57

تین ہزار اسامیاں خالی، چور دروازے سے بھرتیاں نہیں ہونے دیں گے، حفیظ الرحمن

 صوبائی صدر مسلم لیگ (ن) گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کی سابق حکومت میں ورکس اور پاور محکمہ کے آٹھ ہزار ملازمین کو ملازمت میں مستقل کیا گیا ہے۔فیملی اسسٹنٹ پیکج میں جی بی پہلا صوبہ تھا جس نے تعلیمی اہلیت کے مطابق دو سال کے کنٹریکٹ کی جگہ مستقل ملازمت دی گئی اور تقریباً پانچ سو سے زائد ملازمین مختلف محکمہ جات میں مستقل کیا گیا ہیں اور جی بی میں مسلم لیگ (ن کی سابق حکومت نے پہلی بار تاریخ میں سرکاری ملازمین کی اپ گریڈیشن کی پالیسی بنائی اور تقریباً تین ہزار ملازمین کو اپ گریڈ کیا گیا اور دس ہزار ملازمین کی اپ گریڈیشن کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا جس پر تحریک  انصاف کی صوبائی اور وفاقی حکومت نے عملدرآمد کرنے سے صاف انکار کیا ہے اور جی بی کے سرکاری ملازمین کو مختلف الاؤنسز دئیے گئے اور بوجہ کرونا کے مسلم لیگ (ن) کی صوبائی سابقہ حکومت نے وفاق کے ساتھ لائین ڈیپارٹمنٹ کے مسائل کو حتمی شکل نہ دے سکی اور تاریخ میں پہلی عرصہ دراز سے مختلف محکموں میں عارضی ملازمین،کنٹریکٹ ملازمین اور پروجیکٹ ملازمین کو مستقل کرنے کیلئے قانون سازی کی گئی جو گورنر جی بی راجہ جلال حسین مقپون نے اسمبلی ایکٹ پر عملد رآمد کرنے سے انکار کرتے  ہوئے صوبائی اسمبلی کو واپس بھی دیا جو کہ مسلم لیگ (ن) کی سابقہ حکومت نے اسمبلی سے دوبارہ منظو رکروایا۔ اب تحریک انصاف کی صوبائی حکومت جو الیکشن سے قبل سرکاری ملازمین کو مستقل کرنے کے حوالے سے اعلانات کرتی رہی ہے جو کہ ریکارڈ پر ہے،اب ملازمین کو مستقل کرنے سے صاف انکاری ہے جبکہ چودہ سو آسامیاں مسلم لیگ ن کی سابق حکومت تخلیق کرکے گئی تھی اور مختلف محکموں میں تقریباً تین ہزار سے زائد خالی آسامیاں موجود ہیں جن پر بمطابق ملازمین مستقل ایکٹ 2020کے تحت عارضی ملازمین کی مستقلی کا قانونی حق ہے لیکن محکمہ پولیس، ہیلتھ اور دیگر محکموں میں پی ٹی آئی کی سلیکٹڈ صوبائی حکومت اپنی الیکشن پوری کرنے کیلئے چور دروازوں سے بھرتی کرنے کی کوشش میں مصروف ہے۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ آل لائن ڈیپارٹمنٹ کے مطالبات کی توثیق کرتے ہیں اور عارضی ملازمین ایکٹ پر عمل درآمد کروانے کیلئے ملازمین کیساتھ پوری مسلم لیگ ن ہر فورم پر کھڑی ہے اور پی ٹی آئی کی سلیکٹڈ صوبائی حکومت کو تحریک انصاف کی وفاقی حکومت کی ملازمین دشمن پالیسیاں جی بی میں لاگو کرنے نہیں دے گی۔