میں حکومت کاموقع دیاتولال مسجداوراکبربگٹی جیسے آپریشن پھرکروں گا،مجھے ان پر کوئی ندامت نہیں ، پرویز مشرف جوبھی کیاہے سوفیصدملک وقوم کیلئے کیا،پانامہ ... مزید-ذوالقعدہ کا چاند نظر آگیا،یکم ذوالقعدہ منگ کل ہوگی، مفتی منیب الرحمن-دہشت گردی ملک بھر میں سر اٹھارہی ہے اور سیاسی رہنماء کرسی کی جنگ میں مصروف ہیں،سینیٹر شاہی سید ریاست بچانا کرسی بچانے سے زیادہ اہم ہے ،اب بھی وقت ہے ملک کی سلامتی اور ... مزید

GB News

ہمارا کوئی سیاسی مقصد نہیں، پوری دنیا کے ساتھ مل کر چلنا چاہتے ہیں، چینی صدر

چین کے صدر شی چن پنگ نے کہا ہے کہ ہم کسی قسم کے سیاسی مقاصد کو لے کر آگے نہیں جارہے’ ہم پوری دنیا کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہتے ہیں’ عالمی معیشت کو لاحق خطرات سے مشترکہ طور پر نمٹناچاہتے ہیں’ ون بیلٹ ون روڈ وژن سے دنیا کے تمام ممالک مستفید ہ وں گے’ منصوبے سے تجارت کو مزید فروغ ملے گا’ خطے میں معاشی خوشحالی آئے گی’ چین تعاون کے ذریعے ترقی کو فروغ دینے کے لئے پرعزم ہے’ ترقیاتی منصوبوں کے لئے پالیسی تعاون فراہم کریں گے۔ پیرکو بیجنگ میں میڈیا کانفرنس سے خطاب میں بیلٹ اینڈ روڈ فورم کے مشترکہ اعلامیہ کے اہم نکات بیان کرتے ہوئے صدر شی چن پنگ نے کہا کہ ون بیلٹ ون روڈ فورم میں دنیا کی اعلیٰ قیادت شریک ہے۔ فورم کے ذریعے دنیا کو مثبت پیغام پہنچا ہے۔ ہم پوری دنیا کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہتے ہیں۔ انہوںنے کہا کہ عالمی معیشت کو لاحق خطرات سے مشترکہ طور پر نمٹنا چاہتے ہیں۔ ون بیلٹ ون روڈ وژن سے دنیا کے تمام ملک مستفید ہوں گے۔ روڈ فورم خطے کی معاشی ترقی میں تیزی لائے گا۔ چینی صدر نے کہا کہ منصوبہ خطے میں ترقی کا ضامن ہوگا اور ترقی کے مساوی مواقع فراہم کرے گا۔ بنیادی ڈھانچے ‘ شاہرائوں کا نیٹ ورک اور معیشت کی مضبوطی ترجیحات ہیں۔ ہم کسی قسم کے سیاسی مقاصدکو لے کر آگے نہیں جارہے۔ چین تعاون کے ذریعے ترقی کو فروغ دینے کے لئے پرعزم ہے۔ انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کے لئے پالیسی تعاون فراہم کریں گے۔ منصوبے سے خطے میں تجارت کو مزید فروغ ملے گا۔ ون بیلٹ ون روڈ سے خطے میں معاشی خوشحالی آئے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ شاہراہ ریشم فنڈ کے تحت نئے منصوبوں کے لئے 100ملین یوآن فراہم کئے جائیں گے اس کے علاوہ 300بلین یوآن کا ایک اور فنڈ بھی قائم کیا جائے گا۔ چائنہ ڈویلپمنٹ بنک اور چائنہ امپورٹ ایکسپورٹ بنک بھی بالترتیب 200ارب اور 300ارب یوآن کے فنڈ مختص کریں گے۔

Share Button