Image

استور : سٹرک کی تعمیر کے توسیعی منصوبے میں لاکھوں کے معاوضہ جات کی ادائیگی کیلئے جعلی تخمینہ جمع


 استور:  ضلع استور کے نواحی گاؤں دشکن میں سٹرک کی تعمیر کے توسیعی منصوبے میں محکمہ مال استور اور محکمہ پی ڈبلیو ڈی کے اہلکاروں نے ملی بھگت سے قومی خزانے کو کمپنسیشن کی مد میں کروڑوں کا ٹیکہ لگانے کیلئے  نقل سازی سے جعلی تخمینہ جمع کروالیا ہے اور  چند مقامی افراد جن کی زمین سڑک کے توسیعی منصوبے میں نہیں آتی تھی، ان کیلئے خرابے کی مد میں لاکھوں کے معاوضہ جات کی ادائیگی کیلئے جعلی تخمینہ جمع کروالیا گیا ہے  اور ان کو نوازنے کیلئے حقیقی متاثرین کی حق تلفی کرتے ہوئے ان کے نقصانات کا تخمینہ اصل سے کہیں زیادہ کم لگایا گیا ہے۔ اس حوالے سے دستیاب کاغذات اور مقامی متاثرین کی درخواستوں سے اس امر کا ثبوت ملتا ہے کہ محکمہ مال اور پی ڈبلیو ڈی  کے اہلکاروں نے چند با اثر افراد کی ملی بھگت سے ان کے نام جعلی تخمیہ لگا کر درپردہ قومی خزانے کو کروڑوں کا نقصان پہنچانے کی حکمت عملی طے کی ہے اور اس سلسلے میں کمپنسیشن اور خرابوں کی مد میں معاوضوں کی ادائیگی کیلئے  تخمینہ جمع کروالیا گیا ہے اور اس حوالے سے ڈپٹی کمشنر کو استدعا بھی کی گئی ہے کہ اس منصوبے میں کرپشن کو بے نقاب کرنے کیلئے دوبارہ تخمینہ لگایا جائے اور کرپٹ اہلکاروں کے بجائے  اہل اور دیانتدار ٹیم سے دوبارہ سروے کر کے قومی خزانے کو نقصان پہنچانے والے عناصر کا محاسبہ کیا جائے۔