عرب عسکری اتحاد کا یمن کی آزادی کیلئے بڑے عسکری آپریشن کا اعلان

عرب عسکری اتحاد برائے یمن کے ترجمان بریگیڈیئر ترکی المالکی نے جنوبی یمن کے معروف علاقے شبوہ میں گزشتہ روز ایک پریس کانفرنس کی جس میں اْنہوں نے پورے یمن کو آزاد کرانے کے فوجی آپریشن کا اعلان کیا۔اِس موقع پر اْن کے ہمراہ شبوہ کے گورنر عوض العولقی بھی تھے۔ سبق ویب سائٹ کے مطابق المالکی نے کہا کہ یہ بڑا تاریخی لمحہ ہے، شبوہ کا چپہ چپہ حوثی باغیوں سے اّزاد کرالیا گیا ہے۔بریگیڈیئر ترکی المالکی نے کہا کہ شبوہ کو آزاد کرانے کے لیے جانوں کا نذرانہ پیش کیا گیا ہے، نذرانہ پیش کرنے والوں کو سلام پیش کرتے ہیں۔شبوہ کے گورنر عوض العولقی نے عرب عسکری اتحاد برائے یمن کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ شبوہ کی بازیابی میں عرب عسکری اتحاد کی فضائیہ کی مدد قابل تعریف ہے۔بریگیڈیئر ترکی المالکی نے کہا کہ آج صبح سے ہر محاذ پر عسکری آپریشن کا اعلان کرتے ہیں۔ یہ عسکری زبان والا خالص آپریشن نہیں ہوگا بلکہ یمن کو خوشحال اور ترقی یافتہ بنانے والا آپریشن ہوگا جس کے بعد یمن تعمیر و ترقی اور خوشحالی میں خلیجی ممالک کا ہمسر بن جائے گا۔بریگیڈیئر ترکی المالکی نے کہا کہ حوثیوں کی خلاف ورزیاں ڈھکی چھپی نہیں، سب کی نظروں میں ہیں اور اْن کے پاس ٹھوس ثبوت ہیں کہ ایران حوثیوں کو اسلحہ اسمگل کررہا ہے۔بریگیڈیئر ترکی المالکی نے گزشتہ دنوں سوشل میڈیا پر جاری ایک وڈیو کے بارے میں وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ وہ یہ غلطی تسلیم کرتے ہیں۔ اْن کا کہنا تھا کہ ابلاغی عمل ہو یا عسکری آپریشن، ہر معاملے میں اعتبار اور شفافیت برقرار رکھنے کے لیے پرعزم ہیں۔