Image

گلگت بلتستان حکومت کا خاتمہ ضروری، کائرہ

وزیر اعظم پاکستان کے مشیر قمر زمان کائرہ نے کہا ہے کہ صدر مملکت عارف علوی اپوزیشن کے ترجمان بن چکے ہیں گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی کے لئے تحریک انصاف کی حکومت کا خاتمہ ضروری ہے۔گلگت میں مےڈےا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے قمرزمان کائرہ نے کہاکہ ماضی میں گلگت بلتستان کو آئینی حیثیت پیپلز پارٹی نے دی تھی اور اب بھی پیپلز پارٹی کو ہی عبوری صوبہ بنانے کا اعزاز ملے گا،عبوری آئینی صوبہ پیپلزپارٹی کے منشور کا حصہ ہے اس پر عملدرآمد کے لئے عملی اقدامات اٹھائیں گے۔ میری ذاتی رائے ہے کہ یہاں اور آزاد کشمیر بھی انتخابات ملک بھر کے ساتھ ہوں یہ تاثر غلط ہے کہ جسکی وفاق میں حکومت ہو اسی کی یہاں طاقت کو دیکھ کر ووٹ دیے جاتے ہیں۔گلگت بلتستان کے گورنر کے حوالے سے بھی بہت جلد فیصلہ کیا جائے گا۔ گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی کے لئے فیڈرل پی ایس ڈی پی کے تمام منصوبوں کی بروقت تکمیل کے لئے اقدامات کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ یوکرین کی گندم صرف گلگت بلتستان نہیں بلکہ پورے ملک میں سپلائی ہوئی،گلگت بلتستان کو اعلیٰ معیار کی گندم فراہم کریں گے۔سوست بارڈر دوطرفہ تجارت کے لئے کھولنے کے حوالے سے جلد اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ ششپر گلیشیرکے متاثرین اور متاثرین روندو کی آباد کاری کے حوالے سے وفاقی حکومت ہر ممکن اقدامات کرے گی قمر زمان کائرہ نے کہا کہ بہت جلد گلگت بلتستان کے تمام اضلاع کا دورہ کروں گا۔اور عوام سے ملاقات کر کے ان کو در پےش مسائل و مشکلات سے سنےں گے،ملک کی سیاسی صورتحال کے حوالے سے قمرزمان کائرہ نے کہا کہ صدر عارف علوی حزبِ اختلاف کا کردار ادا کر رہے ہیں اور انکا رویہ آئین اور اداروں کے خلاف ہتک آمیز ہے۔ قبل ازےں وزیر اعظم پاکستان کے مشیر برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان قمر زمان کائرہ سے گلگت میں مختلف وفود نے ملاقات کی۔ مقامی ہوٹل میں وفود سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم پاکستان کے مشیر نے کہا کہ وفاقی حکومت گلگت بلتستان کی تعمیر و کے لئے تمام وسائل بروئے کار لا رہی ہے۔ ششپر گلیشیئر اور روندو میں زلزلہ متاثرین کی ہر ممکن مدد کی جائے گی ملاقات کے دوران قائد حزب اختلاف اور پی پی پی کے صوبائی صدر امجد حسین ایڈووکیٹ اور رکن اسمبلی سعدیہ دانش بھی موجود تھیں۔