70

ریئلٹی شو میں دلہنوں کے کنوار پن کی جانچ دکھانے پر فرانسیسی وزیر برہم

فرانس کی حکومت نے ملک میں نشر ہونے والے ایک ریئلٹی ٹی وی شو کی مذمت کی ہے جس میں نوجوان دلہنوں کو اپنے کنوارے ہونے کا ثبوت دینا ہوتا ہے۔

شہری امور کی وزیر میرلین شیاپا نے فرانس کے نشریاتی نگراں ادارے سی ایس ایس کو لکھا ہے کہ انھیں ناقابل یقین خانہ بدوش سٹائل کی شادیوں کو دیکھ کر بہت غصہ آیا جن میں ایک غیر ضروری رسم کو دکھایا گیا جس کے تحت چند رشتہ دار خواتین شادی سے پہلے دلہن کا معائنہ کرتی ہیں۔چینل فور کے پروگرام ’بگ فیٹ جپسی ویڈنگ‘ سے متاثر فرانسیسی شو میں جنوبی قصبے پریپیگن کی کیٹالان گیٹان نامی برادری کی روایات پر عمل کیا جاتا ہے۔فروری میں نشر کیے جانے والے پروگرام میں اُس پرتعیش بستر کی تیاری بھی دکھائی گئی جس پر یہ رسم ادا کی جانی تھی۔

اس دوران جو کمنٹری کی گئی اس میں کہا گیا کہ ’اس بستر پر ناؤمی نامی لڑکی کے ’ہائمن نامی نازک ریشوں‘ کا ٹیسٹ کیا جائے گا۔ یہ رومال سے ادا کی جانے والی رسم آبائی اور ناگزیر ہے۔ اگر ناؤمی کے شادی سے قبل کسی سے جنسی تعلقات رہے تو یہ شادی منسوخ کر دی جائے گیکچھ دوسرے مناظر میں خواتین وضاحت کرتی ہیں کہ ایسا کرنا کیوں اہم ہے۔ ایک خاتون بتاتی ہیں کہ ’یہ لڑکے کے خاندان کے لیے ہے تاکہ انھیں معلوم ہو سکے کہ ان کے بیٹے کو ایک خوبصورت اور کنواری لڑکی ملی ہے۔‘

ایک دوسری خاتون کہتی ہیں کہ ’اسے بچپن سے ہی یہ بتایا گیا ہے کہ اسے سب ملبوسات حاصل کرنے اور شادی کرنے کے لیے اس رسم سے گزرنا ہے۔