وفاقی کابینہ، الیکٹرانک ، اوورسیز ووٹنگ کیلئے دو آرڈیننس منظور

 وزیراعظم عمران خان نے عیدالفطر کے موقع پر ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کرانے کی منظوری دے دی۔ وزیراعظم کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں قیدیوں کی سزا میں 90 روز کمی کی منظوری دے دی گئی۔ اجلاس میں ملک میں کرونا وائرس کی صورتحال اور ویکسی نیشن سے متعلق بریفنگ دی گئی جبکہ آئندہ مالی سال کے بجٹ سے متعلق تجاویز پر بھی گفتگو ہوئی۔ وزیراعظم نے ہدایت کی کہ عیدالفطر کے موقع پر ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کرایا جائے۔ کابینہ نے ہیوی انڈسٹری ٹیکسلا میں پروڈکشن کنٹرول ممبر کی تعیناتی، این ای ڈی انجینئرنگ یونیورسٹی کے 100 سال مکمل ہونے پر اعزازی سکہ جاری کرنے، سندھ میں کرونا ایس او پیز پر عملدرآمد کے لئے سول انتظامیہ کی مدد کے لیے پاک فوج کی تعیناتی، ریلوے کنسٹرکشن پاکستان لمیٹڈ کے سی ای او کی تعیناتی اور ریلوے اور ٹیکس بیریر میں نجی شعبہ کی شمولیت کی منظوری بھی دے دی۔ اجلاس کو مہنگائی کو روکنے کیلئے بنائی گئی حکمتِ عملی سے بھی آگاہ کیا گیا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ آئندہ بجٹ میں عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دیا جائے گا، عوامی ضروریات کے ترقیاتی منصوبوں کو ترجیح دی جائے گی، ترقیاتی کاموں سے معاشی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا، روزگار کے مواقع پیدا ہونگے۔اجلاس کے دوران یورپین پارلیمنٹ کی قرارداد سے متعلق کابینہ ارکان نے تبادلہ خیال کیا۔نجی ٹی وی کے مطابق علی محمد خان کا کہنا تھا کہ یورپین پارلیمنٹ کی قراردادکا سخت جواب دیا جانا چاہیے۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ناموس رسالت ۖ ہر مسلمان کے لیے سب سے بڑھ کر ہے، ناموس رسالت ۖ کے قانون پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔جی ایس پی پلس پر یورپ کے تحفظات دور کرینگے لیکن ختم نبوتۖ قانون پر سمجھوتہ نہیں ہوگا، ، ہم کسی کے دبائو میں فیصلے نہیں کرتے، ناموس رسالت ۖ ہر مسلمان کے لیے سب سے بڑھ کر ہے۔وزیراعظم نے تنبیہ کرتے ہوئے کہا کہ وزرا معاملے پر گفتگو کرتے ہوئے احتیاط کریں،حکومت اپنے طور پر معاملات کو دیکھ رہی ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق اجلاس میں مشیرتجارت رزاق دائود نے عیدالفطر کی 6 چھٹیاں دینے پر اعتراض کیا، ان کا کہنا تھا کہ عیدالفطر کی 3 چھٹیاں دینی چاہئیں، 6چھٹیاں ہونے سے ایکسپورٹرز کو مسائل کا سامنا کرنا پڑے گا۔وزیراعظم عمران خان نے عید کی چھٹیوں کے دوران ایکسپورٹرز کے مسائل حل کرنے کی ہدایت کردی۔ اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وفاقی وزیر چوہدری فواد نے کہا کہ ایس او پیز پر عمل درآمد کرنے میں سب سے آگے اسلام آباد ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ صوبے میں کرونا ایس او پیز پر عملدرآمد کرانے میں ناکام رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ 24 گھنٹوں کے دوران زیادہ تر اموات پنجاب اور خیبرپختونخوا میں ریکارڈ کی گئیں۔ فواد چوہدری نے بتایا کہ گزشتہ 161 افراد کرونا سے جاں بحق ہوئے جبکہ 3 ہزار 377 افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ عید کی چھٹیوں میں لاک ڈائون کا مقصد کیسز میں اضافے کو روکنا اور امید ہے کہ حکومت سندھ اس پر خصوصی توجہ دے گی۔ علاوہ ازیں کراچی میں ضمنی انتخاب سے متعلق دوبارہ گنتی کے معاملے پر فواد چوہدری نے کہا کہ 'ہمارا مطالبہ ہے کہ دوبارہ الیکشن ہونے چاہیے ۔ فواد چوہدری نے کہا کہ این اے 249 میں ووٹرز کا ٹرن آٹ انتہائی کم تھا اس لیے یہ ضمنی انتخاب کسی تماشے سے کم نہیں تھا۔ انہوں نے کہا کہ ٹرن آٹ کرونا کی وجہ سے بھی کم رہا جبکہ بھارت میں کیسز میں اضافے کی ایک بڑی وجہ وہاں کا الیکشن کمیشن ہے۔ فواد چوہدری نے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری اور نائب صدر مسلم لیگ (ن)مریم نواز سے متعلق کہا کہ ہمارے اوپر نابالغ لیڈر شپ مسلط ہے جسے پارلیمان کے کردار کا علم نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ(ن)اور پیپلز پارٹی کی سیاست خاتمے کے قریب ہے۔ فواد چوہدری نے بتایا کہ آج کابینہ نے دو آرڈیننس کی منظوری دی ہے جس کے تحت الیکشن کمیشن ای وی ایم مشین استعمال کرسکے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ ای ووٹنگ کے ذریعے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو ووٹنگ کا حق ملے گا۔ ایک سوال کے جواب میں انہو ں نے کہا کہ عدالتوں میں وراثتی سرٹیفکیٹ لینے کیلئے مدت لگ جاتی تھی، اب وراثتی سرٹیفکیٹ لینے کیلئے عدالت نہیں جانا پڑتا، اب نادرا فیملی ٹری دیکھ کر وراثتی سرٹیفکیٹ جاری کر دیتا ہے، اوورسیز پاکستانیوں کیلئے بھی وراثتی سرٹیفکیٹ کی سہولت کا آغاز کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا سرکاری ملازمین نوکری سے استعفیٰ دیئے بغیر ایم پی ون اور ایم پی ٹو سکیل لے سکیں گے۔