652

کوہستان ،سکردو سے راولپنڈی جانے والی کار ڈاکوئوں نے لوٹ لی

سکردو سے راولپنڈی جانے والی نجی کمپنی کی کار کو کوہستان پٹن کے مقام پر مسلح ڈاکووں نے لوٹ لیا کار بدھ  اورجمعرات کی درمیانی شب ساڑھے تین بجے جب سکردو سے مسافروں کو لیکر کوہستان پٹن کے مقام پر پہنچی تو روڈ کو سفیدے اور پتھر ڈال کر بند کیا گیا تھا ڈرائیور نے گاڑی سے اتر کر روڈ سے پتھر ہٹانے کی کوشش کی تو چھ مسلح ڈاکووں نے چاروں طرف سے گاڑی کو گھیر لیا اور ڈرائیور سمیت کار میں سوار دوسرے مسافروں کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا ڈرائیور سمیت تمام مسافروں سے رقوم موبائل فون سمیت تمام قیمتی اشیاء  لوٹ لیں ڈرائیور محمد منظور نے واقعے کی رپورٹ قریبی پولیس سٹیشن میں درج کرادی کوہستان پولیس نے ڈکیتی کے واقعے کی ایف آردرج کرکے ڈاکووں کی تلاش شروع کردی ۔ پولیس نے دعوی کیاہے کہ وہ جلد ملزمان کو ڈھونڈ نکالے گی اور شاہراہ قراقرم کو محفوظ بنائے گی ڈرائیور محمد منظور نے کے پی این سے بات چیت کرتے ہوئے کہاہے کہ ڈاکووں کی تعداد چھ تھی جو مسلح تھے گاڑی میں موجود تمام مسافروں سے رقوم اور موبائل سمیت ضروری قیمتی سامان چھین لیا ڈاکو میرا ڈرائیونگ لائسنس اور شناختی کارڈ بھی لے گئے پولیس تھانے میں رپورٹ درج کرادی ہے امید ہے پولیس کارروائی کرے گی اور شاہراہ قراقرم کو محفوظ بنائے گی ادھر کار ایسوسی ایشن بلتستان کے عہدیداروں اشرف بیگ حاجی اشرف محمد اقبال وزیر ضامن امجد حسین زوہیب علی اور دیگر نے شاہراہ قراقرم پر ڈکیتی کے واقعے کو قانون نافذ کرنے والے اداروں کی سستی کا نتیجہ قرار دیا اور کہاہے کہ شاہراہ قراقرم غیر محفوظ ہوگئی ہے مگر کوہستان پولیس کوئی کارروائی نہیں کررہی ہے صوبائی حکومت خیبر پختون خواہ حکومت سے فوری رابطہ کرکے شاہراہ قراقرم کی حفاظت کیلئے اپنا کردار ادا کرے چند عرصہ شاہراہ محفوظ رہنے کے بعد ڈکیتی کی وارداتیں پھر شروع ہوگئی ہیں بدھ کی رات کوہستان پٹن کے مقام پر تھانے کے قریب ہی کار کو لوٹ لیا گیا لٹنے والے طلبہ تھے ڈکیتی کے واقعات کا فوری نوٹس نہ لیا گیا تو سخت احتجاج کریں گے