کرونا کیسز کی شرح چار فیصد سے متجاوز، مزید ستائیس اموات

 ملک بھر میں جان لیوا وائرس کے وار جاری، ایک ہزار نو سو اسی افراد وائرس میں مبتلا، مزید ستائیس افراد جان سے گئے۔ ملک میں ایکٹو کیسز کی تعداد 37 ہزار 499 ہو گئی، کورونا سے محفوظ رہنا ہے تو احتیاطی تدابیر اختیار کریں۔ پاکستان میں کورونا کی صورتحال ایک بار پھر بگڑنے لگی ، عالمی وبا سے مزید 27افراد انتقال کر گئے، مجموعی اموات کی تعداد 22ہزار 582ہو گئی ۔ مثبت کیسز کی شرح میں بھی تیزی سے اضافہ ہونے لگا، ملک میں مثبت کیسز کی شرح 4اعشاریہ صفر نو ریکارڈ کی گئی۔ این سی او سی کے مطابق پاکستان میں ایکٹو کیسز کی تعداد 37ہزار 499تک پہنچ گئی ہے ،مجموعی کیسز کی تعداد 9لاکھ 73ہزار 284ہو گئی۔ ملک میں نئے کیسز میں بھی اضافہ،ایک ہزار 980 نئے کیس رپورٹ جبکہ کورونا سے صحت یاب ہونے والوں کی تعداد 9لاکھ 13ہزار 2023ہو گئی ہے۔ اعداد و شمار کے مطابق پنجاب میں 3لاکھ 48ہزار 85، سندھ میں 3لاکھ 46ہزار 360، خیبر پختونخوا میں ایک لاکھ 39ہزار 313، بلوچستان میں 27ہزار 961 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جبکہ اسلام آباد میں 83ہزار 647،آزاد کشمیر میں 21ہزار 67اور گلگت بلتستان میں 6ہزار 851افراد کورونا سے متاثر ہوئے۔نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے عید الاضحی پر کرونا وائرس پھیلنے کے خطرے پر سخت ایس او پیز نافذ کردیئے، تفریحی مقامات، سینما گھر، شادی ہال ، جمنازیم آنے والے افراد کیلئے ویکسی نیشن لازمی قرار دیدی گئی، جبکہ  ملک میں کرونا کیسز کی شرح 4 فی صد سے اوپر چلی گئی۔ پاکستان کرونا مریضوں کی تعداد کے حوالے سے مرتب کی گئی فہرست میں 30 ویں نمبر پر پہنچ چکا ہے۔ نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر (این سی او سی)نے ڈیلٹا وائرس کے خطرناک نتائج سے خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ عیدالاضحی کی آمد کے پیش نظر کرونا پھیلا کے خطرات لاحق ہیں۔ این سی او سی نے صوبوں کو ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کیلئے تفصیلی ہدایات جاری کردی ہیں۔ مویشی منڈیوں اور عید سے متعلقہ ایس او پیز کے نفاذ کیلئے بھی احکامات جاری کیے گئے ہیں۔ ضلعی انتظامیہ کیلئے تفصیلی چیک لسٹس جاری کی گئی ہے۔ ضلعی انتظامیہ کیلئے بھی تفصیلی چیک لسٹس جاری کر دی گئیں۔ صوبے اپنی اپنی شرح کے لحاظ سے ایس او پیز پر عمل درآمد کے مجاز ہونگے۔ عید الاضحی کے موقع پہ وبا کے پھیلا کی صورت میں، غیر ضروری نقل و حرکت کو محدود رکھنے کے لیے مختلف تجاویز زیر غور ہیں، جن پر عمل درآمد کا فیصلہ کورونا کے پھیلا کو مدنظر رکھ کر آئندہ چند دن میں کیا جائے گا۔ وبا کے پھیلا کے پیش نظر سیر و سیاحت پر پابندی کا بھی امکان ہے۔